دہلی کے پانچ ستارہ ہوٹل تاج مان سنگھ کی ہوگی ای نیلامی

Taj-Maan-Singhنئی دہلی: نئی دہلی کے پاش مان سنگھ روڈ پر بنے تاج مان سنگھ ہوٹل کی ای نیلامی کو سپریم کورٹ نے ہری جھنڈی دے دی ہے۔ سپریم کورٹ نے این ڈی ایم سی کو کہا ہے کہ اگر نیلامی میں ٹاٹا گروپ کو کامیابی نہیں ملی تو اسے ہوٹل خالی کرنے کے لئے 6مہینے کا وقت دیا جائے۔ اس سے پہلے این ڈی ایم سی نے سپریم کورٹ میں جواب داخل کر کے کہا تھا کہ وہ ای آکشن کرانا چاہتی ہے۔
کورٹ نے ٹاٹا گروپ کی انڈین ہوٹل کمپنی لمیٹڈ آئی ایچ سی ایل کو کہاتھا کہ اگر انہیں کوئی اعتراض ہے تو وہ ایک ہفتے میں جواب داخل کریں۔ اسی سال 12جنوری کو سپریم کورٹ نے این ڈی ایم سی کو ٹاٹا گروپ کی لیز نہ بڑھانے کے فیصلہ پر پھر سے غور کرنے کو کہا تھا۔
کورٹ نے کہا کہ اس معاملہ میں این ڈی ایم سی نے صحیح سے کارروائی نہیں کی اور قانونی افسران کی رائے کو دبایا، جس میں ٹاٹا گروپ کو لیز بڑھانے کو کہا گیا تھا۔
این ڈی ایم سی 6ہفتے میں فیصلہ لے اور کورٹ میں رپورٹ داخل کریں۔ اب ہوٹل کی نیلامی کے لئے ٹاٹا گروپ کو پہلے موقع دیا جائے۔ اگر وہ لائسنس کے لئے نیلامی میں طے رقم نہیں دے پائے تو اس کے بعد ہی جو بڑی بولی لگائے، لیز اسے دی جائے۔
غور طلب ہے کہ مان سنگھ روڈ پر بنے تاج ہوٹل کی نیلامی کے معاملہ میں سپریم کورٹ سماعت کر رہا ہے۔ اس سے پہلے سپریم کورٹ نے صورتحال برقرار رکھنے کے احکامات جاری کئے تھے، جس سے نیلامی رک گئی تھی۔
سپریم کورٹ کے حکم سے ٹاٹا گروپ کی انڈین ہوٹل کمپنی کو راحت ملی تھی اور کورٹ نے این ڈی ایم سی کے مطالبہ کو درکنار کر دیا تھا، جس میں انھوں نے 31مارچ کے بعد سے ہوٹل میں کمپنی کوئی بکنگ نہ لے۔ کورٹ نے کہا تھا کہ چلتے ہوئے بزنس پر روک نہیں لگا سکتے۔
دراصل این ڈی ایم سی کی ملکیت والی اس پراپرٹی کو 1976میں آئی ایچ سی ایل کو 33سال کے پٹے پر دیا گیا تھا اور ایگریمنٹ کے تحت 11منزلہ ہوٹل تیار کر کے چلایا جا رہا تھا۔ یہ پٹہ 2011میں ختم ہو گیا۔ اس کے بعد مختلف بنیادوں پر کمپنی کو اس کی نو بار عارضی توسیع دی گئی۔
اس میں سے تین توسیع تو صرف گزشتہ سال دی گئیں۔ این ڈی ایم سی نے اس سال جنوری میں کہا تھا کہ وہ ہوٹل کی نیلامی کے لئے پراپرٹی کا اندازہ لگا رہی ہے۔ اس پراپرٹی کی نیلامی میں پہلے ہی کافی دیر ہو چکی ہے۔

 

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *