برونی ریفائنری کا کچھ کیجئے دھرمیندر پردھان جی

سریش چوہان
p-3bمرکز میں نریندر مودی سرکار مدت کار کے دو سال مکمل ہونے کی ستائش میں ’’وکاس پرو‘‘ منا رہی ہے۔ وہیں بہار کی شان اور ملک کی دوسری ریفائنری برونی ریفائنری اپنی ترقی کو ترس رہی ہے۔ترقی کی بات تو دور رہی، اپنے قائم کیے گئے معیار سے بھی وہ پچھڑ رہی ہے۔ مرکزی وزیر برائے پیٹرولیم دھرمیندر پردھان کے سارے اعلانات ہوا ہوائی بن کر رہ گئے۔ شری پردھان کے اعلان کے مطابق برونی ریفائنری کی سالوینسی کی توسیع نہیںہوئی۔ نوجوانوں کے لیے اسکل ڈیولپمنٹ سینٹر اور خواتین کے لیے نرسنگ ٹریننگ سینٹر نہیں کھلے۔ پیٹروکیمیکل ادیوگ کمپلکس کا قیام نہیںہوا۔ وزیر اعظم ترقی کے ان گروپوں کا سنگ بنیاد رکھنے نہیں آئے۔ دو سالوں میںبرونی ریفائنری کی ذرا بھی ترقی نہیں ہوئی۔ ڈاکٹر منموہن سنگھ کی سرکار کے دور میںفائدے میںچل رہی برونی ریفائنری، نریندر مودی کے دو سالوں کی مدت کار میںخسارے میںچل رہی ہے۔
مرکز میںبی جے پی کی سرکاربننے پر پیٹرولیم منسٹر دھرمیندرپردھان نے برونی ریفائنری کا دورہ کیاتھا۔ برونی ریفائنری کامعائنہ کرنے کے بعد ریفائنری ٹاؤن شپ کے جوبلی ہال میںمنعقد تقریب میں دھرمیندر پردھان نے اعلان کیا تھا کہ برونی ریفائنری کی سالوینسی 6 کو بڑھا کر 9 کیا جائے گا۔ نوجوانوں کو خود کفیل اور ہنر مند بنانے کے لیے اسکل ڈیولپمنٹ سینٹر قائم کیا جائے گا جہاں مختلف ٹریڈ کی پڑھائی اور تربیت دی جائے گی۔ ا س کے ساتھ ہی خواتین کو بااختیار بنانے کے لیے نرسنگ ٹریننگ سینٹر قائم کیا جائے گا۔ وزیر موصوف نے ایک اہم اعلان کیا تھا کہ برونی ریفائنری پر مبنی یہاں پیٹرو کیمیکل ادیوگ کمپلکس کا قیام کیا جائے گا اور وزیر اعظم نریندر مودی جلدی ہی یہاں آکر ترقی کے موزوں انٹرپرائزز کا سنگ بنیاد رکھیں گے۔ پیٹرولیم کے وزیر کے مذکورہ اعلانات سے نہ صرف بیگو سرائے، بلکہ بہار کے باشندوں میںامید کی کرن جاگی تھی کہ برونی ریفائنری سمیت ان کے لیے اچھے دن آئیں گے،لیکن آج تک برونی ریفائنری میںاسکل ڈیولپمنٹ سینٹر نہیں قائم ہوا اور نہہی وزیر اعظم نے یہاں آکر پیٹرو کیمکل ادیوگ کمپلکس اور برونی ریفائنری کی سالوینسی کی توسیع یونٹ کا سنگ بنیاد رکھا۔ اس سے عام لوگوں میںمایوسی چھائی ہوئی ہے۔
لوک سبھا انتخاب میں ملی شاندار کامیابی سے پُر جوش دھرمیندر پردھا ن نے مذکورہ اعلان کیا تھا۔ اس کے پیچھے سیاسی مقصد بھی صاف تھاکہ بہار اسمبلی انتخاب میںبی جے پی کو لوک سبھا انتخاب جیسی کامیابی ملے گی،لیکن اسمبلی انتخاب میں بی جے پی کو منہ کی کھانی پڑی ۔ بیگو سرائے ضلع کی سبھی سات اسمبلی سیٹوں سے اسے ہاتھ دھونا پڑے۔ بہار میںبی جے پی کافی سمٹ کررہ گئی۔اس انتخابی نتیجہ کا خمیازہ برونی ریفائنری کو بھگتنا پڑا۔ دھرمیندر پردھان کے ذریعہ اعلان کیا گیا ایک وعدہ بھی پورا نہیںہوا۔ غور طلب ہے کہ جس وقت دھرمیندر جوبلی ہال کے منچ سے مذکورہ اعلانات کررہے تھے، اس وقت برونی ریفائنری اپنی مقررہ صلاحیت 6 سے زیادہ 6.75 کی پیداوار کررہی تھی۔ ریفائنری کے انجینئروں کا کہنا ہے کہ برونی ریفائنری کے پاس دستیاب وسائل میںتھوڑی توسیع کرکے ڈکلیئرڈ ٹارگٹ کو حاصل کیا جاسکتا ہے۔ برونی ریفائنری آسام کے بعد ملک کی دوسری ریفائنری ہے۔ برونی ریفائنری کے بعد ہندوستان میں جتنی بھی ریفائنریز قائم ہوئیں، سبھی کی صلاحیت میںدو سے تین گنا توسیع ہوئی۔ ایک ریفائنری کی اعلانیہ صلاحیت کی توسیع تو اس کے افتتاح ہونے سے پہلے ہی کردی گئی، کیونکہ وہ پیٹرولیم کے وزیر کے علاقہ کی ریفائنری ہے۔ برونی ریفائنری کے بعد قائم سبھی ریفائنریز میں پیٹر و کیمیکل ادیوگ کمپلکس کا قیام ہوا، لیکن برونی ریفائنری سیاسی دشمنی کا ڈنک جھیل رہی ہے۔
جس وقت مرکز میں مودی سرکار آئی ، اس سے پہلے مالی سال میں(ڈاکٹر منموہن سنگھ کی مدت کار میں) برونی ریفائنری کو 474 کروڑ روپے کا فائدہ ہوا تھا، جبکہ مالی سال 2015-16 میںبرونی ریفائنری کو150 کروڑ روپے کا خسارہ ہواہے۔مالی سال 2015-16 میںبرونی ریفائنری کا شاندار ریکارڈ رہا ہے۔ اس نے مختلف شعبوں میں انعام حاصل کیا ہے۔ سال 2015-16 میںکروڈ تھرو پُٹ 6545 اور ڈسٹیلیٹ 88.7 رہا، جو ایک ریکارڈ ہے۔ فیول اینڈ لاس 8.77 فیصد رہا، جو ایم ایس کیو کی کمیشننگ کے بعد اب تک کا سب سے کم ہے۔ اتنی شاندار کارکردگی کے باوجود برونی ریفائنری کو سال 2015-16 میں150 کروڑ روپے کا خسارہ ہوا۔
سیاست اورعلاقائیت کے دوہرے پاٹ کے بیچ پستی برونی ریفائنری کے اچھے دن کب آئیں گے؟ کیا آئندہ لوک سبھا کے انتخاب کے وقت پھر ایک بار برونی ریفائنری انتخابی مدعا بنے گا؟ اس کا جواب مستقبل میں ہی پتہ چلے گا۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *