اکھلیش کے ذریعہ چلائی گئی اسمارٹ فون اسکیم کو یوگی حکومت نے کیا بند

Akhilesh-Smartphone-Schemeلکھنؤ اتر پردیش کا اقتدار سنبھالتے ہی یوگی آدتیہ ناتھ کو ایک مہینہ پورا ہو چکا ہے۔ اس دوران یوگی نے ایک کے بعد ایک عوام کے مفاد میں کئی بڑے فیصلے کئے ہیں۔ یوگی حکومت کے تازے فیصلہ کا شکار ہوئی ہے سابق سی ایم اکھلیش یادو کے ذریعہ شروع کی گئی اسمارٹ فون اسکیم۔ اس کے ساتھ ہی حکومت نے جنیشور مشر گرام یوجنا، لوہیا آسرا اور آواس یوجنا کو مسترد کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔
غور طلب ہو کہ اکھلیش حکومت نے اسمارٹ فون اسکیم اپنی مدت کار کے آخر میں لانچ کی تھی۔ اس اسکیم کے ذریعہ اکھلیش حکومت کافی سستی قیمتوں پر قریب پانچ کروڑ لوگوں کو فون مہیا کرانا چاہتی تھی۔ اس اسکیم کے ذریعہ اکھلیش حکومت سیدھے عوام کے ساتھ رابطہ رکھنا چاہ رہی تھی۔ اس اسکیم کے لئے ایک لاکھ سے زیادہ لوگ درخواست دے چکے تھے۔ اکھلیش حکومت کی اس اسکیم کا مقصد تھا کہ حکومت کی ہر اسکیم کے بارے میں عوام کو جانکاری دی جائے۔ قریب 1.4کروڑ لوگوں نے اس اسکیم کے لئے آن لائن رجسٹریشن کرایا تھا، جس میں سب سے زیادہ نوجوان ہیں۔
ذرائع کے مطابق، حکومت نہیں چاہتی ہے کہ یہ اسکیم آگے بھی جاری رہے۔ حالانکہ اس کے بعد کوئی ٹھوس وجہ دینے سے حکومت بچ رہی ہے۔ 2016کے اکتوبر میں اکھلیش حکومت نے اس اسکیم کو یہ کہتے ہوئے ہری جھنڈی دی تھی کہ یہ اسکیم ڈجیٹل انڈیا کی طرف ایک اچھا قدم ہے۔ بی جے پی نے اس اسکیم کے خلاف ایک شکایت درج کی تھی، جس کے بعد یہ فیصلہ لیا گیا۔
اس سے پہلے پنشن اسکیم، سماجوادی ایمبولینس اسکیم اور دیگر کئی اسکیمیں جن پر سماجوادی پارٹی کا نام تھا، ان سے سماجوادی پارٹی کا نام یوگی حکومت ہٹا چکی ہے۔ اس کے ساتھ ہی جن راشن کارڈ پر سابق وزیر اعلیٰ اکھلیش یادو کی فوٹو ہے، ان کارڈوں کو واپس لے لیا گیا ہے۔ وہیں یوگی حکومت نے گزشتہ روز کل 626پولس اہلکاروں کا ٹرانسفر کیا ۔ بتا تے چلیں کہ یوگی حکومت چاہتی ہے کہ ریاست میں نظم و نسق اچھا ہو اس لئے حکومت تبادلے کر رہی ہے۔ یوگی حکومت نے ریاست کے کچھ ہوائی اڈوں کے نام بھی بچلے ہیں، جن میں گورکھپور اور آگرہ کے ہوائی اڈے شامل ہیں۔

 

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *