گورکھپور فساد معاملہ میں یوگی پر مقدمہ نہیں چلائے گی یو پی حکومت

Yogi-Kedarnathالہ آباد: اتر پردیش حکومت نے وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ پر مقدمہ چلانے سے انکار کر دیا ہے۔ 2007کے گورکھپور فساد معاملہ میں الہ آباد ہائی کورٹ نے یو پی حکومت سے پوچھا کہ کیا یوگی حکومت پر مقدمہ چلایا جائے۔ اس کے جواب میں یو پی حکومت نے مقدمہ چلانے سے انکار کر دیا ہے۔ یہ 2007کا گورکھپور میں ہوئے فسادات کو لے کر معاملہ تھا۔ اس معاملہ میں سابقہ کی دو حکومتوں کے پاس فائل گئی تھی، جس میں یوگی آدتیہ ناتھ پر کیس چلانے کی اجازت دینے کی بات کہی گئی تھی۔
اس معاملہ میں اپیل کنندہ کا کہنا ہے کہ وہ اس معاملہ میں ہائی کورٹ میں کیس کریں گے اور وہاں بات نہیں بنے گی تو وہ اسے آگے لے جائیں گے۔ان کی دلیل ہے کہ اس معاملہ میں یوگی آدتیہ ناتھ کے وائس سیمپل تک نہیں لئے گئے تھے۔ اس لئے بنا تفتیش کے اس طرح چھوٹ نہیں دی جا سکتی۔
2007کی 27جنوری کو گورکھپور میں فرقہ وارانہ فساد ہوا تھا۔ الزام ہے کہ اس فساد میں اقلیتی فرقہ کے دو لوگوں کی موت ہوئی تھی اور کئی لوگ زخمی ہوئے تھے۔اس معاملہ میں درج کیس میں الزام ہے کہ اس وقت بی جے پی ممبر پارلیمنٹ یوگی آدتیہ ناتھ، ممبر اسمبلی رادھا موہن داس اگروال اور اس وقت کی میئر انجو چودھری نے ریلوے اسٹیشن کے پاس اشتعال انگیز تقریر دینے کے بعد بھڑکا تھا۔
پولس ریکارڈ کے مطابق یہ فساد محرم پر تعزیہ کے جلوس کے راستوں کو لے کر تھا۔ اس معاملہ میں یوگی آدتیہ ناتھ سمیت بی جے پی کے کئی لیڈروں کے خلاف سی جے ایم کورٹ کے حکم پر مقدمہ درج ہوا تھا۔

 

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *