عآپ لیڈروں نے اٹھائے ای وی ایم پر سوال

Ashutoshنئی دہلی۔ عام آدمی پارٹی نے دہلی میونسپل کارپوریشن انتخابات میں شکست کے بعد ایک بار پھر ای وی ایم میں گڑبڑی کا مسئلہ اٹھایا ہے۔ نیوز 18 انڈیا سے عآپ ترجمان آشوتوش نے کہا، ‘دہلی میں سارے کام ہم نے کئے تو بی جے پی کو ووٹ کیسے ملا۔’ انہوں نے کہا، یہ برتری (بی جے پی کی) ای وی ایم میں خرابی کی وجہ سے ہے۔ عوام اسے سمجھ رہی ہے۔

دہلی کی کیجریوال حکومت میں دیہی ترقی کے وزیر گوپال رائے نے بھی پارٹی کی شکست کا ٹھیکرا ای وی ایم پر پھوڑا۔ انہوں نے کہا، ‘بی جے پی کی ایم سی ڈی میں معجزانہ فتح مودی لہر نہیں، ای وی ایم لہر ہے۔ رجحانات آنے کے بعد گوپال رائے نے کہا، ایم سی ڈی میں بی جے پی حکومت چلا رہی تھی۔ 10 سال میں بی جے پی نے دہلی کو بدعنوانی کا اڈہ بنا دیا۔ بی جے پی کی معجزانہ فتح ای وی ایم خرابی سے ہی ممکن ہے۔

 گوپال رائے نے کہا، پنجاب میں بھی یہی ای وی ایم لہر تھی۔ اس لہر کو دہلی میں دوبارہ دہرایا گیا ہے۔ بی جے پی جمہوریت کو ختم کرنا چاہتی ہے اور ملک میں ای وی ایم کے ذریعے آمریت لانا چاہتی ہے۔ انہوں نے کہا، پارٹی ہار کا جائزہ لے گی اور نتائج آنے کے بعد دوسرے پہلوؤں پر غور کریں گے۔ ادھر، عآپ کی شکست کے بعد بی جے پی ریاستی صدر منوج تیواری نے کیجریوال حکومت سے استعفی مانگا۔ انہوں نے کہا دہلی میں اس مینڈیٹ کے بعد اب کیجریوال حکومت کو رہنے کا کوئی حق نہیں ہے۔ سوراج ابھیان کے کنوینر اور سابق آپ لیڈر یوگیندر یادو نے بھی کجریوال کی قیادت پر سوال اٹھائے۔ رجحانات پر انہوں نے کہا، ‘دہلی کے عوام نے وزیر اعلی کو مسترد کر وزیر اعظم کو منتخب کیا ہے۔

 

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *