اسسٹنٹ کمشنر 1.25کروڑ کی رشوت لیتے ہوئے گرفتار

CBCEممبئی: سی بی آئی نے ممبئی کے سینٹرل کسٹم ڈیوٹی(ایکسائز) محکمہ کے اسسٹنٹ کمشنر اشوک نائک کو 1.25کروڑ روپے رشوت لیتے ہوئے گرفتار کیا ہے۔ انھوں نے ایک ہوٹل مالک سے ای ڈی کا معاملہ سلجھانے کے لئے 15کروڑ روپے رشوت مانگی تھی۔
ذرائع کے مطابق نائک کولابا آفس میں تعینات تھے اور زیر التوا بڑے معاملوں کو آڈٹ کرتے یا انہیں نمٹاتے تھے۔ نائک نے مبینہ طور پر ایک معاملہ کو سلجھانے کے لئے نوی ممبئی کے ایک ہوٹل سے 15کروڑ روپے رشوت مانگی تھی۔ یہ رقم قسطوں میں دینا طے ہوا تھا۔ آئی آر ایس سروس کے نائک کو رشوت کی پہلی قسط کی شکل میں مبینہ طور پر 1.25کروڑ روپے لیتے ہوئے گرفتار کیا گیا۔ ان کے ساتھ دو دیگر لوگوں کو بھی گرفتار کیا گیا ہے۔ ان سبھی کو سی بی آئی کورٹ میں پیش کیا گیا۔ انہیں 15مئی تک پولس حراست میں بھیج دیا گیا ہے۔نائک کے گھر اور آفس میں مارے گئے چھاپے میں کئی قابل اعتراض دستاویز برآمد کئے گئے ہیں۔
دراصل 2013میں نوی ممبئی کے پنویل میں واقع ہوٹل کپال بار اور ڈمپل لاج پر چھاپہ مارا گیا تھا۔ چھاپے کے دوران غیر ملکی کرنسی بھی برآمد ہوئی تھی۔ اسی معاملہ کو نمٹانے کے لئے ہی رشوت مانگی گئی تھی۔ جبکہ گزشتہ ہفتے ہی سی بی آئی نے کارپوریٹ ہاؤس ایسار کے ایم ڈی سمیت 6لوگوں کو رشوت کے لین دین کے الزام میں گرفتار کیا تھا۔ اسی معاملہ میں انکم ٹیکس محکمہ کے کمشنر کو بھی 1.5کروڑ روپے کی رشوت کے معاملہ میں گرفتار کیا گیا تھا۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *