کیسے اور کہاں جمع ہو گئی آر ٹی آئی درخواست

اطلاع کون دے گا؟
ہر سرکاری محکمہ میں پبلک انفارمیشن آفیسر ( پی آئی او) کا ایک عہدہ ہوتا ہے۔ آ پ کو اپنی درخواست ان کے پاس داخل کرنی ہوتی ہے۔ یہ ان کی جوابدہی  ہوتی ہے کہ وہ اس محکمے کے مختلف ڈپارٹمنٹ سے آپ کے ذریعہ مانگی گئی جانکاریاں اکٹھا کریں اور آپ کو دیں۔اس کے علاوہ کئی افسروں کو  اسسٹنٹ پبلک انفارمیشن آفیسر کے عہدہ پر بھی مقرر کیا جاتا ہے۔ ان کا کام ہے عوام سے آر ٹی آئی درخواست لینا اور پی آئی او کے پاس بھیجنا۔
کہاں جمع ہوگی آر ٹی آئی درخواست؟
آپ اپنی درخواست پی آئی او یا اے پی آئی او کے پاس جمع کرا سکتے ہیں۔ مرکزی سرکار کے محکموں کے معاملوں میں 629 ڈاک خانوں کو اے پی آئی او بنایا گیا ہے۔ مطلب یہ کہ آپ ان ڈاک خانوں میں سے کسی ایک میں جاکر آر ٹی آئی کائونٹر پر اپنی درخواست  اور فیس جمع کرا سکتے ہیں۔ فیس جاری کرنے کے بعد وہ آپ کو ایک رسید جاری کریںگے ۔ اس کے بعد اس ڈاک خانے کی جوابدہی  ہے کہ وہ اسے متعلقہ پی آئی او کے پاس بھیجے۔
کیا کریں اگر پی آئی او یا متعلقہ محکمہ آر ٹی آئی درخواست قبول نہ کرے؟
ایسی صورت میں درخواست ڈاک کے ذریعہ بھیجی جاسکتی ہے۔ اس کی رسمی شکایت انفارمیشن کمیشن کو بھی دفعہ 18 کے تحت کریں۔ انفارمیشن کمیشن کو اس آفیسر پر 25000 روپے تک کا جرمانہ کرنے کا اختیار ہے،جس نے درخواست لینے سے انکار کردیا ہے۔
کیا کریں جب پی آئی او یا اے پی آئی او کا پتہ نہ چلے؟
اگر پی آئی او یا اے پی آئی او کا پتہ لگانے میں دشواری ہوتی ہے،  تو آپ درخواست ہیڈ آف دی ڈپارٹمنٹ کو بھیج سکتے ہیں۔محکمہ کے ہیڈ کو وہ درخواست متعلقہ پی آئی او کو بھیجنی ہوگی۔
کیا پی آئی او درخواست لینے سے منع کرسکتاہے؟
نہیں،پی آئی او، آر ٹی آئی درخواست لینے سے کسی بھی صورت میں منع نہیں کرسکتاہے۔بھلے ہی وہ اطلاع اس کے محکمہ؍ دائرہ کار میں نہ آتی ہو، اسے وہ قبول کرنا ہی ہوگی۔ اگر درخواست اس پی آئی او سے متعلق نہ ہو ، تو اسے وہ متعلقہ پی آئی او کے پاس 5دنوں کے اندر دفعہ 6(3) کے تحت بھیجنا ہوگی۔
کیا سرکاری دستاویز کنفیڈنشیل قانون1923 حق اطلاعات میں رکاوٹ ہیں؟
نہیں، حق اطلاعات قانون2005 کی دفعہ 22 کے مطابق حق اطلاعات قانون سبھی موجودہ قوانین کی جگہ لے لے گا۔
کیا پی آئی او اطلاع دینے سے منع کرسکتا ہے؟
ایک پی آئی او اطلاع دینے سے منع ان 11 موضوعات کے لئے کر سکتا ہے ، جو حق اطلاعات قانون کی دفعہ 8 میں دیے گئے ہیں۔ ان میں غیر ملکی سرکاروں سے موصولہ کنفیڈنشیل اطلاع، ملک کی سیکورٹی، پالیسی، سائنسی یا اقتصادی مفاد کے نقطہ نظر سے نقصاندہ ہو،عوامی نمائندوں کی شخصیت کی توہین کرنے والی اطلاعات وغیرہ۔ حق اطلاعات قانون کے دوسرے شیڈول میں ان 18 ایجنسیوں کی لسٹ دی گئی ہے ، جنپر یہ لاگونہیں ہوتا۔ حالانکہانہیں بھی وہ اطلاعات دینی ہوں گی، جو بد عنوانی اور حقوق انسانی کی خلاف ورزی سے جڑی ہوئی ہوں۔
کیا فرسٹ اپیل؍دوسری اپیل کی کوئی فیس ہے؟
نہیں، فرسٹ اپیل؍دوسری اپیل کی کوئی فیس نہیں ہے۔ حالانکہ، کچھ ریاستی سرکاروں نے فیس کی تجویز ضرور رکھی ہے۔
کیا فائل نوٹنگ کے لئے منع کیا جا سکتاہے؟
نہیں، فائل نوٹنگ(تبصرہ) سرکاری فائل کا اٹوٹ حصہ ہے اور اس قانون کے تحت فائل نوٹنگ کو عام کیا جاسکتا ہے۔ قابل ذکر ہے کہ سینٹرل انفامیشن کمیشن نے 31 جنوری2006 کے اپنے ایک حکم میں یہ واضح کردیا ہے۔
کوئی اطلاع کیوں چاہئے، اس کے لئے وجہ بتانا ہوگی؟
بالکل نہیں، کوئی وجہ یا دیگر اطلاع صرف رابطہ (نام، پتہ ، فون نمبر) کے علاوہ دینے کی ضرورت نہیں ہے۔ حق اطلاعات قانون میں واضح طور پرکہا گیا ہے کہ درخواست کنندہ سے رابطہ کے علاوہ کچھ نہیں پوچھا جائے گا۔
اگر آپ نے حق اطلاعات قانون کا استعمال کیا ہے اور اگر کوئی اطلاع آپ کے پاس ہے، جسے آپ ہم سے بانٹنا چاہتے ہیں ، تو ہمیں وہ اطلاع مندرجہ ذیل پتہ پر بھیجیں۔ ہم اسے شائع کریں گے۔ اس کے علاوہ حق اطلاعات قانون سے متعلق کسی بھیتجویزیا مشورہ کے لئے آپ ہمیں ای میل کر سکتے ہیں یا ہمیں خط بھی لکھ سکتے ہیں۔

راشن دکان اور راشن کی مقدار سے متعلق آر ٹی آئی درخواست
بخدمت شریف،            بتاریخ
پبلک انفارمیشن آفیسر
ڈسٹرکٹ فوڈ پروسیسنگ آفیسر
پتہ  ————————————————————
—————————————————————
موضوع: حق اطلاعات قانون 2005  کے تحت درخواست
جناب عالی،
میں ——————–(نام)——————————(گائوں کا نام) کا رہنے والا ہوں۔ میرا راشن کارڈ نمبر———————– اور راشن دکان نمبر———————-ہے۔ برائے مہربانی مندرجہ ذیل اطلاعات  فراہم کرائیں۔
1۔    میرے راشن کارڈ پر ہر ماہ جاری کئے گئے راشن، کروسین تیل وغیرہ کی مقدار’جو آپ کے رجسٹر میں درج ہے‘ کا خلاصہ مندرجہ ذیل اطلاعات کے ساتھ مہیا کرائیں۔(الف) مہینہ (ب)جاری کیا گیا راشن اور کروسین تیل کی مقدار (ج)تاریخ، جس دن راشن اور کروسین بانٹا گیا تھا ۔
2۔    راشن دکان سے متعلق پچھلے چھہ ماہ کا مندرجہذیل بیورا کی ایک مصدقہ فوٹو کاپی مہیا کرائیں۔(الف)ماسٹر کارڈ رجسٹر (ب)یومیہ فروختگی کا رجسٹر(ج)یومیہ اسٹاک رجسٹر(د)ماہانہ اسٹاک رجسٹر(ھ)اسیسمنٹ بُک(ھ)کیش میمو۔
3۔    ابھی تک مذکورہ راشن دکان کے خلاف کتنی شکایتیں درج ہوئی ہیں؟ان پر کیا کارروائی کی گئی ہے؟ان شکایتوں اور ان پر کی گئی کارروائی کی وضاحت کریں، میں 10 روپے فیس کے طور پر جمع کر رہا ہوں۔
شکرگزار
نام  ————————————————-
دستخط ————————————————-
پتہ ————————————————–

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *