شفیع قریشی ملک و ملت ایک قومی رہنما سے محروم

p-11ملک و ملت ابھی ڈاکٹر اخلاق الرحمٰن قدوائی کی موت کے صدمے سے ہی دوچار تھی کہ اس دوران 28 اگست 2016 کوایک اور مشہور و معروف شخصیت محمد شفیع قریشی 86 برس کی عمر میںداعی اجل کو لبیک کہہ گئی اور ملت ایک عظیم سیاسی اور سماجی شخصیت سے محروم ہوگئی۔ ان کی تدفین ان کی خواہش کے مطابق عام مسلمانوں کے لیے بنے دہلی گیٹ قبرستان میں 29 اگست کو عمل میں آئی۔
محمد شفیع قریشی 24 اکتوبر 1929کو سری نگر (جموں وکشمیر) میں پیداہوئے۔ تعلیم سے فراغت کے بعد 1965 میں انھیں راجیہ سبھا کے لیے جموں و کشمیر سے چنا گیا۔ 28 جنوری 1966 سے 14 فروری 1969 تک وہ یونین ڈپٹی منسٹر آٖف کامرس رہے۔ پھر انھوںنے 15 فروری 1969 سے 2 مئی 1971 تک بطور یونین منسٹر فار اسٹیل اینڈ ہیوی انجینئرنگ خدمات انجام دیں۔ 1971 اور 1977 میں وہ اننت ناگ (جموں و کشمیر) سے رکن پارلیمنٹ منتخب ہوئے اور 10 اکتوبر 1974 سے مارچ 1977 تک یونین ڈپٹی منسٹر فار ریلویز کی حیثیت سے اپنی خدمات انجام دیں۔ اس کے بعد انھوں نے بہار ، مغربی بنگال، مدھیہ پردیش اور اترپردیش میں گورنر کے طور پر ملک وقوم کے لیے گراں قدر کام کیے۔اس کے علاوہ قومی اقلیتی کمیشن کے چیئرمین کے عہدے پر بھی انھیں خدمات دینے کا موقع ملا۔
مرحوم محمد شفیع قریشی کانگریس کے نظریات کے مشعل بردار اور سیکولر قدروں کے حامل شخصیت تھے۔انھیں جموں وکشمیر میں کانگریس کو قائم کرنے کافخر حاصل تھااور وہ بھی ایک ایسی ریاست میں جہاں ریاستی پارٹیاں حاوی تھیں اور ابھی بھی حاوی ہیں۔ سابق وزیر اعظم محترمہ اندرا گاندھی مرحومہ کے بے حدقریبی لوگوںمیں ان کا شمار ہوتا تھا۔ لیکن افسوس کے ساتھ کہنا پڑتا ہے کہ جس شخص نے اپنی زندگی کا ایک بڑا قیمتی حصہ ملک کی خدمت میں گزاراہو، جب اس کی موت واقع ہوئی تو اس کی آخری رسومات میں مرکزی حکومت ، کانگریس یا دہلی حکومت کا کوئی نمائندہ بھی دور دور تک نظر نہیں آیا اوراس سے بھی زیادہ افسوس کا مقام یہ ہے کہ جس شخص نے اپنی زندگی ملک کے نام وقف کردی ہو، اس کی نماز جنازہ میں بہت مختصر لوگوں نے شرکت کی، حتیٰ کہ مسلم تنظیموں کے قائدین اور قومی اقلیتی کمیشن کے ذمہ داران کو بھی یہ توفیق حاصل نہیںہوئی۔ یہ واقعہ ہماری بے حسی کی طرف اشارہ کرتا ہے۔ بہر حال اس بات سے انکار نہیںکیا جاسکتا کہ محمد شفیع قریشی کی رحلت ، ملک و ملت کا ایک عظیم خسارہ ہے۔اللہ تعالیٰ مرحوم کو غریق رحمت کرے ، انھیں جنت الفردوس میں جگہ دے اور پسماندگان کو صبر جمیل عطا فرمائے آمین۔ ادارہ ’چوتھی دنیا‘ محمد شفیع قریشی کے پسماندگان کے غم میں برابر کا شریک ہے۔
شاہد نعیم

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *