سپریم کورٹ نے وجے مالیا کو کورٹ کی توہین کا قصوروار مانا ،10جولائی کو ہوگی سزا پر سماعت

Vijay-Mallyyaنئی دہلی: بینکوں سے لون کو لے کر ڈیفالٹر ہوئے کنفیشر ایئر لائنس کے مالک وجے مالیا کو سپریم کورٹ سے بڑا جھٹکا لگا ہے۔ کورٹ نے مالیا کو توہین عدالت کا قصوروار مانا ہے۔ کورٹ نے کہا کہ انھوں نے جائداد کی تفصیل نہیں دی۔ 10جولائی کو سپریم کورٹ میں پیش ہونے کا حکم دیا ہے۔ 10جولائی کو سزا پر سماعت ہوگی۔ 9اپریل کو سپریم کورٹ نے وجے مالیا کے خلاف توہین عدالت اور ڈیئگو ڈیل سے مالیا کو ملے 40ملین یو ایس ڈالر پر اپنا حکم محفوظ رکھا تھا۔ بینکوں نے مانگ کی ہے کہ40ملین یو ایس ڈالر جو ڈیئگو ڈیل سے ملے تھے ان کو سپریم کورٹ کی رجسٹری میں جمع کرایا جائے۔ سپریم کورٹ کا حکم حکومت کے یوگی سے سپردگی میں بھی مدد کرے گا۔
سماعت کے دوران سپریم کورٹ نے وجے مالیا سے پوچھا کہ آپ نے جو کورٹ میں اپنی جائداد کے بارے میں جانکاری دی تھی وہ صحیح ہے یا نہیں؟ کیا آپ نے کرناٹک ہائی کورٹ کے حکم کی خلاف ورزی نہیں کی؟ کیونکہ کرناٹک ہائی کورٹ نے اپنے حکم میں کہا تھا کہ وجے مالیا بنا کورٹ کی اجازت کوئی بھی لین دین نہیں کر سکتے۔ سپریم کورٹ نے مرکزی حکومت سے پوچھا تھا کہ مالیا کے خلاف کورٹ کے حکم کو کیسے نافذ کیا جا سکتا ہے۔ مرکزی حکومت نے سپریم کورٹ کو بتایا کہ مالیا کو واپس لانے کی کوشش کی جا رہی ہے۔ وہیں ایس بی آئی نے سپریم کورٹ کو بتایا تھا کہ مالیا کے اوپر 9200کروڑ روپے کا بقایا ہے۔ بینکوں نے کہا کہ مالیا کی درخواست پر سماعت نہیں ہونی چاہئے، کیونکہ وہ بار بار کورٹ کے حکم کی نافرمانی کر رہے ہیں۔وجے مالیا نے کورٹ میں کہا تھا کہ ان کے اتنے پیسے نہیں ہیں کہ وہ 9200کروڑ روپے بینک کے قرض کو ادا کر پائیں، کیونکہ ان کی تمام جائداد کو پہلے ہی ضبط کر لیا گیا ہے۔
وجے مالیا نے سپریم کورٹ میں کہا کہ ان کے پاس جو بھی جائداد ہے وہ ضبط کی جا چکی ہے۔ اب ان کے پاس پیسے نہیں ہیں۔ وجے مالیا نے کہا کہ جو 2000کروڑ کی ان کی جائداد کو بینک نے ضبط کیا ہے، بینک چاہے تو اسے بیچ سکتا ہے۔ سپریم کورٹ کنگفیشر ایئر لائنس کے مکھیا وجے مالیا کے خلاف بینکوں کی طرف سے دائر اپیل پر سماعت کر رہا تھا۔ سماعت میں بینکوں نے سپریم کورٹ سے مطالبہ کیا تھا اور کہا تھا کہ کورٹ کنفیشر ایئر لائنس کے مکھیا وجے مالیا کو حکم دے کہ وہ ڈیئگو ڈیل سے ملے 40ملین یو ایس ڈالر کو ایک ہفتے کے اندر اسے ہندوستان لے کر آئیں۔ اگر وہ پیسے کو واپس نہیں لاتے تو ذاتی طور پر کورت میں پیش ہوں ۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *