فیفا ورلڈ کپ 2014۔کون منائے گا سانبا کےساتھ جشن

نوین چوہان 
p-12cفیفا ورلڈکپ کے انعقاد میں چھ ماہ رہ گئے ہیںجو 12جون سے 13جولائی تک برازیل میں کھیل جائے گا۔ اروگوے کے کولیفائی کرتے ہی عالمی کپ میں کھیلنے والی 32ٹیموں کی لائن اپ طے ہو گئی ہے۔ اس کے بعد عالمی کپ کی فاتح ٹیم کے نام کو لے کر پیش گوئیاں شروع ہو گئی ہیں۔ فی الحال آکٹوپس پال کی طرح کسی نے بھی کسی ایک ٹیم کے فاتح بننے کی پیش گوئی نہیں کی ہے، لیکن لوگوں کی قیاس آرائیاں گھوم پھر کر کچھ ٹیموں کے ارد گرد آکررک جاتی ہیں۔ حال ہی میں ارجنٹینا کے اسٹار اسٹرائکر لایونیل میسی نے فاتح ٹیم کو لے کر اپنا موقف پیش کیا۔ انھوں نے تیسری بار یوروپین لیگ کا گولڈن شو انعام جیتا۔ اس دوران انھوں نے ارجنٹینا ، گزشتہ فاتح اسپین، میزبان برازیل، فرانس کو 2014کے عالمی کپ کے پانچ سب سے بڑے دعویداروں میں بتایا۔ حالانکہ میسی نے اپنے سب سے بڑے حریف کرسٹیانو رونالڈو کی پرتگالی ٹیم کو اپنی ٹاپ فائیو ٹیموں کی فہرست میں جگہ نہیں دی۔
میسی اپنے کلب کی حصولیابیوں کو ورلڈ کپ میں دہرانا چاہتے ہیں اور ارجنٹینا کو ورلڈ کپ فاتح بنانا چاہتے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ ان کی ورلڈ جیتنے کی خواہش سب سے زیادہ ہے۔انھوں نے ارجنٹینا کے علاوہ دیگر چار ٹیموں کو عالمی کپ جیتنے کا مضبوط دعویدار بتایا۔جس میں میزبان برازیل، جرمنی ، گزشتہ فاتح اسپین اور فرانس کی ٹیمیں شامل ہیں۔ارجنٹینا کو دعویدار بتاتے ہوئے صدی کے بہترین کھلاڑی ڈیاگو میراڈونا نے کہا ہے کہ 2014میں میسی ارجنٹینا کو عالمی کپ فاتح بنا سکتے ہیں۔ ارجنٹینا کی ٹیم میں کل ملا کر میسی پر انحصار نظر آتا ہے اور وہی ان کی کشتی کو پار لگا سکتے ہیں۔ایک ٹیم کی جیت میں ہر کسی کی شراکت ہوتی ہے۔ جب تک میسی کو ساتھی کھلاڑی سے تعاون نہیں ملے گا، وہ کوئی کرشمہ نہیں کر پائیں گے۔اس بار عالمی کپ کے لئے کوالیفائی کرنے والی ٹیموں میں افریقی براعظم سے الجیریا، کیمرون، آئیوری کوسٹ، گھانا اور نائجیریا اور ایشیا کے چار ملک آسٹریلیا، ایران، جاپان جنوبی کوریا ، یورو کے 13ملک بیلجیم، بوسنیاہرزیگوونا، کریشیا، انگلینڈ، فرانس، جرمنی، گریس، اٹلی، ہالینڈ، پرتگال، روس ، اسپین، سویٹزرلینڈ۔ شمالی اور وسط امریکہ سے کوسٹاریکا، ہونڈرس ، میکسکو، متحدہ ریاست امریکہ اور جنوبی امریکہ سے6ممالک ارجنٹینا ، برازیل، چلی، کولمبیا، ایکواڈور، اروگوے آخری 32میں مقام حاصل کئے ہوئے ہیں۔ 2010کے میزبان جنوبی افریقہ کی ٹیم آخری 32میں جگہ حاصل نہیں کر پائی۔اب تک منعقدہ عالمی کپ کے 19ایڈشنوں میں برازیل سب سے زیادہ پانچ بار، اٹلی چار بار، جرمنی تین بار، ارجنٹینا اور اروگوے دو، دو بار اور انگلینڈ ، اسپین اور فرانس ایک ایک بار عالمی کپ پر قبضہ کر چکے ہیں۔ اسپین گزشتہ چار سال میں فٹبال جگت میں اپنی پکڑ بنا چکا ہے، ان کے ٹِکی، ٹِکی اسٹائل نے انہیں دنیا کے ہر بڑے مقابلہ کا فاتح بنا دیا ہے۔اسپینی کھلاڑیوں کا بہتر تال میل اگر اس بار بھی دیکھنے کو ملا تو انہیں خطاب بچانے سے کوئی ٹیم نہیں روک سکتی ہے۔ گزشتہ چار سالوں میں اسپینش ٹیم نے عالمی کپ کے علاوہ 2012میں مسلسل دو سری بار یورو کپ پر قبضہ کیا۔ حالانکہ 2013میں ہوئے کنفیڈریشن کپ میں اسپین کو فائنل میں برازیل نے 3-0سے شکست دی تھی۔اس کے باوجود وہ عالمی کپ جیتنے کے مضبوط دعویدار ہیں۔ اسپین مسلسل فیفا رینکنگ میں نمبر ون پر برقرار ہے۔ دیگر ٹیموں کے مقابلہ وہ رینکنگ پوئنٹ کے معاملہ میں دوسری ٹیموں سے بہت آگے ہے۔ 2008سے لے کر اب تک اسپین فیفا کی ٹیم آف دی ایئر کا خطاب جیت رہی ہے۔اس بار عالمی کپ کی میزبانی برازیل کر رہا ہے، جسے فٹبال کا ہوم گرائونڈ بھی کہا جاتا ہے۔ میزبان برازیل کو گھر میں عالمی کپ کے انعقاد کو لے کر بہت مخالفت کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے، لیکن برازیل کی ٹیم میں نیمیار جیسے اسٹار کھلاڑی کی موجودگی میں بہترین کارکردگی کرنے کا معدہ رکھتی ہے۔ گھریلو ناظرین کی موجودگی میں کسی بھی ٹیم کا کردار کیسے بدلتا ہے، یہ ہم نے 2002میں کوریا، جاپان میں ہوئے عالمی کپ میں جنوبی کوریا اور جاپان کی کارکردگی میں ہوئی ناقابل یقین کارکردگی کی شکل میں دیکھا تھا۔ جب کوریائی ٹیم چوتھے مقام پر رہی تھی۔ اسی طرح بطور میزبان پہلی بار عالمی کپ میں کھیل رہی ہے جنوبی افریقی ٹیم اپنے گروپ میں تیسرے نمبر پر ہی رہی تھی۔ اس نے فرانس ٹیم کو پچھاڑ کر گروپ میں بڑا الٹ پھیر کر دیا تھا۔ وہ گول فرق کی وجہ سے دوسرے رائونڈ میں نہیں پہنچ سکی تھی۔ برازیل دوسری بار عالمی کپ کی میزبانی کر رہاہے۔1950میں میزبان برازیل کو فائنل میں اروگوے نے ہرا کر پہلی بار عالمی کپ پر قبضہ کیا تھا، لیکن اس بار برازیل اس موقع کو ہاتھ سے نہیں جانے دینا چاہتا ہے۔ وہ عالمی کپ فٹبال کا ہمیشہ سے بادشاہ رہا ہے۔ ان کے پانچ خطاب اس کے گواہ ہیں، لیکن بطور میزبان وہ عالمی کپ جیتنے میں ناکام رہا ہے۔ اس لئے 12سال کے عالمی کپ خطاب کی پیاس کو برازیل اپنی سرزمین پر ہی بجھانا چاہے گا۔ ان کے پاس اچھے کھلاڑی ہیں، وہ ایک ٹیم کی شکل میں بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کرتے ہیں۔ ساتھ ہی اپنے گھریلو میدان پر کھیلنا کھلاڑیوں کے لئے مددگار ثابت ہوگا، جو انہیں عالمی کپ جیتنے میں مدد دے گا۔
لہٰذا، سانبا رقص کے ساتھ ہو رہے فٹبال کارنیوال میں فاتح ٹیم کو تلاش کرنا آسان نظر نہیں آ رہا ہے، جو اس کی مقبولیت میں چار چاند لگائے گی۔ فی الحال عالمی کپ کے آغاز میں وقت ہے جو سبھی ٹیموں کے لئے اپنی تیاریوں کو پختہ کرنے اور حکمت عملی بنانے کے لئے معقول ہے۔ ٹکٹوں کی فروخت زور شور سے جاری ہے ، جو تمام پرانے ریکارڈ توڑ رہی ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *