لندن نامہ

حیدر طبا طبا ئی
ہمیشہ سے پوری دنیا میں لندن سیاست کا بڑا مرکز رہا ہے، جہاں جہاں انگریزوں کی حکومت رہی ہے ان ممالک اور ہر خطۂ زمین سے متعلق سیاسی سرگرمیوں کا مرکز لندن ہی رہا ہے۔ مسلم ممالک کے علاوہ ہندوستان کی اہم شخصیات کا تعلق بھی لندن ہی رہا ہے۔ محمد علی جناح ، پنڈت جواہر لال نہرو، مہاتما گاندھی ،جے پرکاش نرائن بھی لندن کے فارغ التحصیل تھے بلکہ یوں کہا جائے کہ ان لوگوں نے یہاں پڑھ کر یہاں کی رموز سیاست کا جواب دیا ۔ ہندوستان

Read more

ٹیم انا: اب رضاکار حکومت کے نشانہ پر

ششی شیکھر
پانچ ریاستوں میں اسمبلی انتخاب ہونے ہیں۔ انا ہزارے نے کہا کہ وہ ان پانچ ریاستوں کا دورہ کریں گے اور مضبوط لوک پال بل نہیں آیا تو کانگریس کے خلاف تشہیر بھی کریں گے۔ 29نومبر سے پہلے یہ خبر آ چکی تھی کہ اسٹینڈنگ کمیٹی نے لوک پال کے جس خاکہ پر اپنی مہر لگائی ہے، وہ ٹیم انا کے مطالبہ یا کہہ سکتے ہیں کہ لوک پال کے کہیں ارد گرد بھی نہیں آتا۔نتیجتاً ، انا ہزارے کی تحریک سے وابستہ رضاکار عوام کے درمیان یہ پیغام لے کر پہنچنے لگے کہ حکومت پھر سے لوک پال کے نام پر دھوکہ دینے جا رہی ہے۔ 29نومبر کو نئی دہلی کے کناٹ پلیس تھانہ علاقہ میں ک

Read more

ہندوستان کی تقسیم اور اردو

جسٹس مارکنڈے کاٹجو (چیئر مین ، پریس کونسل آف انڈیا)
انیس سو سیتلایس میں تقسیمِ ہند سے اردو کو سب سے بڑا نقصان پہنچا۔ اس وقت سے اردو کو غیر ملکی زبان کہا جانے لگا اور یہ کہ اردو صرف مسلمانوں کی زبان ہے، یہاں تک کہ اپنی حب الوطنی ثابت کرنے کے لیے اور اپنے ہندو بھائیوں کے ساتھ ہم آہنگی ثابت کرنے کے لیے خود مسلمانوں نے اردو پڑھنا چھوڑ دیا۔1947 کے بعد فارسی کے وہ الفاظ جو عام استعمال میں تھے، انہیں ہٹاکر ان کی جگہ سنسکرت کے الفاظ ڈال دی

Read more

میری دلّی پرانی دلّی

ایس وائی قریشی (چیف الیکشن کمشنر، ہند)
دنیا کے تمام بڑے شہروں کی سب سے بڑی خوبی یہ ہے کہ وہ اپنے اندر طاقت اور سرمایے کا خزانہ تو رکھتے ہی ہیں، ساتھ ہی وہ معاشرتی زندگی کی خوبصورتی اور کثرت کو بھی اپنے اندر سموئے ہوئے ہیں۔ قدیم روم متعدد قیصر کا شہر ہی نہیں تھا، بلکہ یہ شہر گلیڈییٹرس، موسیقاروں، محل سراؤں، اور اس قسم کے

Read more

بے یقینی کا شکار پاکستانی سیاست

وسیم راشد
پاکستانی صدر آصف زرداری کا دل کے دورے میں مبتلا ہونا اور پھر دبئی میں علاج کے دوران یہ پتہ چلنا کہ ان کے دماغ کی نس پھٹ گئی ہے جس سے ان کا جسم لقوہ زدہ ہوگیا ہے ،پاکستان کی سیاست میں ایک بڑی تبدیلی کا باعث بن گیا ہے۔چونکہ پاکستان اپنے خود غرض لیڈر اور اقتدار پسند فوج کی وجہ سے ہمیشہ ہی عالمی سطح پر تشویش کا باعث بنا رہا ہے۔کبھی دوسرے ممالک میں دہشت گردوں کو ہوا دینے کی وجہ سے تو کبھی خود دہشت گردوں

Read more

دہشت گرد مسلمان نہیں پولس ہے

ڈاکٹر قمر تبریز
اگر صحیح پوچھا جائے تو لفظ ’انڈین مجاہدین‘ کا کوئی وجود ہی نہیں ہے، بلکہ یہ پولس کے پراگندہ ذہن کی پیداوار ہے، جس نے ملک کے اب تک سیکڑوں مسلم خاندانوں کو تباہ و برباد کرکے رکھ دیا ہے۔ اس لفظ کا سب سے پہلے استعمال تین سال قبل اس وقت ہوا تھا جب گجرات کے ایک ڈی آئی جی نے احمدآباد میں جولائی 2008 میں ہوئے ایک بم دھماکہ میں ’انڈین مجاہدین‘ کے دہشت گردوں کا ہاتھ ہونے کی بات کہی تھی۔ اس پولس افسر نے میڈیا والوں کو تفص

Read more

یہ محدود جمہوریت ہے

راجیو کمار
مصر میں پارلیمانی انتخابات شروع ہو چکے ہیں۔ تین مرحلوں میں ہونے والے یہ انتخابات جنوری تک چلیں گے۔ پہلے مرحلہ کا انتخاب پورا ہو چکا ہے اور اس کے نتیجے بھی آ چکے ہیں۔ جو نتائج سامنے آئے ہیں، ان پر کئی سوال اٹھائے جا سکتے ہیں۔ حالانکہ یہ کوئی حیران کن نتائج نہیں ہیں۔ پہلے سے ہی اندازہ لگایا جا رہا تھا کہ مسلم بردرہوڈ سے وابستہ پارٹیوں کو انتخاب میں زیادہ فائدہ مل سکتا ہے، لیکن پھر بھی اس بات کی امید ضرور تھی کہ جمہوریت کے لیے

Read more

غیر قانونی کان کنی: سرکار ایجنٹ کا کام کر رہی ہے

فردوس خان
ملک میں غیر قانونی کانکنی کا عملبدستور جاری ہے۔ لیڈروں اور افسروں کی ملی بھگت سے کانکنی کے مافیا ملک کے کثیر معدنی ریاست میں معدنیات کو لوٹنے میں لگے ہوئے ہیں۔ افسوس کی بات تو یہ ہے کہ جمہوری ملک کی حکومت اور نمائندے مفاد عامہ کو طاق میں رکھ کر سرمایہ داروں کے ایجنٹ کا کردار ادا کر رہے ہیں۔کرناٹک

Read more

بچوں کا استحصال، ملک کے مستقبل کے ساتھ کھلواڑ

محمد نوشاد عالم
تعلیم کی اہمیت وافادیت سے بھلا کس کو انکار ہے! تعلیم ہی وہ طاقت ہے جس سے اقبال و عروج کی راہیں ہموار کی جاتی ہیں۔ تعلیم کے تئیں یہ کہنا مبالغہ آمیزی نہیںکہ تعلیمی باغ میںہی حقوق کی بازیابی، حق گوئی وبے باکی، اولو العزمی وبلندہمتی، ظفریابی وفتح مندی کے خوشنما گلاب کھلتے ہیں۔ جس ملک و قوم یامعاشرہ میں علم دوست افراد ہوتے ہیں، وہاں کی فضا نغمگی آشنا ہوتی ہے۔ یہی وجہ ہے کہ بلا تفریق مذہب وملت تعلیم کے فروغ کے لیے لائحہ عم

Read more

تعزیتی جلسے

مجتبیٰ حسین
تعزیتی جلسے ان جلسوں کو کہتے ہیں جو کسی کے مرنے کی مسرت میں منعقد کیے جاتے ہیں۔ ان جلسوں کے منعقد ہونے کا کوئی وقت مقرر نہیں ہوتا کیونکہ موت، وقت اور موسم دیکھ کر نہیں آتی۔اسی لیے تعزیتی جلسے اچانک یوں منعقد ہوجاتے ہیں جیسے آسمان پر یکایک قوس قزح نکل آتی ہے۔ ان جلسوں کے انعقاد کے لیے ایک مشہور مردہ شخصیت، دوچارزندہ مقررین، ایک پلیٹ فارم، ایک مائیکروفون اور چند سامعین کا ہونا نہایت ضروری ہے۔ بعض اوقا

Read more