تین طلاق کے ایشو پر خود آگے آئے مسلم سماج: نریندر مودی

Modiنئی دہلی: وزیر اعظم نریندر مودی نے مسلم سماج میں تین طلاق کے ایشو پر کہا ہے کہ انہیں اس معاملہ میں ہندوستان کی روایت پر پورا بھروسہ ہے۔ انھوں نے کہا کہ مسلم سماج کے لوگ خود اس لڑائی کے خلاف آگے آئیں اور اس مسئلہ پر سیاست نہیں ہونی چاہئے۔ وزیر اعظم مودی وسویشور جینتی کے موقع پر وگیان بھون میں منعقد ایک پروگرام سے خطاب کر رہے تھے۔
بھگوان وسویشور یاد کرتے ہوئے وزیر اعظم مودی نے کہا کہ سماج کے ہر طبقہ سے آنے والی خواتین کو اپنے خیالات کا اظہار کرنے کا حق ہے۔ سماج کے ہر طبقہ سے آئی خواتین اپنے خیالات ظاہر کرتی تھیں۔ کئی خواتین ایسی بھی ہوتی تھیں، جنہیں اس وقت سماج پھیلی برائیوں کے تحت حقیر سمجھا جاتا تھا لیکن ویسی خواتین کو بھی اپنی بات رکھنے کا پورا حق تھا۔ وومین امپاورمنٹ کو لے کر اس دور میں یہ کتنی بڑی کوشش تھی ہم اندازہ لگا سکتے ہیں، ہمارے ملک کی خاصیت رہی ہے کہ برائیاں آئی ہیں لیکن ان کے خلاف لڑنے کا مادہ ہمارے اندر ہی پیدا ہوا ہے۔
وزیر اعظم مودی نے کہا کہ جس وقت راجا رام موہن رائے نے بیوہ شادی کی بات پیش کی ہوگی اس وقت کے سماج نے کتنی ان کی تقید کی ہوگی لیکن وہ ڈٹے رہے کہ خواتین کے ساتھ یہ سراسر نا انصافی ہے اسے دورہونا چاہئے۔ اس لئے میں کبھی کبھی سوچتا ہوں کہ تین طلاق کو لے کر آج اتنی بڑی بحث چل رہی ہے لیکن ہندوستان کی عظیم روایت کو دیکھتے ہوئے میرے دل میں امیدیں پیدا ہو رہی ہیں کہ اس ملک میں سماج کے اندر سے ہی طاقتور لوگ نکلتے ہیں جو غیر منطقی روایتوں کو توڑتے ہیں۔ جدید نظام کو فروغ دیتے ہیں۔ مسلم سماج سے بھی ایسے دانشمند لوگ پیدا ہوں گے، آگے آئیں گے اور مسلم سماج کی بیٹیوں پر جو گزر رہی ہے اس کے خلاف وہ خود لڑائی لڑیں گے اور کبھی نہ کبھی خود راستہ نکالیں گے۔

 

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *