کیا ہے روینہ کی الجھن؟

روینہ ٹنڈن ان دنوں کسی نہ کسی شکل میں اندر باہر کے کھیل میں پھنسی ہوئی ہیں۔ حال ہی میںانھوں نے کچھ تنازعات کے سبب ’کامیڈی کا مہا مقابلہ‘ کے کچھ حصوں سے خود کو باہر کر لیا۔ پھر منتیں کرنے کے بعد وہ واپس آ گئیں۔ اب خبر آرہی ہے کہ انھوں نے رام گوپال ورما کی فلم ’ڈپارٹمنٹ‘ میں کام کرنے سے منع کر دیا ہے۔ حال ہی میں خبر آئی تھی کہ روینہ ٹنڈن بالی ووڈ میں واپسی کر رہی ہیں اور رام گوپال ورما کی فلم ڈپارٹمنٹ میں سنجے دت کی بیوی کا کردار ادا کرنے والی ہیں، لیکن اب خبریں آ رہی ہیں کہ وہ اس فلم میں کام نہیں کریں گی۔ بقول رام گوپال ورما انھوں نے اپنی فلم ڈپارٹمنٹ میں سنجے دت کی بیوی کا کردار ادا کرنے کے لیے روینہ ٹنڈن پر صرف غور کیا تھا، لیکن اب وہ اس بات سے کترا رہے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ اس بات میں ذرا بھی سچائی نہیں ہے۔’سپرہٹ شو کامیڈی کا مہا مقابلہ‘ کو روینہ ٹنڈن نے الوداع کہہ دیا ہے۔ انھوںنے یہ شو اس لیے چھوڑنے کا فیصلہ کیا، کیوں کہ انہیں اپنی اسکرپٹ میں پرینکا چوپڑا اور کیٹرینہ کیف کا مذاق اڑانے کے لیے کہا گیا تھا۔ واقعی، دوست ہو تو ایسی! چونکہ روینہ کی دونوں ہی اداکارائوں سے اچھی بنتی ہے اور روینہ خود بھی اداکارہ رہ چکی ہیں۔ اس لیے وہ اسکرپٹ سے ناخوش تھیں اور انھوں نے واضح طور پر اس کی مخالفت کر دی کہ وہ اس طرح کی اسکرپٹ پر کامیڈی نہیں کریں گی۔ انھوں نے اسکرپٹ میں تبدیلی کرنے کو کہا، جس کے لیے ٹیم تیار نہیں تھی اور روینہ، شاہد کپور اور پرینکا کے رشتوں کا مذاق نہیں بنانا چاہتی تھیں۔ وہ یہ بھی جانتی تھیں کہ ان کے ذریعہ دکھایا گیا شو ایک بڑے تنازعہ کا سبب بن سکتا ہے۔ اب دیکھنا یہ ہے کہ اس شو میں ان کی واپسی ہوتی ہے یا نہیں۔ حالانکہ خبر یہ بھی ہے کہ ان کی ٹیم کی کارکردگی اچھی نہیں ہو رہی تھی، اس لیے بھی انھوں نے اس شو سے خود کو الگ کرنا بہتر سمجھا۔
کوئی تو مل جائے
جب کسی کو ایسا کچھ مل جائے ، جس کا اس نے خواب بھی نہ دیکھا ہو تو خوشی دوگنی ہو جاتی ہے۔ ایسا ہی کچھ ان دنوں رنویر سنگھ کے ساتھ ہو رہا ہے۔رنویر نے کبھی خواب میں بھی نہیں سوچا تھا کہ کرینہ کپور اور پرینکا چوپڑا سے ملنا ان کے لیے اتنا آسان ہوگا۔ وہ ہر دوسرے تیسرے دن اپنی ان دو محبوب اداکارائوں سے مل پائیں گے۔اب  جب کہ’’ بینڈ باجا بارات‘‘ کی کامیابی کے بعد رنویر کے لیے یہ سب ممکن ہو گیا ہے تو ان کے پیر زمین پر نہیں پڑ رہے ہیں۔ساتھ ہی وہ کچھ ایسے کام کرنے میں مصروف ہیں، جس کی وجہ سے ان کی دونوں محبوب اداکارائیں ان سے ناراض ہو گئی ہیں۔ رنویر کی دوست انوشکا شرما یہ نہیں سمجھ پا رہی ہیں کہ آخر رنویر کوکیا ہو گیا ہے، وہ کیوں ایسی الٹی سیدھی باتیں کر رہے ہیں؟ انوشکا ان کی پسند پر حیرت زدہ ہیں۔ ہوا کچھ یوں کہ کرینہ کپور کی خوبصورتی کے مرید رنویر کو جب ایک پارٹی میں کرینہ سے ملنے کا موقع ملا تو وہ خوشی سے جھومنے لگے۔وہ سیف علی خان کی موجودگی میں کرینہ کی مرضی کے بغیر ان سے نزدیکیاں بڑھانے کی کوشش کرنے لگے۔ کرینہ کو رنویر کی یہ حرکت اچھی نہیں لگی۔ وہ جلد ہی پارٹی سے باہر نکل گئیں۔
ادھر دوسری پارٹی میں جب رنویر کی نظریں پرینکا چوپڑا سے ملیں تو ایک بار پھر ان سے نہیں رہا گیا۔ وہ پرینکا کی طرف دیکھ کر انہیں فلائنگ کس دینے لگے۔ اس پر پرینکا کو غصہ آ گیا اور انھوں نے رنویر کو مستقبل میں ایسا نہ کرنے کی بات کہی۔جب انوشکا کے کانوں میں یہ بات پہنچی تو وہ بھی ان سے ناراض ہو گئیں۔انھوں نے رنویر کو سمجھایا کہ اگر ہندی فلموں میں انہیں اپنی شناخت برقرار رکھنی ہے تو مداحوں جیسی حرکتیں چھوڑنی ہوں گی اور اپنی اہمیت ثابت کرنی ہوگی۔انوشکا کی باتوں پر عمل کرنا ہی رنویر کے لیے فائدہ مند ہوگا، ورنہ اداکارائوں کو دیکھ کر پھسل جانے والے اداکار کو فلم ساز، ہدایت کار سنجیدگی سے نہیں لیتے۔
صحیٰ بنیں لیکچرر
صحیٰ  علی خان کے لیے اپنی ماں اور مشہور اداکارہ شرمیلا ٹیگور کے ساتھ اداکاری کرنا آسان نہیں تھا۔ وہ ’’لائف گوز آن‘‘ کی شوٹنگ میں اپنی ماں کی موجودگی سے گھبرا گئی تھیں۔ یہ صحیٰ اور شرمیلا کی اپنی نوعیت کی پہلی فلم ہے، جس میں وہ ایک ساتھ نظر آئیں گی۔ صحیٰ نے کہا، میں اپنے مکالمے تونہیں بھولی لیکن تھوڑی گھبرائی ہوئی تھی کیوں کہ میری ماں کو خوبصورتی کا بخوبی احساس ہے۔ جب وہ خوش ہوتی ہیں تو کمال نظر آتی ہیں، لیکن جب مایوس ہوتی ہیں تو حالات بہت خراب ہو جاتے ہیں۔ویسے وہ شوٹنگ کے دوران بہت اچھی اور مستحکم رہیں اور ساتھ ہی انھوں نے مجھے صلاح بھی دی کہ میں ہدایت کار سنگیتا دتہ کی ہدایات پر توجہ دوں۔فلم ’’لائف گوز آن‘‘ لندن کے پس منظر پر بنی نسلوں کی جدوجہد کو نمایاں کرتی ایک جذباتی فلم ہے۔فلم سے ان کی توقعات کے بارے میں پوچھے جانے پر صحیٰ نے جواب دیا کہ میری اس سے کوئی امید وابستہ نہیں ہے اور نہ ہی میںنے فلموں سے کچھ امید کرنا سیکھا ہے۔ہاں، اس فلم کے لیے کام کرنا بہت اچھا تھا۔ مجھے امی کے ساتھ کرنے کا موقع ملا ۔ یہ ایک جذباتی فلم ہے، جس میں ایک ماں اور کنبہ کے دکھ درد کو حساسیت کے ساتھ عکس بند کیا گیا ہے۔بینک ملازم سے اداکارہ بنیں صحیٰ نے 2004میں اننت مہادیون کی فلم ’دل مانگے مور‘ سے اداکاری شروع کی تھی اور پچھلے سال ہی وہ راکیش اوم پرکاش مہرا کی فلم ’رنگ دے بسنتی‘ میں نظر آئی تھیں۔
صحیٰ کہتی ہیں کہ وہ اپنی آنے والی فلموں میں مختلف کرداروں میں نظر آئیں گی۔ اداکار شریس تلپڑے کے ساتھ وہ ’کیمسٹری‘ میں نظر آنے والی ہیں۔ صحیٰ کو ہاورڈ یونیورسٹی میں ہندوستانی سنیما پر لیکچر دینے کے لیے خصوصی طور سے مدعو کیا گیا ہے۔وہاں ایک’’ انٹریکشن سیشن – سنیما: تب اور اب‘‘ میں صحیٰ ہندی سنیما پر لیکچر دیں گی۔ اس سیشن میں ان کی ماں شرمیلا ٹیگور بھی ان کے ساتھ ہوں گی۔ اس میں صحیٰ اپنی فلم ’’کھو یا کھویا چاند، رنگ دے بسنتی اور انتر مہل‘‘ میں اپنے ذریعہ کیے گئے کام پر تفصیلی روشنی ڈالیں گی۔اس کے ساتھ ہی وہ ہندی سنیما کی مشہور و معروف اداکارائوں جیسے مدھوبالا، مینا کماری، وحیدہ رحمن اور اپنی والدہ شرمیلا ٹیگور کے کاموں پر روشنی ڈالیں گی۔ صحیٰ کا کہنا ہے کہ اس دورہ کو لے کر میں بہت خوش اور پرجوش ہوں لیکن تھوڑی گھبرائی ہوئی بھی۔میں نے اس سے پہلے کبھی سنیما پر لیکچر نہیں دیا۔ یہ میرے لیے کافی اچھا تجربہ ہوگا۔صحیٰ نے کہا ، اس کے لیے میں نے کافی ریسرچ کیا ہے۔ کئی پرانے اداکاروں اور فلم سازوں، ہدایت کاروں سے بات چیت بھی کی ہے۔ صحیٰ نے بتایا کہ سیشن کے دوران کمرشیل اور آرٹ، دونوں ہی طرح کی فلموں پر بحث کی جائے گی۔
کنگنا کی ترقی
نئی فلموں کا اعلان اکثر فلم ساز، ہدایت کار کرتے ہیں، لیکن فلم ’’تنو ویڈس منو‘‘ کے سیکول کا اعلان گزشتہ دنوں کنگنا رناوت نے کیا۔اپنی اس فلم کی کامیابی سے کنگنا اتنی خوش اور پرجوش ہوئیں کہ انھوں نے فلم ساز، ہدایت کار کی ہری جھنڈی ملنے سے پہلے ہی سیکول کا اعلان کر ڈالا۔انھوں نے اس سلسلہ میں میڈیا سے باتیں کرنا شروع کر دیں۔اتنا ہی نہیں، کنگنا نے خود ہی ’’تنو ویڈس منو‘‘ کے سیکول کی اسکرپٹ کا خاکہ بھی طے کر دیا۔کنگنا نے کہا کہ اس سیکول میں تنو اور منو کی ازدواجی زندگی کو نمایاں کیا جائے گا۔ چلبلی تنو اور سیدھے سادے منو شرما کی زندگی، خاص کر کمرے کے اندر کی زندگی کو سیکول کا اہم موضوع بنایا جائے گا۔
دلچسپ بات یہ ہے کہ ’تنو ویڈس منو‘ کے فلم ساز کے پاس فی الحال سیکول بنانے جیسا کوئی منصوبہ نہیں ہے۔ انھوں نے ابھی تک سوچا ہی نہیں ہے کہ اس کا سیکول بنے گا بھی یا نہیں۔ کنگنا کی جلد بازی فلم ساز اور ہدایت کار کو سمجھ میں نہیں آ رہی ہے کہ ان سے صلاح و مشورہ کییبغیر انھوں نے کیسے اس کا اعلان میڈیا میں کر دیا۔کنگنا سے قربت رکھنے والوں کی مانیں تو ’’تنو ویڈس منو‘‘کی تنوجا ترویدی کے کردار سے انہیں ایک الگ شناخت ملی ہے۔تنو کے کردار نے ان کی مقبولیت کا دائرہ وسیع کیا ہے۔عام طور پر آج کل کامیاب فلموں کے سیکول کا اعلان ضرور ہوتا ہے۔ کنگنا نے سوچاکہ کہیں فلم ساز ان کی جگہ کسی اور اداکارہ کو لے کر سیکول بنانے کی بات نہ سوچنے لگے، اسی لیے انھوں نے خود ہی تنو ویڈس منو کے سیکول کی بات کرنی شروع کر دی۔ فی الحال کنگنا کی جلد بازی ان کے مذاق کا سبب بن گئی ہے۔ اب وہ خاموشی سے اپنی نئی فلموں کی شوٹنگ میں مصروف ہیں۔
امید ہے کہ کنگنا اپنی اس عجلت کے نتیجہ سے سبق لیں گی اور مستقبل میں عجلت بھرا کوئی اعلان نہیں کریں گی۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *