جنوبی کوریا کے نئے صدر بنے مون جے، شمالی کوریا جانے کی خواہش

Moon-Jayسیول: شمالی کوریا اور امریکہ کے درمیان کشیدگی برقرار ہے اور وہیں دوسری طرف جنوبی کوریا میں صدر کے انتخاب میں ڈیموکریٹک پارٹی آف کوریا کے مون جے ان نے جیت درج کر لی ہے۔ اسی کے ساتھ جنوبی کوریا میں کنزویٹو اقتدار کا خاتمہ ہو گیا ہے۔ مون ایک آزاد خیال نظریات کے لیڈرمانے جاتے ہیں۔
جنوبی کوریا کے نئے صدر مون جے ان نے انتخابات میں ملی زبردست جیت کے ایک دن بعد آج حلف اٹھائی۔ حلف برداری کے بعد انھوں نے ایٹمی ہتھیاروں سے لیس شمالی کوریا کے ساتھ پرکشیدہ تعلقات کے درمیان پیونگ یانگ جانے کی خواہش ظاہر کی۔
بتا دیں کہ شمالی کوریا کے ساتھ کشیدگی کے ماحول میں اختتام پذیر ہوئے ان انتخابات میں ڈیموکریٹک پارٹی آف کوریا کے امیدوار اور آزاد خیال نظریات کے حامل مون جے ان کو چیول سو سے کڑی ٹکر مل رہی تھی۔ مون جے ان شمالی کوریا کے ساتھ بہتر تعلقات بنانے کے حق میں ہیں۔جبکہ سابق صدر پارک گون ہے نے شمالی کوریا کے ساتھ تمام تعلقات کو ختم کرنا چاہتے تھے۔ 64سالہ مون اس سے قبل 2012میں بھی صدارتی انتخاب لڑے تھے، لیکن اس وقت وہ پارک گون ہے سے ہار گئے تھے۔

 

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *