اترا کھنڈ پر ہٹ ہوئی سربیائی فلم ’دیو بھومی ‘ عالمی فیسٹیول میں

ٹورانٹو فلم فیسٹیول کا آغاز ہوگیا ہے اور اس کے ساتھ ہی ہالی وڈ کی فلموں میں موضوعات کے تنوع کے حوالے سے بحث چھڑ گئی ہے۔کینیڈا کے سب سے بڑے شہر میں منعقد اس 11 روزہ فلمی میلے کے دوران 400 سے زائد فلمیں نمائش کے لیے پیش ہوئیں۔ یہ 41 واں سالانہ فیسٹیول ہے اور اس فلمی میلے کو ایک ایسے پلیٹ فارم کے طور پر دیکھا جاتا ہے جہاں پیش کی جانے والی فلمیں آسکر ایوارڈ بھی حاصل کرتی ہیں۔اس مرتبہ اس فیسٹول میں ایک ایسی فلم کو نمائش کے لئے پیش کیا گیا ہے جس کی شوٹنگ شمالی ہندوستان کی ہمالیائی ریاست اترا کھنڈ میں ہوئی ہے۔قابل غور ہے کہ ہندوستان کے مختلف خطے اور عمارتیں دنیا کے لئے ہمیشہ کشش کا باعث رہے ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ پہلے بھی ہندوستان پر فلمیں بنی ہیں اور ایک بار پھر ہندوستان کا ایک خطہ فلمی دنیا کے لئے عظمت و فخر کی بات ہے۔ آئیے دیکھتے ہیں کہ یہ فلم ہے کیا اور کون لوگ اس کے بنانے کے محرک بنے۔

Read more

جموں و کشمیر کے حوالے سے آئین ہند کی دفعہ 370 کو کمزور نہ ہونے دیجئے

آئینی وضاحت کے معاملے میں چند متنازعہ فیہ فیصلوں کو چھوڑ کر سپریم کورٹ آف انڈیا نے ریاستوں اور افراد کے حقوق و اختیارات کے تحفظ میں اب تک بہت ہی اہم کردار نبھایا ہے۔لیکن اجے کمار پانڈے اور ریاست جموں و کشمیر کے معاملے میں آئینی بینچ کے ذریعہ 19جولائی 2016 کو دیئے گئے فیصلے سے آئین ہند کی دفعہ 370 کے تحت فراہم کی گئی جموں و کشمیر کی اٹانومی میں مداخلت کا اندیشہ لاحق ہوگیا ہے۔

Read more

جھارکھنڈ: زمین مافیاکا قہر سابق ممبر پارلیمنٹ ہوئے شکار، وزیر اعلیٰ بھی لاچار

ڈالٹن گنج میں ایک سرکاری زمین ہے جس کا پلاٹ نمبرہے 1090 ۔اس سرکاری زمین پر منوج شرما نام کے ایک شخص نے قبضہ کیا ہوا ہے۔ پلامو کے سابق ممبر پارلیمنٹ جراور رام نے باقاعدہ اس کی شکایت وزیر اعلیٰ اور پولیس سے کی۔ وزیر اعلیٰ نے مذکورہ زمین کو قبضہ سے چھڑانے کے لئے متعلقہ افسروں کو خط بھی لکھا۔

Read more

حاکموں کی ترقی کا وبال

آئی اے ایس پروموشن تنازع میںبہار سرکار گھر گئی ہے ۔ عالم یہ ہے کہ اب اسے نہ اگلتے بن رہی ہے اور نہ ہی نگلتے۔ دراصل بہار سرکار نے اپنے تین آئی اے ایس افسروں چنچل کمار، دیپک کمار سنگھ اور ہرجوت کور کو سکریٹری سطح سے پروموٹ کرکے پرنسپل سکریٹری بنا دیاتھا۔ چنچل کمار وزیر اعلیٰ سکریٹریٹ میں سکریٹری کے عہدے سے ترقی پاکر اسی محکمے میں پرنسپل سکریٹری بنا دیے گئے۔ دیپک کمار سنگھ لیبر ریسورسز محکمے کے پرنسپل سکریٹری بنا دیے گئے، جبکہ ہرجوت کور کوٹورزم کے محکمے میں پرنسپل سکریٹری کی ذمہ داری سونپ دی گئی۔

Read more

اروند سنگھ گوپ کی امیدیں غیر یقینی صورت حال میں یقین کی تلاش

پربھات رنجن دین
سماج وادی پارٹی میں ہنگامہ ہے۔ پارٹی کے اندر اختلاف’ قومی ایکتا دل‘ کے سماج وادی پارٹی میں ضم ہونے کے بعد ابھر کر سطح پر آ گیا ۔ اس اختلاف میں کمی ہوبھی جائے ،لیکن جو نقصان ہونا تھا،وہ تو ہو ہی گیا۔ سماج وادی پارٹی کے قومی صدر ملائم سنگھ یادو نے پارٹی کے ریاستی صدر عہدہ سے اکھلیش یادو کو ہٹا کر شیو پال یادو کو ریاستی صدر بنا دیا، تو وزیر اعلیٰ اکھلیش یادو نے بھی اپنے چاچا شیو پال یادو کی کابینہ کے محکموں میں کٹوتی کر ڈالی۔ اس کے پہلے اکھلیش یادو شیو پال کے چہیتے چیف سکریٹری دیپک سنگھل کو ہٹا کر اپنی طاقت دکھا چکے تھے۔ سماج وادی پارٹی میں لکھنو سے دلی تک ہنگامہ مچا ہوا ہے۔ کبھی

Read more

جموں و کشمیر کے مستقبل کو لے کر 10 اکتوبر 1968 کو شیخ عبد اللہ کے ذریعہ سری نگر میں منعقد ’’جموں و کشمیر اسٹیٹ پیپلس کنوینشن‘‘ (ریاست جموں و کشمیر اسٹیٹ کے عوام کی کنوینشن ) میں جے پرکاش نارائن کی افتتاحی تقریر

دوستو،
میں شیخ عبداللہ کا شکر گزار ہوں کہ انہوں نے اس اہم کانفرنس کے افتتاح کے لئے مجھے بلایا۔ شاید آپ کو معلوم ہو کہ میں یہاں آنے سے تھوڑا جھجک رہا تھا۔

Read more

جموں و کشمیر کی معیشت بھی دم توڑ رہی ہے

ریاست جموںو کشمیر کی معیشت میںکشمیر کے ہارٹی کلچر سیکٹر کا بڑاہی اہم اور غیر معمولی کردار ہے۔ ہارٹی کلچر سیکٹر تنہا ریاست کے ریونیو میں تقریباً 8 ہزار کروڑ روپے سالانہ اضافہ کرتا ہے۔ لیکن 8 جولائی 2016 کو برہان وانی کی موت کے بعد اب تک وادی میں تشدد او ربدامنی کے جاری رہنے سے اس سال صورت حال بہت ہی مایوس کن محسوس ہوتی ہے۔ پھلوں کے پیدا کرنے والے کے حوالے سے جو خبر آرہی ہے، وہ یہ ہے کہ پھل خصوصاً سیب کے باغات خراب ہونے شروع ہوگئے ہیں کیونکہ بدامنی کے سبب ماحول اتناخراب ہے کہ درختوں سے پھلوں کو توڑنابھی فی الوقت بہت مشکل ہے۔ علاوہ ازیں جو پھل درختوںسے توڑے جارہے ہیں، ان کا بیرون کشمیر ٹرانسپورٹیشن بھی بہت بڑا مسئلہ ہے۔ مثال کے طور پر ہر سال دہلی کی آزاد پور منڈی

Read more

میڈیا پاکستان کے لئے دانشورانہ دلالی کررہا ہے

آپ کے لئے سری نگر سے ایک تجربہ لے کر آیا ہوں۔ آپ میں سے بہت سارے لوگ سری نگر نہیں گئے ہوں گے اور جو گئے ہوں ،وہ 80 دن پہلے گئے ہوں گے۔ گزشتہ 80 دنوں سے کشمیر میں جو ہو رہا ہے، وہ ایک المناک ،خوفناک اور حیرت انگیز ہے۔آپ اپنے گھر میں خود کو بند کر لیں اور چار دنوں تک گھر سے باہر نہ نکلیں، آپ کو کیسا لگے گا۔ چار دن میں لگنے لگے گا کہ آپ جیل میں بند ہیں اور آپ کو باہر کی ہوا کھانی ہے۔ اب آپ سوچئے کہ تقریباً60 لاکھ لوگ گزشتہ 80دنوں سے اپنے گھروں میں بند ہیں،انہیں گھر سے باہر نکلنے کی اجازت نہیں ہے۔انہیں سامان خریدنے بازار جانا ہو، تو جان ہتھیلی پر لے کر جانا ہوتا ہے۔ انہیں اگر ڈاکٹر کے پاس جانا ہو تو جان گنوانے کے ڈر کے ساتھ جانا پڑتا ہے اور ہم صرف چار دن اگر گھر میں بند رہ جائیں تو ہمیں لگتا ہے کہ ہمارے ساتھ یہ کیا ہوگیا۔

Read more

جے پرکاش نارائن کا اندرا گاندھی کو خط ، 23 جون 1966

کچھ دنوں پہلے جب میں ایک دن کے لئے دلی میں تھا تو مجھے پتہ چلا کہ کشمیر کے سوال کا جائزہ لینے کے لئے 26تاریخ کو آپ نے مسٹر صادق اور ان کے کچھ ساتھیوں کو ملاقات کے لئے بلایا تھا۔ اس میٹنگ کی اہمیت کے مد نظر، میں اپنے کچھ خیالات آپ کے سامنے رکھنا چاہتا ہوں۔ مجھے امید ہے کہ میں کوئی رکاوٹ پیدا نہیں

Read more

کشمیر ایک انسانی مسئلہ

جب سے میں نے 13-1-1972 کے شمارہ میں جموں و کشمیر کے انتخاب پر آپ کا بہترین اداریہ پڑھا ہے،تب سے میں آپ کو اپنے دل کی گہرائیوں سے مبارکباد دینے کے لئے یہ خط لکھنا چاہتا تھا۔میں آپ کے اداریہ کے ایک ایک لفظ سے متفق ہوں۔ دراصل جب جنوری 1971 کے پہلے ہفتہ میں شیخ عبداللہ اور ان کے ساتھیوں کو گزشتہ لوک سبھا انتخاب میں حصہ لینے سے روکنے کے لئے کارروائی کی افواہوں کا بازار گرم تھا، تب میں نے اس کی مخالفت کی تھی۔ میں ذاتی طور سے وزیر اعظم اور شری پی این ہسکر سے یہ کارروائی نہیں کرنے کی اپیل کی تھی،لیکن میری

Read more
Page 1 of 712345...Last »