مسلمانوں سے شادی کرنے والی ہندو خواتین کے لئے تین طلاق پر روک سے متعلق درخواست مسترد

delhi-highcourtدہلی ہائی کورٹ نے مسلمانوں سے شادی کرنے والی ہندو خواتین پر تین طلاق نافذ ہونے پر روک سے متعلق درخواست کو مسترد کردیا ہے ۔کورٹ نے کہا قانون کے تحت تمام خواتین یکساں تحفظ کی مستحق ہیں ۔ قبل ازیں دہلی ہائی کورٹ میں جمعرات کو مرکزی حکومت کو یہ ہدایت دینے کے لئے ایک مفاد عامہ کی عرضی دائر کی گئی کہ مسلم مردوں سے شادی کر چکی ہندو خواتین پر تین طلاق یا تعدد ازدواج کے قوانین نافذ نہیں ہونے چاہئیں۔
ایڈووکیٹ وجے شکلا کی طرف سے دائر کی گئی اس درخواست میں اسپیشل میرج ایکٹ کے تحت بین نسلی شادی کے لئے رجسٹریشن کو لازمی بنانے کے لئے مرکزی حکومت کو ہدایت دینے کا مطالبہ کیا گیا ہے۔
غور طلب ہے کہ ملک میں ان دنوں تین طلاق کے معاملہ پر بحث جاری ہے۔ وزیر اعظم مودی سے لے کر یوگی آدتیہ ناتھ تک اس پر بیان دے چکے ہیں کہ یہ بند ہونا چاہئے۔ جبکہ مسلم پرسنل بورڈ نے اس کو پرسنل لا میں مداخلت قرار دیا ہے۔ معاملہ فی الحال سپریم کورٹ میں زیر سماعت جاری ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *