ایکسپوزر سے کوئی اعتراض نہیں: ایشا

بالی ووڈ میں مہیش بھٹ کی سیکول فلم جنت پارٹ ٹو  سے اپنے کریئر کی شروعات کرنے والی اداکارہ ایشا گپتا کو ایکسپوزر سے کوئی اعتراض نہیں ہے ، لیکن جس طرح کچھ  فلموں کے بعد ان کی شبیہ بنائی جا رہی ہے، اس سے وہ خوش نہیں ہیں۔ دراصل، وہ ایکشن اور کامیڈی جیسی فلموں میں بھی کچھ الگ کرنا چاہتی ہیں ۔ اس سلسلہ میں صحافی چندر موہن شرما نے ایشا سے بات چیت کی۔ پیش ہیں ان کی بات چیت کے اہم اقتباس

آپ کی شبیہ بولڈ اداکارہ کی بن رہی ہے؟
آپ میرا موازنہ ان اداکارائوں سے نہ کریں جو جلد از جلد پانی حاصل کرنے کے لئے کچھ بھی کر سکتی ہیں۔ ابتدائی دو تین فلموں کے فوراً بعد میری شبیہ بنانا شاید بہت جلد بازی ہوگی۔
فلموں میں ایکسپوزر آپ کو کس حد تک صحیح لگتا ہے؟
جواب: اگر ایکسپوزر ، کردار اور اسکرپٹ کا ضروری حصہ ہیں، تو اعتراض کا سوال ہی نہیں پیدا ہوتا۔
سیریل کِسر شبیہ والے عمران ہاشمی کے ساتھ فلمیں کرنے کا تجربہ کیسا رہا؟
عمران ہاشمی واقعی قابل تعریف ہیں۔ انڈسٹری میں نئے لوگوں کی مدد کرنا ان کی فطرت میں شامل ہے۔میں دہلی کی رہنے والی ہوں ۔ اس کے باوجود دہلی میں بھیڑ کے سامنے ’’جنت 2‘‘ کی شوٹنگ کے دوران نروس تھی۔اس وقت عمران نے مجھے سپورٹ کیا۔ کریئر کی پہلی فلم کی شوٹنگ کے دوران عمران  میرے ساتھ ایسے پیش آئے جیسے میں کوئی مشہور اداکارہ ہوں۔
بھٹ کیمپ کے ساتھ تیسری فلم میں تاخیر کی وجہ ؟
بھٹ کیمپ کے ساتھ تین فلموں کی ڈیل ہوئی ہے، لیکن میں ان کے ساتھ تین اور فلم کرنا چاہوں گی۔ وہ ان دنوں ـــ’مرڈر‘ اور ’عاشق‘ کے سیکول میں مصروف ہیں۔ ویسے، میرے ساتھ شروع ہونے والی نئی فلم کی اسکرپٹ کا کام بھی مکمل ہو چکا ہے۔اس کیمپ کی فلم بننے میں زیادہ وقت نہیں لگتا۔ پیپر ورک پوری طرح سے نمٹانے کے بعد شوٹنگ شروع ہوتی ہے۔
آپ کا نام ایک خاص کیمپ سے جڑا ہے، کیا کوئی دقت ہے؟
فلم انڈسٹری میں کوئی خاص کیمپ کسی نئے شخص کو ایک ساتھ تین چار فلموں کی ڈیل کرتا ہے، تو اس کے ساتھ جڑنے میں کوئی برائی نہیں ہے۔ ویسے بھی ان دنوں انڈسٹری کے ٹاپ بینر نئے اداکاروں کے ساتھ اگلی دو تین فلموں کی ڈیل کرتے ہیں۔
ایک آن لائن سروے میں آپ کو ہاٹیسٹ پولس والی منتخب کیا گیا، کیسا لگا؟
میں خود حیران تھی۔ اس سروے میں کئی دوسری اداکارائوں کو شامل کیا گیا تھا، جو پردے پر پولس کی ڈریس میں نظر آئیں۔ مجھے جب پتہ چلا کہ میرا نام بھی اس سروے میں شامل ہے، تو میں اس وقت حیران ہو گئی تھی۔ پھر مجھے معلوم ہوا کہ پرکاش جھا کی فلم ’چکرویو ‘ میں میرے پولس افسر والے لُک کو سروے میں شامل لوگوں نے سب سے زیادہ ہاٹ اور سیکسی مانا۔بے شک، مجھے ہاٹیسٹ پولس والی کا خطاب جیت کر اچھا لگا۔
اب کس طرح کی فلمیں کرنا چاہتی ہیں؟
فی الحال تو میں کامیڈی اور مسالہ فلمیں کرنا چاہتی ہوں۔ میرے پسندیدہ ایکشن اداکار اکشے کمار اور جیکی ہیں۔ جیمس بانڈ سیریز فلموں کی میں دیوانی ہوں۔ ’’رائوڈی راٹھور‘‘ میں اکشے کا ایکشن بہت پسند آیا۔ اب اس طرح کی فلمیں کرنا چاہتی ہوں۔
آپ کی فیشل فیچرس کا موازنہ لارا دتا سے کیا جاتا ہے، آپ اس سے متفق ہیں؟
اس بارے میں میں نے بھی کئی بار سنا اور کئی میگزینوں میں لارا کے ساتھ شائع ہوئی اپنی تصویروں کو بھی غور سے دیکھا،  لیکن یکسانیت کے بارے میں ذرا بھی نہیں سوچا۔ اگر آپ کو یا میرے فینس کو ایسا لگتا ہے، تو کچھ تو ہوگا۔
ابتدائی دور میں تھری ڈی فلم کرنے کا تجربہ کیسا رہا؟
اس تکنیک میں بننے والی فلموں میں زیادہ محنت کرنی پڑتی ہے،  خاص کر جب ڈائریکٹر ایکشن سینس کو شوٹ کرتا ہے ، اس وقت ہمیں کیمرے کے سامنے سلو موشن میں اپنا کام نمٹانا ہوتا ہے۔ اس کا تجربہ بے حد مزیدار تھا۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *