میں بھی حاضر تھا وہاں۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

 آل انڈیا مشاعرہ میں فصیح چودھری اوروسیم راشد کو ادبی خدمات کے لئے نوازا گیا
ہاپوڑ: سُور دھروہر اور جشنِ ادب سوسائٹی ممبئی کے زیر اہتمام ایک آل انڈیا مشاعرے کا انعقاد کیا گیا جس میں اردو ادب کی بیکراں خدمات کے لئے معروف شاعر و مصنف اور فلم (ڈونٹ بلیم می) کے اداکار فصیح چودھری اور چوتھی دنیا کی اردو ایڈیٹر وسیم راشد کوپروڈیوسر ، ڈائرکٹر مہیش بھٹ اور غلام مصطفی صاحب نے مومینٹو اور ردائے ادب سے نوازا۔ مشاعرے کی شمع روشن مہمانِ خصوصی مہیش بھٹ صاحب نے کی ، مہمانِ ذی وقار غلام مصطفی صاحب ، مہمانِ دلنواز ابھی شیک سنگھ انکم ٹیکس کمشنر ممبئی ، سمی بوبرے ، عاصف فاروقی اور خالد قیصر آئی پی ایس تھے ۔ مشاعرے کی نظامت کے فرائض سدھارتھ ساندلے نے انجام دئے۔ مہیش بھٹ نے اس خوبصورت شام کو با وقار بناتے ہوئے کہا کہ اردو اتنی میٹھی اور شیریں زبان ہے کہ اس کا مستقبل ہمیشہ روشن رہے گابھلا کون کانوں میں رس گھولنے والی اس زبان کو بولنا اور سننا نہیں چاہتا ۔ ہماری فلموں کا پیرہن یہی زبان تو ہے۔ میں فصیح چودھری اور وسیم راشد کی شاعری سے بیحد ممتاثر ہوا ہوں انکے کلام میں محبت کا خزانہ ہے۔ میں وسیم راشد کو صرف ہندوستان کی پہلی اردو ایڈیٹر خاتون کے روپ میں جانتا تھا آج ایک اچھی شاعرہ ہونے کے لئے مبارکباد پیش کرتا ہوں ۔ میں خاص طور سے انہیں اور تمام شعراء حضرات کو سننے کے لئے تھوڑا سا وقت اپنی مصروفیت سے چرا لایا ہوں ۔ تاکہ روح کو تازگی دے سکوں ۔ مشاعرے کی صدارت معروف فلمی شاعر ابراہیم اشک نے فرمائی ۔ مشاعرے میں پسند کئے گئے اشعار قارئین کے لئے پیشِ خدمت ہیں۔
گھر سے دشمن کے خبر جب بھی بری ملتی ہے
دل بڑا لاکھ ہو لوگوں کو خوشی ملتی ہے
وسیم راشد
وہ کب آخر مجھے حاصل نہیں تھا
مگر سچ یہ ہے وہ منزل نہیں تھا
فصیح ؔچودھری
ذلیل و خوار ہے کیوں اس قدر زمانہ میں
وہ قوم جو کہ عبادت گزار گذری ہے
وارث وارثی ؔ
محبت میں سر درد مزہ دیتا ہے
محبت میں ہر درد مزہ دیتا ہے
ابراہیم اشکؔ
یہ دل ہر بار ہی خود سے فریب کھاتا ہے
ہر بار تیرے چہرے میں مجھ کو خدا نظر آیا
وبھا سنگھؔ
چہرے بدل بدل کے وہ برباد کر گیا
ہم پوچھتے ہی رہ گئے کردار کون ہے
نظر ؔ بجنوروی
چاہت نہیں ہے مجھ کو چمیلی گلاب کی
خوشبو میرے پسینے کی غربت کی شان ہے
خالد شرر اعظمیؔ
اس کے علاوہ اتل اگروال ،سنیل مشرا ، خالد قیصرنے بھی اپنے کلام سے نوازا۔
اودے پور میں عظیم الشان مشاعرے کا انعقاد
گزشتہ دونوںمراری باپو کے پروگرام کے تحت ایک مشاعرہ اودے پور راجستھان کے نتھوارا میں منعقد ہوا، جس میں ملک کے مہشور و معروف شعراء کرام نے اپنے کلام پیش کرکے سامعین کو محظوظ کیا۔مشاعرہ میں شرکت کرنے والے شعراء میں جناب ندا فاضلی،جناب وسیم بریلوی، محترمہ علینہ عطرت رضوی،،محترمہ نسیم نکہت ،محترمہ ڈپٹی مشرا ، جناب شکیل احمد شکیل، جناب عقیل نعمانی، جناب منصور عثمانی، جناب شکیل اعظمی ، جناب ملک زادہ جاوید کے علاوہ متعدد شعراء کو سامعین نے دلجمعی کے ساتھ سنا اور خوب خوب داد تحسین پیش کی۔ مدعو مہمان کرام میں جناب عطاء الحق قاسمی، محترمہ کشور ناہید صاحبہ، شکیل جاذب، عزیر احمد پاکستان سے تشریف لے آئے تھے، مگر کسی عذر کی وجہ سے مشاعرہ میں شرکت نہ کرسکے۔
عید ملن :تہوار غریبوں، محتاجوں کے درد بانٹنے کاپیغام دیتا ہے
نئی دہلی:گزشتہ دنوں انڈیا اسلامک کلچرل سینٹر میں عید ملن تقریب منعقد ہوئی۔اس موقع پر اسلامک کلچرل سینٹر کے صدر سراج الدین قریشی نے کہاکہ عید الفطر کا تہوار ایک طرف جہاں انعامات خداوندی پر اللہ کا شکر ادا کرنے کا ایک موقع عطا کرتا ہے وہیں ہمیں یہ بھی پیغام دیتا ہے کہ غریبوں ، کمزوروں ، محتاجوں ، بیوائوں اور یتیموں کو بھی اس مبارک خوشی میں شامل کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ آئی آئی سی سی عید جیسے دوسرے تمام اسلامی ، قومی تہواروںپر خصوصی پروگرام منعقد کرتا ہے جن میں مسلمانوں کے علاوہ برادران وطن کو بھی مدعو کیا جاتا ہے۔ قومی آفات کمیشن کے وائس چیئر مین ششی دھر ریڈی نے کہا کہ انڈیا اسلامک کلچرل سینٹر میں جس طرح کے پروگرام ہورہے ہیں ان پر ہر عام و خاص کو فخر ہوگا کیونکہ یہاں سے نوجوان نسل کو ایسی تربیت دی جارہی ہے جس کا ملک میں کہیں انتظام نہیں ہے ۔ دہلی اقلیتی کمیشن کے چیئر مین صفدر ایچ خان نے تمام مہمانوں کا شکر ادا کیا اور انہوں نے کہا کہ مجھے فخر کے ساتھ کہنا پڑ رہا ہے کہ آئی آئی سی ملک کا پہلا سینٹر ہے جہاں عید ، دیوالی، گرو پرو اور کرسمس یکسانیت کے ساتھ منائے جاتے ہیں ۔اس موقع پر سابق گورنر بلرام سنگھ جاکھڑ ، وزیر اعلیٰ شیلا دیکشت ، جمعیت علماء ہند کے قومی جنرل سکریٹری و سابق ایم پی مولانا محمود مدنی، یوپی پردیش صدر راکش سنگھ، شفیق الرحمن برق، سابق وزیر اترپردیش ڈاکٹر معراج الدین ، سکریٹری اے آئی سی سی انیس درانی، محترمہ نسیم اسحاق، دہلی ویمن کمیشن کی رکن جوہی خان، مولانا نیازی فاروقی، مقامی ممبر اسمبلی تروندر سنگھ ، ڈاکٹر پرویزمیاںکے علاوہ دیگر شرکاء نے بڑی تعداد میں عید ملن میں حصہ لیا۔ اس موقع پر مرکزی وزیر ڈاکٹر فاروق عبد اللہ نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ انڈیا اسلامک سینٹر کے طرز پر وہ کشمیر میں بھی ایک سینٹر قائم کرنے کے خواہش مند ہیں۔
شاعر کا دماغ حساس ہوتا ہے
نئی دہلی: گزشتہ دنوں جسٹس مارکنڈے کاٹجو کی جانب سے ان کی رہائش گاہ پر منعقد پر وقار ِـ’’گنگاجمنی عید ملن پروگرام ومشاعرہ‘‘ میں بطور مہمان خصوصی اپنی تقریر میں نائب صدر جمہوریہ ہند محمد حامد انصاری نے کہا کہ شاعر عام انسان نہیں ہوتا، وہ بہت حساس ہو تا ہے۔ اس کے دل و دماغ پر معاشرے کی ہر چھوٹی سے چھوٹی چیز اچھے برے واقعات و حادثات کا بہت گہرا اثرہوتا ہے۔ پروگرام کی صدارت معروف نقاد سید محمد اشرف نے کی جبکہ نظامت کے فرائض ڈاکٹر عمیر منظر نے انجام دیے۔ اس سے قبل جسٹس مارکنڈے کاٹجو نے خیر مقدمی کلمات میں تمام مہانان کا استقبال کرتے ہوئے انہیں عید کی مبارک باد دی اور ہندوستان کی قدیم گنگا جمنی تہذیب ،روایات ، فرقہ وارانہ ہم آہنگی ، آپسی میل جل و محبت ، بھائی چارہ اور قومی یکجہتی کا ذکر کرتے ہوئے اردو زبان کی چاشنی ، اثر اور کشش کے بارے میں بتاتے ہوئے عوامی زبان اور قومی یکجہتی و امن کی علامت قرار دیا۔ جسٹس کاٹجو نے اردو کی موجودہ صورت حال پر بھی روشنی ڈالی اور اردو کے فروغ ، ترقی و ترویج پر خصوصی دھیان دینے اور سنجیدہ اقدامات کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔ سید محمد اشرف نے اپنے صدارتی کلمات میں تمام معزز مہمانان کا مختصر تعارف کرایا اور اردو غزل کی تعریف کی۔ اس موقع پر جسٹس کاٹجو کی اردو خدمت اور اردو کی وکالت کرنے پر معروف سماجی و علمی شخصیت آصف اعظمی و دیگر منتظمین کی جانب سے نائب صدر جمہوریہ ہند محمد حامد انصاری کے ہاتھوں اعزاز کے طور پر ایک مومنٹو پیش کیا گیا۔ ۔ عید ملن کی اس تقریب میں منعقد کیے گئے مختصر مشاعرے کی شمع نائب صدر جمہوریہ ہند محمد حامد انصاری، کپل سبل ، سلمان خورشید ، ڈاکٹر فاروق عبد اللہ، پروگرام کے سرپرست جسٹس مارکنڈے کاٹجو اور آصف اعظمی نے مل کر روشن کی۔ اس تقریب میں دیگر معزز شخصیات میں شرد یادو، لالو پرساد یادو، جگدیش ٹائٹلر، وزیر اعلیٰ شیلا دیکشت ، راجیہ سبھا کے ممبر راجیو شکلا، سابق چیف الیکشن کمشنر آف انڈیا ایس وائی قریشی،چوتھی دنیا اردو کی ایڈیٹر وسیم راشد ، جشن بہار ٹرسٹ کی روح رواں کامنا پرساد ، اردو اکادمی کے وائس چیئرمین پروفیسر اختر الواسع، بیگم لوئس خورشید ، فلم اداکارہ نغمہ ، سہارا اردو کے سید فیصل علی اور دیگر کئی مشہور سیاسی ، سماجی ،ادبی اور علمی سرکردہ شخصیات سمیت وکلا اور صحافیوں نے شرکت کی ۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *