بابری مسجد سانحہ: اڈوانی اور جوشی پر چلے گا مجرمانہ سازش کا مقدمہ

Babri-Masjidنئی دہلی۔ انیس سو بیانوے بابری مسجد انہدام کیس میں بدھ کو سپریم کورٹ نے بڑا فیصلہ دیتے ہوئے کہا کہ بی جے پی کے سینئر لیڈروں لال کرشن اڈوانی، مرلی منوہر جوشی، اوما بھارتی پر مجرمانہ سازش کا مقدمہ چلایا جائے گا۔ اس معاملہ میں صرف کلیان سنگھ کو امیونٹی دی گئی ہے کیونکہ وہ فی الحال گورنر ہیں۔ حالانکہ کورٹ نے یہ بھی کہا کہ وہ استعفی دینے پر غور کر سکتے ہیں۔

بابری مسجد انہدام کیس میں تمام 13 ملزمان پر دفعہ 120 بی کے تحت فوجداری مقدمہ چلایا جائے گا۔ ساتھ ہی اس معاملے کی سماعت کر رہے ججوں کا ٹرانسفر تب تک نہیں ہوگا جب تک سماعت مکمل نہیں ہو جاتی۔ کورٹ نے نام لے کر کہا کہ اڈوانی اور جوشی سمیت 13 افراد کے خلاف مقدمہ لکھنؤ کی عدالت میں چلایا جائے گا۔

 سپریم کورٹ نے کہا کہ 2 سال میں کیس کی سماعت مکمل کی جائے۔ اس کے ساتھ ہی رائے بریلی سے لکھنؤ کیس ٹرانسفر کر دیا گیا ہے ساتھ ہی معاملے سے منسلک ججوں کے تبادلے پر روک لگا دی گئی ہے۔ سی بی آئی کو حکم دیا ہے کہ اس معاملے میں روز ان کا وکیل کورٹ میں موجود رہے گا۔

 

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *