سہارنپور میں فرقہ وارانہ کشیدگی، پتھراؤ، آگزنی ، کئی زخمی

Communal-Riot-in-Saharanpurسہارنپور: ڈاکٹر بھیم راؤ امبیڈکر شوبھا یاترا نکالنے کو لے کر ہوئی بحث نے یہاں فرقہ وارانہ شکل اختیار کر لی، جس میں پتھراؤ وآگزنی میں کئی لوگ زخمی ہو گئے جبکہ کمشنر کی گاڑی میں بھی توڑ پھوڑ کی گئی۔
سہارنپور کے تھانہ جنک پوری علاقہ کے سڑک دودھلی میں آج ڈاکٹر بھیم راؤ امبیڈ کر شوبھا یاترا نکالنے کو لے کر دو فرقوں میں گالی گلوج، پتھراؤ، لوٹ پاٹ اور آگزنی کا واقعہ ہوا۔ پتھراؤ میں کئی لوگ زخمی ہوئے، جس میں کمشنر کی گاڑی کا شیشہ بھی توڑ دیا گیا۔
یہاں ہائی وے پر توڑپھوڑ کی وجہ سے سہارنپور اور رڑکی، دہرادون ہائی وے پر ٹریفک کی آمد و رفت رک گئی ہے۔ کشیدگی کا اثر شہر پر بھی پڑا ہے۔ بازاروں میں یکایک سناٹا طاری ہو گیا۔ پورے ضلع میں ہائی الرٹ جاری کر دیا گیا ہے۔ ڈی آئی جی جتیندر کمار شاہی نے پاس کے اضلاع سے پولس فورس منگوائی ہے۔
خبر ہے کہ ایس ایس پی کے بنگلہ پر ان کی نیم پلیٹ اکھاڑ دی گئی۔ جب کر ہنگامہ بھی ہوا۔ ڈی جی پی جاوید احمد ، ڈی جی پی نظم و نسق دلجیت چودھری نے ڈی آئی جی سہارنپور رینج جے کے شاہی سے بات چیت کی ہے۔

 

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *