نظام الدین میں وقف کی زمین پر سی آرپی ایف کا ناجائز قبضہ

نظام الدین علاقہ کے پچھلے حصہ میں وقف کی کثیر تعداد میں زمین موجود ہے ، جہاں پر پرانے قبرستان، مدرسہ اور مسجد آج بھی موجود ہیں ۔ اس زمین کی لڑائی وقف اور ڈی ڈی اے کے مابین جاری ہے ، جس پرعدالت نے متولی کے حق میں اسٹے دے رکھا ہے ۔ اس زمین کے چوتھائی حصہ پرسی آرپی ایف نے گزشتہ روز کو ناجائز طور سے قبضہ جما لیا ۔

 

برسوں سے زمین کو لے کر کورٹ نے متولی کے حق میں اسٹے دے رکھا تھا ، لیکن سی آرپی ایف نے پولیس فورس کی موجودگی میں کچھ پختہ قبروں کو مسمار کرکے چوتھائی حصہ پر قبضہ کر لیا ہے ۔ متولی نے جب سی آرپی ایف کے اعلی افسران سے معلوم کیا کہ کہ آخر کس کے حکم پر ایسا کیا جارہا ہے ، تو افسران نے ان سے کچھ نہ کہتے ہوئے کہا کہ خاموش رہیں تو بہتر ہوگا ورنہ بند کر دیں گے ۔ آپ کو بتا دیں کہ دہلی میں وقف کی زمینیں کثیر تعداد میں موجود ہیں اور ڈی ڈی اے اس کو توسیع کے نام پر قبضہ کرتا جا رہا ہے۔ اگر ان اراضی پر قبریا پھر درگاہیں موجود ہیں تو ان کو بھی مسمار کیا جارہا ہے ، جس کے خلاف کچھ لوگوں نے احتجاج بھی کیا ، لیکن ان کو پولس نے ڈرا دھمکا کرمعاملہ کو ختم کردیا ۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *