گرفتاری کے لئے پولس کر رہی ہے جسٹس کرنن کی تلاش

Justice-Karnanچنئی: توہین عدالت معاملہ میں سپریم کورٹ کے ذریعہ 6 مہینے جیل کی سزا پا چکے کلکتہ ہائی کورٹ کے جج جسٹس سی ایس کرنن آخر کہاں ہیں؟ یہ گزشتہ روز پہیلے بنا رہا۔ مغربی بنگال پولس نے بدھ کو چنئی پہنچی۔ چنئی میں کچھ ذرائع نے کہا کہ وہ ریاست کے گیسٹ ہاؤس سے آندھرا پردیش کے سری کالا ہستی میں واقع شیو مندر کے لئے نکلے ہیں۔
لیکن یہاں سے 120کلو میٹر کی دوری پر واقع مندر کے ایک افسر نے ٹیلی فون پر آئی اے این ایس سے کہا کہ جج صاحب کا کوئی پتہ نہیں ہے۔افسر نے کہا کہ وہ نہ تو کل اور نہ ہی آج یہاں پہنچے ہیں۔ ہمیں اس بارے میں کوئی جانکاری نہیں کہ وہ کل مندر پہنچیں گے یا نہیں۔مندر کے ایک دیگر افسر نے اس سے پہلے کہا تھا کہ جسٹس کرنن گزشتہ تک سری کالہستی پہنچ کر آج صبح مندر میں درشن کرنے والے ہیں۔کولکاتہ میں اپنے گھر سے نکلنے کے بعد جسٹس کرنن منگل کے روز گیسٹ ہاؤس پہنچے۔ جسٹس نے ابھی سرکاری طور پر کمرا نہیں چھوڑا ہے اور ان کا بل ابھی بقایا ہے۔ افسران نے بتایا کہ کرنن کے ساتھ آئے دو دیگر وکیلوں سے بھی گیسٹ ہاؤس میں ان کے کمرے خالی کرنے کو کہا گیا ہے۔
سپریم کورٹ نے مغربی بنگال کے پولس ڈائریکٹر جنرل کو فوری طور پر جسٹس کرنن کی گرفتاری کے حکم پر عمل کرنے کے لئے ایک ٹیم تشکیل کرنے کا حکم دیا ہے۔ سپریم کورٹ نے مڈیا پر بھی جسٹس کرنن کے کسی بھی تبصرے کو شائع کرنے پر روک لگا دی ہے۔

 

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *