جیمس بانڈ فلم کو ایک اور اعزاز

جیمس بانڈ سیریز کی حالیہ فلم ’اسکائی فال‘ کو لندن ایوننگ ا سٹینڈرڈ ایوارڈز کے لیے سال کی بہترین فلم قرار دیا گیا ہے۔جیمس بانڈ سیریز کی 23ویں فلم کو برطانیہ کے باکس آفس کی گزشتہ سال کی دس بہترین فلموں میں سے منتخب کیا گیا۔اداکار ٹوبی جونز کو فلم ’بربین ساؤنڈ اسٹوڈیو‘کے لیے بہترین اداکار جبکہ ایندرا رائس کو فلم ’شیڈو ڈانسر‘ کے لیے نامزد کیا گیا۔ایوننگ اسٹینڈرڈ ایوارڈز کی تقریب لندن فلم میوزیم میں منعقد ہوئی۔’اسکائی فال‘ کو برطانیہ کے علاقائی فلمی ناقدین کی جانب سے دو ایوارڈز دیے گئے ہیں ، جن میں فلم کے ہدایت کار سیم مینڈیس کو سال کا بہترین ہدایت کار کا ایوارڈ بھی شامل ہے۔واضح رہے کہ ’اسکائی فال‘جیمس بانڈ سیریز کی سب سے کامیاب فلم ثابت ہوئی ہے اور اس نے دنیا بھر میں ایک ارب ڈالر سے زائد کا کاروبار کیا ہے۔جیمس بانڈ کے کردار کی تخلیق 1953میں مصنف ایان فلیمنگ نے کی تھی جو کہ ان کے کئی ناولوں اور کہانیوں میں موجود ہے۔
برٹش اکیڈمی آف فلم اینڈ ٹیلی ویژن آرٹس (بافٹا) کی جانب سے آئندہ ہفتے لندن میں منعقد ہونے والے اس سال کے ایوارڈز کے لیے’اسکائی فال‘ کو آٹھ نامزدگیاں ملیں ، جن میں بہترین برطانوی فلم، بہترین معاون اداکارہ کے ایوارڈ کے لیے ڈیم جوڈی ڈینچ اور معاون اداکار کے ایوارڈ کے لیے ہاوئیر باردیم کو نامزد کیا گیا ہے۔g
نیہا دھوپیا کے پاس کام کی کمی
ہیر باویجا کی ہدایت کاری والی فلم قیامت سے اپنے فلمی کریئر کی شروعات کرنے والی اداکارہ نیہا دھوپیا کا کہنا ہے کہ انھوں نے ابھی تک فلم انڈسٹری میں کچھ کیا ہی کہاں ہے۔ آپ کو بتا دیں کہ نیہا کو اپنا فلمی کریئر شروع کئے تقریباً 10سال ہو چکے ہیں اور اس دس سال کے کریئر میں انہیں کسی بھی بڑی فلم میں لیڈ رول حاصل نہیں ہو پایا۔ 32سال کی ہوچکیں نیہا دھوپیا نے قیامت کے بعد اپنی دوسری فلم جولی میں کام کیا ، جو ایک بی گریڈ فلم ثابت ہوئی۔اس کے بعد سے نیہا کو ہمیشہ سے فلموں میں چھوٹے موٹے رول حاصل ہوئے۔لیکن انھوں نے یہ کہہ کر کہ ابھی انھوں نے کچھ کیا ہی نہیں ، سب کو چونکا دیا ہے۔اب ایک تو ان کی عمر 32سال کی ہو چکی ہے، دوسری نوجوان اداکارائوں کے مقابلے میں ان کو کوئی گھاس نہیں ڈال رہا ہے۔ لہٰذا ، اب وہ ایسا کیا کرنا چاہتی ہیں، جو انھوں نے اب تک نہیں کیا ؟فی الحال نیہا دھوپیا ایک پنجابی فلم میں کام کر رہی ہیں۔جس میں وہ سمی کا کردار کر رہی ہیں۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *