انکم ٹیکس محکمہ کہ جواب نہ دینے والے خلاف کارروائی یقینی ہوگی

Arun-Jaitely-On-ITنئی دہلی: مرکزی حکومت نے کہا ہے کہ نوٹ بندی کے وقت زیادہ کیش جمع کرانے کو لے کر انکم ٹیکس محکمہ کے ذریعہ بھیجے گئے نوٹس کا جواب نہیں دینے والے 9.29 لاکھ لوگوں کے خلاف یقینی طور پر کارروائی کی جائے گی۔ انکم ٹیکس محکمہ نے ان لوگوں کو اس لئے نوٹس بھیجا تھا کیونکہ ان کے ذریعہ جمع کی گئی رقم ان کی انکم پروفائل سے میل نہیں کھاتی ہے۔ لوک سبھا میں فائنانس بل پر ہو رہی بحث پر پوچھے گئے ایک سوال کے جواب میں جیٹلی نے کہا کہ نوٹ بندی کے 50 دنوں کے دوران 18 لاکھ لوگوں کے ذریعہ جمع کئے گئے 500 اور 1000 روپے کے پرانے نوٹ ان کی آمدنی کے ذرائع کے تناسب میں نہیں تھے۔ انھوں نے کہا کہ فی الحال ری مونی ٹائزیشن کا پروسیس چل رہا ہے، لیکن موصول ہوئے ڈاٹا کی شروعات جانچ میں سی بی سی ٹی اور ٹیکس ڈپارٹمنٹ نے پایا ہے کہ 18 لاکھ لوگوں کے ذریعہ جمع کیا گیا کیش ان کے انکم پروفائل سے میل نہیں کھاتا ۔ متعلقہ محکموں نے میل اور ایس ایم ایس کر کے ان لوگوں سے وضاحت طلب کی تھی۔

انھوں نے کہا کہ تقریباً 8.71 لاکھ لوگوں نے وضاحت دی ہے اور جنھوں نے کوئی ردعمل نہیں دیا ہے یقینا انکم ٹیکس محکمہ ان کے خلاف انکم ٹیکس ایکٹ کے تحت کارروائی کرے گا۔ نوٹ بندی کے فائدے  بتاتے ہوئے وزیر خزانہ نے کہا کہ اس سے حکومت کے وسائل کے فروغ میں مدد ملے گی۔ کسانوں کو ملنے والے فنڈ، دفاعی شعبہ اور منرے گا جیسے ایشوز پر سبھی پارٹیوں کے ذریعہ تشویش ظاہر کرنے پر وزیر خزانہ نے کہا کہ ان کے لئے زیادہ خرچ تبھی ممکن ہے جب حکومت کے پاس اور وسائل ہوں۔

نوٹ بندی کے دوران جمع ہوئی رقم کی فائنل ٹیلی کو لے کر کئے گئے سوالوں پر جیٹلی نے کہا کہ آر بی آئی کے ذریعہ ہر نوٹ گنے جانے کے بعد اس کا اعلان کیا جائے گا۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *