ٹوٹے رشتوں کو جوڑنے میں مصروف کرشمہ

کچھ  وقت پہلے تک کرشمہ کپور خوش نظر نہیں آ رہی تھیں لیکن اب وہ خوشی سے پھولے نہیں سمارہی ہیں۔ حال ہی میں کرشمہ نے اپنے شہور کے کنبہ کے ساتھ فوٹو بھی کھنچوائے ہیں اور کچھ تصویریں انھوں نے بہن کرینہ کپور کو بھیجی ہیں۔ بالی ووڈ اداکارہ کرشمہ کپور ایک بار پھر اپنی ٹوٹتی شادی کو بچانے کی فراق میں مصروف ہیں۔ انھوں نے اس بار دیوالی اپنے شوہر سنجے کپور اور بچوں کے ساتھ منائی۔ازدواجی زندگی میں تلخیاںآنے کے بعد وہ شوہر سے تلاق لینے کے بارے میں سوچ رہی تھیں، لیکن لگتا ہے اب ان کا ارادہ بدل گیا ہے۔ذرائع نے بتایا کہ کرشمہ دہلی میں شوہر اور بچوں کے ساتھ قریب ایک ہفتہ رہیں۔انہیں طویل عرصہ بعد اتنا خوش دیکھا گیا۔ انھوں نے اپنے شوہر اور بچوں کے ساتھ فوٹو کھنچوا کر اپنی بہن کرینہ کو بھی بھیجے ۔ کرینہ ان دنوں لندن میں ہیں۔قابل ذکر ہے کہ ابھیشیک بچن سے علیحدگی کے بعد کرشمہ نے سنجے سے 2003میں شادی کی تھی۔ سنجے نے بھی اداکارہ سے سے شادی سے کچھ دن پہلے ہی اپنی پہلی بیوی سے طلاق لیا تھا۔ 2005میں پہلی بیٹی کی پیدائش کے وقت سے کہا جا رہا تھا کہ دونوں کے درمیان تلخیاں بڑھ رہی ہیں۔اس کی وجہ نیویارک کے مشہور تاجر کی سابق بیوی کے ساتھ سنجے کی نزدیکیاں بتائی گئی تھیں۔گزشتہ سال مارچ میں ایک بیٹا ہونے کے بعد شوہر سے علیحدگی کے سبب کرشمہ نے ممبئی کا رخ کر لیا اور بچوں کے ساتھ باندرا میں رہنے لگیں۔ اب انھوں نے بالی ووڈ میں بھی اپنی دوسری پاری شروع کر دی ہے۔ وہ ہدایت کار وکرم بھٹ کی فلم ’’ڈینجرس عشق‘‘سے واپسی کر رہی ہیں۔ علاوہ ازیں وہ ’’ستے پے ستا‘‘ کی ریمیک میں بھی اہم کردار میں ہیں۔g
منیشا اور سوناکشی آمنے سامنے
جوکر  فلم کے ہدایت کار شریش کندر نے فیصلہ لیا ہے کہ وہ اپنی فلم کے لئے منیشا لامبا پر ایک آئٹم سانگ فلمائیں گے۔ یہ سن کر فلم کی اداکارہ سوناکشی عدم تحفظ کے جذبہ میں گھر گئی ہیں۔ اسی فلم کے لئے ایک آئٹم سانگ سوناکشی سنہا پر فلمایا گیا ہے، جس کے کچھ حصہ میں منیشا بھی نظر آئیں گی۔ اس سے سوناکشی کافی ناراض بھی ہوئیں اور انھوں نے منیشا کو ہی اس کے لئے قصوروار مانا۔ سوناکشی سنہا کے خلاف منیشا نے اپنا منھ تو نہیں کھولا، لیکن پتہ نہیں ہدایت کار صاحب پر انھوں نے اپنا کیا جادو چلا دیا کہ شریش نے ایک آئٹم نمبر منیشا پر فلمانے کا فیصلہ لے لیا۔ منیشا کے فلم میں بڑھتے اثر سے دبنگ گرل متفکر ہو گئی ہیں۔ انہیں سمجھ میں نہیں آ رہا ہے کہ ایک چھوٹے سے رول کے لئے سائن کی گئی منیشا کو اتنی زیادہ اہمیت کیوں دی جا رہی ہے۔ منیشا لامبا اور مکل دیورا کے درمیان آج کل نزدیکیاں کافی بڑھنے لگی ہیں۔آج کل یہ جوڑا بالی ووڈ میں کافی تذکروں میں ہے۔مکل منیشا کی فلم ’’بھیجا فرائی2‘‘کے ڈائریکٹر ہیں۔ ہم آپ کو بتا دیں کہ منیشا کی فلم ’’ہم تم اور شبانہ‘‘ بھی انھوں نے ہی ریلیز کی ہے۔ خبر آئی ہے کہ ان دونوں کے درمیان کی کیمسٹری اب دوستی سے بھی آگے بڑھ چکی ہے۔ دونوں پارٹیوں میں جس طریقہ سے ملتے ہیں اسے دیکھ کر تو کوئی بھی پتہ لگا لے گا کہ ان کے درمیان کچھ تو ہے۔ فلم ’’ہم تم شبانہ‘‘ کے وقت منیشا نے بکنی شاٹس دینے سے انکار کر دیا تھا۔ لہٰذا کہا تو یہاں تک جا رہا ہے کہ ان سب کے پیچھے مکل ہیں۔ مکل کے کہنے پر ہی منیشا نے بکنی شاٹس دینے سے توبہ کی تھی۔ منیشا لامبا ان اداکارائوں میں سے ہیں جن کا دھیان اپنے کام پر ہی ہوتا ہے۔ رومانس کو لے کر وہ کبھی بھی تذکروں میں آتیں۔ اس لئے جب ان کا نام مکل سے جوڑا جا رہا ہے تو اسے بڑی ہی سنجیدگی سے لیا جا رہا ہے۔ اس بارے میں ابھی منیشا اور مکل نے ہی خاموشی اختیار کر رکھی ہے۔g
پیرس ہلٹن کو پسند ہے انڈیا
جب  سے بالی ووڈ میں غیر ملکی دوشیزائوں کا جلوہ گر ہوئی ہیں اور ہندی فلم انڈسٹری کے باہر کی دوشیزائوں کو مقوبلیت کا بہترین پلیٹ فارم ملنے لگا ہے تب سے ہالی ووڈ کی اداکارائوں کی نظر سلور اسکرین پر پڑنے لگی۔ ابھی حال ہی میں لیڈی گاگا کا سرور اس بات کی مثال ہے۔ F-1ریس سے جس طرح گائوں گائوں تک گوری چمڑی کا چرچہ پہنچا ہے۔ اس سے ہر ہالی ووڈ کی دوشیزہ نے ہندوستانی سلور اسکرین میں اپنی جگہ بنانے کی ٹھان لی ہے۔پہلے بہت کم ہالی ووڈ کی اداکارائیں ہندوستان آنے کو راضی ہوا کرتی تھیں، لیکن گزشتہ کچھ وقت سے کئی گوری میم یہاں آکر لوٹ گئی ہیں اور انھوں نے بالی ووڈ کی فلمیں کرنے میں دلچسپی ظاہر کی ہے۔ حال ہی ہندوستان سے لوٹ کرپیرس ہلٹن نے بھی ہندی فلم کرنے میں دلچسپ ظاہر کی ہے۔ وہ ہندی فلم انڈسٹری کی فلموں سے  متاثر بھی ہیں، ایسا انھوں نے خود کہا ہے۔ انھوں نے تو یہاں تک کہا کہ انہیں ہندوستان آنے پرتین فلمیں آفر کی گئیں لیکن اسکرپٹ پسند نہ آنے کے سبب انھوں نے انکار کر دیا۔ پیرس کہتی ہیں کہ اگر فلم کی اسٹوری میں دم ہوا تو وہ ضرور ہندوستانی فلمیں کرنا چاہیں گی۔ بالی ووڈ کی فلمیں انہیں پسند ہیں اور مجھے یہاں کی پوشاکیں کافی پسند ہیں۔ میں ہندوستان بہت ہی کم وقت کے لئے آئی تھی، اسی سبب میں یہاں کچھ زیادہ نہیں کر سکی، لیکن بس تین ہی دنوں میں مجھے کافی اچھے تجربے ملے ہیں جنہیں وہ اپنے ساتھ لے کر جا رہی ہیں۔ انھوں نے کہا کہ وہ انڈیا سے یہاں کی ساڑی لے کر جا رہی ہیں اور وہ اسے امریکہ میں بھی ٹرائی کریں گی اور وہ ہندوستان دوبارہ بہت ہی جلد آئیں گی۔ ویسے چھوٹی چھوٹی بات پر غصہ کرنے والی ہلٹن کے مداحوں کے لئے یہ خوشی کی بات ہے کہ ہندوستان آنے پر یہاں کسی بھی سبب انہیں غصہ نہیں آیا۔کیونکہ کچھ دنوں پہلے ہی ویب سائٹ ’’ڈیلی میل ڈاٹ کام ڈاٹ یوکے‘‘ کے مطابق ہلٹن نے خود ہی کہا تھا کہ لوگوں کا ماننا ہے کہ میں کافی غصہ کرتی ہوں لیکن حقیقت یہ ہے کہ میں کافی سنجیدہ اور شرمیلے مزاج کی لڑکی ہوں۔ ہلٹن نے کہا کہ وہ لڑکوں سے زیادہ بات چیت نہیں کرتیں، جبکہ لوگ کچھ اور ہی سوچتے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ فی الحال ان کا کوئی بوائے فرینڈ نہیں ہے۔ ہلٹن نے کہا کہ مجھے لگتا ہے کہ تنہا رہنا ان کے لئے اچھا ہے لیکن ایک نہ ایک دن ہمسفر ضرور تلاش کر لیں گی۔g
اکشے ، جان پھر ساتھ ساتھ
گرم مسالہ فلم کے چھ سال بعد دوبارہ فلم ’’دیسی بوائز‘‘ میں ایک ساتھ اداکار اکشے کمار اور جان ابراہم نظر آ رہے ہیں۔پہلے یہ مانا جا رہا تھا کہ دیسی بوائز اسی جوڑی کی پہلی فلم ’’گرم مسالہ‘‘ کا سیکول ہے جو واضح ہو چکا ہے کہ ’’دیسی بوائز‘‘ فلم گرم مسالہ سے بالکل الگ فلم ہے۔ اس فلم کے کردار گرم مسالہ کے کرداروں سے پوری طرح الگ ہیں۔ اس فلم میں ایک پیغام ہے کہ ہم جہاں بھی رہیں ہمیں اپنے والدین کو نہیں چھوڑنا چاہئے، اور کسی کو بھی اپنے بڑوں کو نہیں بھولنا چاہئے۔اکشے اور جان اس سے پہلے 2005میں فلم ’’گرم مسالہ‘‘ میں ساتھ ساتھ نظرآئے تھے۔اپنی اس نئی فلم کی تشہیر کے لئے دونوں اداکار بار ٹینڈر بنے تھے اور مہمانوں کے لئے ڈرنک بنا رہے تھے۔ اس فلم کے ساتھ ہدایت کار ڈیوڈ دھون کے بیٹے روہت دھون پہلی بار ہدایت کاری کے شعبہ میں اترے ہیں۔روہت نے کہا کہ یہ ایک ڈرامہ کامیڈی فلم ہے۔ اس فلم میں بالکل الگ طرح کی مزاحیہ نگاری ہے۔اکشے اور جان کے ساتھ اس فلم میں دیپیکا پادون اور چترانگدا سنگھ اہم کردار وں میں نظر آئیں گی۔ اکشے کمار جنھوں نے اس فلم میں دو ہیرومیں سے ایک ہیرو کا کردار، جس کا نام روکو ہے، ادا کیا ہے۔آئندہ 25نومبر کو ریلیز ہونے والی دیسی بوائز میں ان دونوں کے علاوہ دیپیکا پادوکون اور چترانگدا سنگھ نے بھی اداکاری کی ہے۔ روہت دھون معروف مصنف ، ہدایت کار، ایڈیٹر دیوڈ دھون کے بیٹے ہیں ، جنھوں نے اپنے والد سے ہدایت کاری کے گر سیکھے ہیں۔g

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *