چوتھی دنیا سے خصوصی اظہار خیال: شرد یادو نے جے ڈی یواور بی جے پی اتحاد کو ’’بد نصیبی ‘‘ بتایا

جنتا دل یو نائٹیڈ (جے ڈی یو ) صدر نتیش کمار کے ذریعے بہار میں بی جے پی سے اتحاد کرکے این ڈی اے کے تحت حکومت بنانے پر اپنی چُپی توڑتے ہوئے سینئرجے ڈی یو لیڈر اور مدھے پورا (بہار ) سے منتخب رکن لوک سبھاشرد یادو ان واقعات کو ’’بد نصیبی ‘‘ بتایا ہے اور دعویٰ کیا ہے کہ عوام کے ذریعے دیئے گئے مینڈیٹ کی خلاف ورزی ہورہی ہے۔30 جولائی کو آل انڈیا ملی کونسل کی جانب سے تال کٹورا انڈور اسٹیڈیم میں ’آئین بچائو ‘ ،ملک ملک بنائو‘ نیشنل کنویشن میں تقریر کرنے کے بعد باہر نکلتے اور اپنی کار میں بیٹھتے ہوئے وہاں موجود افراد کے نعرے ’نتیش مردہ باد ‘ کے درمیان شرد یادو نے’’ چوتھی دنیا‘‘ سے مذکورہ بالا اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ ’’ میں بہار میں ہوئے فیصلہ سے اتفاق نہیں کرتا ہوں۔ یہ بدنصیبی ہے ۔عوام سے ملا ہو امینڈیٹ اس کے لئے نہیں تھا‘‘۔

 

سینئر جے ڈی یو لیڈر گزشتہ ہفتہ نیتش کمار کے مہا گٹھ بندھن سے این ڈی اے میں چلے جانے سے ناراض تھے مگر چُپی سادھے ہوئے تھے۔ عیاں رہے کہ قبل ازیں اتوار کو آل انڈیا ملی کونسل کے پروگرام میں انہوں نے دبے انداز میں اپنی پارٹی کے بی جے پی سے اتحاد کے تعلق سے خفگی کا اظہار کر ہی دیا تھا۔ اسٹیڈیم میں ملک کی مختلف ریاستوں سے آئے ہزاروں لوگوں کی موجودگی میں انہوں نے کہا تھا کہ وہ اقلیتوں اور دلتوں کے لئے اور آئین کی حفاظت کی جنگ میں پوری طرح ساتھ ہیں۔ قابل ذکر ہے کہ جب وہ بول چکے تھے اور جانے لگے تھے تو کونسل جنرل سکریٹری ڈاکٹر محمد منطور عالم نے انہیں روک کر ان کے ذریعے کہے گئے ’’ سیکولرازم کے لئے لڑنے کے عزم‘‘ کی وضاحت چاہی جبکہ ان کی پارٹی نے بی جے پی سے اتحاد کرلیا ہے۔ یہ بھی اہم ہے کہ تال کٹورا اسٹیڈیم سے پارلیمنٹ واپس جاکر وہاں بھی انہوں نے نامہ نگاروں سے اس سلسلے میں مزید وضاحت کی اور اپنے مذکورہ بالا موقف کا کھل کر اظہا رکیا۔(اے یو آصف )

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *