پیٹرسن نے ٹھکرایا معاہدہ

آئندہ ہندوستان دورہ کے لئے ٹیسٹ سیریز سے باہر کئے گئے انگلینڈ کے سلامی بلے باز کیون پیٹرسن اور انگلینڈ اینڈ ویلس کرکٹ بورڈ(ای سی بی)کے درمیان تنازعہ حل ہونے کا نام نہیں لے رہا ہے۔ایک اخبار کی رپورٹ کے مطابق ہندوستان دورہ کے لئے 16رکنی ٹیم منتخب کئے جانے سے قبل ای سی بی نے پیٹرسن کو چار مہینے کا معاہدہ کرنے کی پیشکش کی تھی۔لیکن پیٹرسن اپنی انا پر قائم رہے اور انھوں نے ای سی بی کی پیشکش ٹھکرا دی۔اس معاہدہ میں ای سی بی نے پیٹرسن کے سامنے کچھ شرائط رکھی تھیں، جن کے تحت پیٹرسن مستقبل میں ای سی بی کے لئے خلاف کارروائی نہیں کر سکیں گے۔اس کے علاوہ انہیں جنوبی افریقی کرکٹ ٹیم سے کھلے عام معافی مانگنی ہوگی۔ساتھ ہی انہیں ای ایس پی این کے ساتھ کیا گیا اپنا معاہدہ ختم کرنا ہوگا جو انھوں نے ٹی 20ورلڈ کپ کے لئے بطور کرکٹ ایکسپرٹ کے طور پر کیا ہے۔ اس کے علاوہ پیٹرسن کو چار مہینے کے معاہدہ کے تحت اکتوبر کے آخر میں دبئی میں منعقد ہونے والے ٹریننگ کیمپ میں حصہ لینا تھا، لیکن انہیں ہندوستان دورہ کے لئے ٹیم میں جگہ نہیں دی جاتی۔مگر پیٹرسن نے معاہدہ کو یہ کہہ کر ٹھکرا دیا کہ اس میں انہیں مستقبل کو لے کر کوئی یقین دہانی نہیں ملتی۔یاد رہے کہ کرکٹ میں سویچ ہٹ جیسے کئی دلچسپ شاٹ ایجاد کرنے والے کیون پیٹرسن کا شمار دنیا کے جارح بلے بازوں میں ہوتا ہے اور انگلینڈ کو ان کی کمی شدت سے کھل رہی ہے۔یاد رہے کہ کیون پیٹرسن ای سی بی سے تنازعہ کے سبب آئی سی سی ٹی 20ٹیم کا حصہ نہیں ہیں اور اس وقت وہ سری لنکا میں ہاتھ میں بلے بجائے مائک پکڑے اپنی ڈیوٹی انجام دے رہے ہیں۔g
ہیڈن کا کرکٹ کو الوداع
آسٹریلیا کے سابق کرکٹر میتھو ہیڈن اب کبھی اسٹیڈیم میں اپنے بلے سے جلوہ نماں نہیں ہوں گے۔جی ہاں میتھو ہیڈن جو آسٹریلیا کے کامیاب ترین بلے بازوں میں شامل رہے ہیں، نے گزشتہ دنوں تمام طرز کی کرکٹر کو الوداع کہہ دیا۔یاد رہے 2008میں ہوئی کامن ویلتھ بینک سیریز جس کے فائنل میں آسٹریلیا اور انڈیا کا مقابلہ تھا۔ انڈیا نے یہ مقابلہ جیت لیاتھا۔ اس کے بعد سے ہی ہیڈن نے یکروزہ بین الاقوامی میچوں سے رٹائرمنٹ کا اعلان کر دیا تھا۔ جبکہ انھوں نے اپنا آخری ٹیسٹ جنوری 2009میں سائوتھ افریقہ کے خلاف سڈنی میں کھیلا تھا۔ اس کے علاوہ ہیڈن نے 9ٹی 20بین الاقوامی میچز بھی کھیلے ہیں۔انھوں نے اپنا آخری بین الاقوامی ٹی 20مقابلہ اکتوبر 2007میں ہندوستان کے خلاف کھیلا تھا۔مارچ 1994میں سائوتھ افریقہ کے خلاف اپنے ٹیسٹ کریئر کا آغاز کرنے والے میتھو ہیڈن کا کرکٹ کریئر بے حد تابناک رہا اور ان کا شمار دنیا کے جارح اوپننگ بلے بازوں میں ہونے لگا۔ہیڈن نے 103ٹیسٹ میچوں کی 184اننگز میں 50کی اوسط سے 8625رن بنائے ہیں۔جس میں 30سنچری بھی شامل ہیں۔ٹیسٹ کریئر میں ان کا نمایاں اسکور 380رہا۔غور طلب ہے کہ میتھو ہیڈن آسٹریلیا کے واحد کھلاڑی ہیںجنھوں نے ٹیسٹ کرکٹ کی اننگز میں 380رن کی اننگز کھیلی ۔اس کے علاوہ 161یکروزہ بین الاقوامی مقابلوں میں آسٹریلیا کی نمائندگی کرنے والے میتھو ہیڈن نے اپنے کریئر میں155اننگز کھیلیں اور تقریباً 44کی اوسط سے 6133رن بنائے جس میں10سنچریاں بھی شامل ہیں۔یکروزہ بین الاقوامی میچوں میں ان کا نمایاں اسکور 181ناٹ آئوٹ رہا۔یاد رہے کہ 2009کے بعد سے ہیڈن نے بین الاقوامی کرکٹ سے رٹائرمنٹ لے لی تھی اور وہ صرف گھریلو کرکٹ ہی کھیل رہے تھے۔جس میں آسٹریلیا میں رواں سال منعقد ہوئی بگ بیش لیگ میںوہ بریسبین ہیٹ کی نمائندگی کر رہے تھے۔ اس کے علاوہ انھوں نے آئی پی ایل میں چنئی سپر کنگ کی نمائندگی بھی کی ہے۔غور طلب ہے کہ میتھو ہیڈن ایسے کھلاڑی ہیں جو آسٹریلیا کے سنہری دور میں شامل رہے۔جسٹن لنگر اور ایڈم گلکرسٹ کے ساتھ ان کی اوپننگ جوڑی دنیا بھر میں اپنی جارح بلے بازی کے لئے مشہور ہوئی۔ ہیڈن نے اپنی رٹائرمنٹ کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ میری زندگی کا پس منظر تیزی سے تبدیل ہو رہا ہے اور ایسی صورت میں اپنے اہل خانہ کے لئے وقت نکالنا چاہتا ہوں۔میرے تین بچے ہیں اور میرے ذمہ کئی کام ہیں۔یہ میرے لئے ایک نئی ذمہ داری اور نیا چیلنج ہے۔ gددنن
روڈیشہ ہوں گے ہاف میراتھن کے امبیسڈر
لندن اولمپک میں مردوں کی 800میٹر ریس میں عالمی ریکارڈ کے ساتھ طلائی تمغہ جیتنے والے کینیا کے ایتھلیٹ ڈیوڈ روڈیشہ ایئر ٹیل ایوینٹ ہاف میراتھن کے ایوینٹ ایمبسڈر ہوں گے۔وہیں ریس کے منتظمین نے 30ستمبر کو ہونے والی ریس کے دوران ہاف میراتھن کا عالمی ریکارڈ بنانے والے ایتھلیٹ کو 25ہزار امریکی ڈالر کا نقد انعام دینے کا اعلان کیا ہے۔بھارتی زمرے میں نیا ریکارڈ بنانے والے ایتھلیٹ کو ایک لاکھ روپے کا نقد انعام دیا جائے گا۔لندن اولمپک میں 800میٹر ریس میں ایک منٹ 40.91سیکنڈ کے وقت کے ساتھ نیا عالمی ریکارڈ بنانے والے روڈیشہ کی جلد ہی دہلی آمد ہوگی۔منتظمین کو بھروسہ ہے کہ ینگ جنریشن کو فٹنس اور اسپورٹ ایکٹیوٹی کا پیغام دے پائیں گے۔2010میں آئی اے اے ایف کاایتھلیٹ آف دی ایئر کا ایوارڈ جیت چکے روڈیشہ نے اپنے پیغام میں کہا کہ ہندوستان آکر انہیں بے حد خوشی ہوگی۔خاص کر ہاف میراتھن میں اپنے ملک کے ایتھلیٹوں کی حوصلہ افزائی کرنے میں انہیں انتہائی خوشی کا احساس ہوگا۔ اس بار دہلی ہاف میراتھن میں 12مرد ایتھلیٹ ایسے ہیں جو 60منٹ کے اندر ریس کو ختم کر تے رہے ہیں اور 8خاتون ایتھلیٹ ایسی ہیں جو 70منٹ میں ریس پوری کرتی رہی ہیں۔ ایسی صورت میں منتظمین نے ریس میں زیادہ مقابلہ آرائی کے ارادہ سے ورلڈ ریکارڈ کے لئے 25ہزار ڈالر کا نقد انعام دینے کا اعلان ہے۔فی الحال یہ ورلڈ 58منٹ 23سیکنڈ کا ہے۔ایتھوپیا کے اتیسدو تیسیگا اس ریکارڈ کو توڑنے کے بڑے دعویدار ہیں۔وہیں ریس کا نیا میٹ ریکارڈ بنانے پر ایتھلیٹ دس ہزار ڈالر کا نقد انعام جیت سکتے ہیں۔اس کے علاوہ اس بار انٹر کالج اسپورٹنگ چیلنج میں 21تیمیں حصہ لے رہی ہیں۔ ان میں 15ٹیمیں مردوں اور سات ٹیمیں خواتین کی ہیں۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *