افغانستان میں امریکی سفارتخانہ کے پاس فدائین حملہ ،8ہلاک، 22زخمی

Kabul-Attackکابل: افغانستان کی راجدھانی کابل میں گزشتہ امریکی سفارتخانہ کے پاس فدائین حملہ ہوا۔ ایک خودکش حملہ آور نے ناٹو کے قافلہ کو نشانہ بنایا۔ اس میں 8لوگوں کی موت ہو گئی اور 22دیگر زخمی ہو گئے۔ خبر رساں ایجنسی کے مطابق افغانی افسران نے بتایا کہ ناٹو کے قافلہ میں شامل فوجیوں کے لئے سامان لے جانے والی گاڑیوں کو نشانہ بنایا گیا۔ حملہ صبح کابل کے ایک مصروف تین علاقہ میں ہوا۔
صحت عامہ کے افسران نے بتایا کہ حملہ میں 8لوگ مارے گئے اور 22لوگ زخمی ہوئے ہیں۔ ابھی یہ صاف نہیں ہوا ہے کہ حملہ میں کوئی غیر ملکی فوجی مارا گیا ہے یا نہیں۔ عینی شاہدین نے بتایا کہ جہاں دھمالہ ہوا تھا، وہاں خون ہی خون بکھرا ہوا تھا۔ اس حملہ کو طالبان کی دھمکی سے جوڑ کر دیکھا جا رہا ہے۔ طالبان نے کہا تھا کہ وہ غیر ملکی فوجیوں کو نشانہ بنائے گا۔
اس سے قبل طالبان نے 21اپریل کو افغانستان کے ناردن سٹی مزار شریف کے پاس آرمی کیمپ پر حملہ کیا تھا۔ جس میں 140فوجی مارے گئے تھے۔ مزار شریف بلخ خطہ کی راجدھانی ہے۔ حملہ ایک مسجد میں نماز پڑھ رہے فوجیوں پر کیا گیا۔ اس کے علاوہ کھانا کھا رہی افغان آرمی کی 209ویں کارپس کو بھی نشانہ بنایا گیا تھا۔ 10حملہ آوروں نے اندھا دھند فائرنگ کی تھی، بعد میں 2حملہ آوروں نے خود کو اڑا لیا تھا۔ افغان کمانڈوز کی جوابی کارروائی میں 7حملہ آور مارے گئے جبکہ ایک کو پکڑ لیا گیا تھا۔ حملہ آوروں نے افغان آرمی کی یونیفارم پہن رکھی تھی۔ لہٰذا انہیں چیک پوسٹ پاس کرنے میں کوئی دقت نہیں ہوئی، اسی وجہ سے وہ آرمی کیمپ کے پاس پہنچ گئے۔

 

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *