لندن نامہ

حیدر طبا طبائی، لندن، یو کے
میں سوچتا ہوں کہ مذہب کی موجودگی میں لوگ اتنے خراب ہیں، تو عدم موجودگی میں کتنے خراب ہوں گے۔ اس ہفتے مشرقی لندن میں ایک پاکستان نژاد شخص اکرام الحق کو مسجد جاتے ہوئے گوروںکے ایک گینگ بنامHippy Sleeping Gangنے قتل کر دیا تھا ۔ گرفتار شدہ 16سالہ لیون ایل کو فوراً15سال کی قید سنا دی گئی۔ چاقو سے اکرام پر وارکرتے ہوئے سیکرٹ کیمرے نے اس کی تصاویر لے لی تھیں انجام کاروہ سلاخوں کے پیچھے پہنچا دیا گیا۔
واچ ڈاک نے بتایا ہے کہ ویزا پابندیوں سے برطانوی سرحدوں کا تحفظ نہیں ہو پا رہا ہے ۔کئی بدترین معاملات میں ایسے لوگوں کو جن کے ویزا کی درخواست ردکئے جانے کے قابل تھی ویزا دے دیا گیا۔ اسکاٹ لینڈ یارڈ کے چیف انسپکٹر کے مطابق اسلام آباد اور کابل میں دہشت گردوں کو ویزے مل جاتے ہیں۔ واچ ڈاک رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ بارڈر ایجنسی اور برطانوی سفارت خانے ملک کے تحفظ کے کلیدی اسٹرٹجیک مقاصد اور تیزی سے درست فیصلے کرنے میں ناکام ہیں۔پاکستان اور افغانستان سے غلط لوگوں کو ویزا ملنے کی تصدیق کے بعد برطانوی وزارت خارجہ نے ویزوں کی مختلف کیٹگری کی ویزا فیس میں اضافہ کر دیا ہے اور یہ بھی کہ ویزا فیس کسی بھی کیٹگری میں درخواست مسترد ہونے کی صورت میں واپس نہیں کی جائے گی۔ امیگریشن فیس میں سب سے زیادہ اضافہ کیا گیا ہے جو ہندوستانی کرنسی میں تقریباً 80لاکھ تھی، اب یہ فیس دو لاکھ چھبیس ہزار کر دی گئی ہے۔ دو سال کے لئے ویزا کی درخواست کی فیس اب 31.50روپے کر دی گئی ہے اور پانچ سال کی ویزا درخواست پر 7.56روپے اسٹوڈیٹس ویزا اب 900روپے، چھ ماہ کے لئے وزٹ ویزا9ہزار 180روپے ہوگی۔ لیکن اصل وجہ ہے دہشت گردوں کی برطانیہ میں داخلے پر پابندی ۔ وہ آتے ہیں اور نوجوانوں کو بم بنانا و دیگر حربے سکھا کر خاموشی سے واپس چلے جاتے ہیں۔
لندن میں ٹارگیٹ حملہ میںخنجر زنی سے ایک شخص ہلاک سات افراد گرفتار ہوئے اور مانچسٹر میں گزشتہ رات ساڑھے آٹھ بجے جبکہ دکانیں کھلی ہوئی تھیں۔ ایک 32سالہ شخص کے سینہ پر وار کر کے ہلاک کر دیا گیا۔ مرنے والے کون لوگ تھے؟ خوف فساد خلق سے پولس چھپائے رہتی ہے جب مقدمہ چلتا ہے تو معلوم ہوتا ہے کہ ایشیائی تھے، افریقی تھے یا گورے تھے ۔
حلقۂ انتخاب کے لوگوں کو جاہل کہنے کے بعد ٹوری ایم پی کو پشیمانی  میںاجڈ اور جاہل کہنے والے ایم پی نے کہا ہے کہ کسی پاکستانی کو ستانے یا دل توڑنے پر یہ الفاظ نہیں کہے گئے تھے۔ انھوں نے کہا کہ میرے حلقۂ انتخاب میں ایک گائوں میں ایک بچے کو ٹریکٹر نے ٹکر مار دی تھی۔ لوگ اس بچے کو اسپتال لے جانے کے بجائے کسی اور شہر سے ایک مولوی کو لا کر جھاڑ پھونک کرواتے رہے، لڑکے کو دو ہفتے بند اندھیرے کمرے میں قید رکھا گیا۔ حتیٰ کہ وہ مر گیا۔ ایک سرکاری رپورٹ کے مطابق برطانیہ میں ہر چوتھا بچہ پاکستانی یا ہندوستانی گھروں میں پیدا ہوتا ہے۔ صرف دس برسوں میں تارکین وطن کی مائوں کے یہاں پیدائش کی شرح13.6سے بڑھ کر 24.7تک پہنچ چکی ہے۔ اس وقت 25فیصد بچے پاکستانی ہندوستانی اور بنگلہ دیشی گھروں میں جنم لے رہے ہیں۔ آج لندن میں جتنے بھی بچے ہوں ان میںسے 50فیصد تارکین وطن کے ہیں۔
ایئرپورٹ میں جھاڑو دینے والے ایک پاکستانی عبد الحسین اور ایک ایشین کرسچین جس کا تعلق ماریشش سے ہے۔ اس وقت گرفتار کر لیا گیا جب وہ لوٹن ایئر پورٹ پر مسافروں کا سامان ہوائی جہاز میں لے جانے والے کمروں میں جھاڑو کے بہانے جا کر سوٹ کیس کھول رہے تھے۔
لوٹن کے علاقہ میں گزشتہ ماہ برطانیہ میں پاکستان نژاد وزیر اور ٹوری پارٹی کی چیئر پرسن سعیدہ وارثی پر انڈے پھینکنے والے جوان ایلکس کو چھ ہفتے کی جیل کی سزا ہوئی۔سعید ہ وارثی کے پروگرام میں سخت پہرے کے باوجود کچھ نہ کچھ گڑبڑ ہو جاتی ہے۔
فٹبال کے ایک پاکستان نژاد ریفری عثمان جاوید کو نسلی مغلظات سنانے پر ریفری نے میچ روک کر پولس کو بلا لیا ۔گالیاں ایبرڈین کی ٹیم کے منیجر دے رہے تھے۔ جن پر بعد میں تین سو روپے جرمانہ ہوا۔ ایسٹ سیکس کے ایک پادری کو چار سال کے درمیان360فرضی شادیاں کرانے کے الزام میں سزا ہو سکتی ہے۔ برطانیہ میں رہائش کی اجازت کے لئے تارکین کو مشرقی یوروپی یا انگلش خواتین سے شادی کی ترغیب دی جاتی ہے ۔ جبکہ کچھ شادیاں محض فرضی ہوتی ہیں۔ اب پادری الیکس برائون پر مقدمہ چل رہا ہے اور امکان ہے کہ ان کو جیل ہو جائے گی۔برطانیہ بھر میں ہائر سیکنڈری کلاس کے بچے چاقو یا پستول لے کر اسکول جاتے ہیں۔ ایک سال میں ٹیچرز اور کلاس میٹس پر حملوں کے الزام میں80ہزار لڑکے گرفتار ہو چکے ہیں۔ لڑکیاں مغلظات بکتی  ہیں۔ اسکول کے کھیل کے گرائونڈ میں جنسیات کی گھنائونی حرکات کرتے پکڑی گئی ہیں۔
اس ہفتے برٹش پیٹرولیم کمپنی کا نیا سربراہ مقرر کر دیا گیا جو اکتوبر سے چارج لے گا۔ خلیج میکسیکو میں امریکی تیل کے اخراج کے باعث کمپنی کی بین الاقوامی ساکھ بحال کرنے کے لئے سربراہ تبدیل کیا گیا ہے۔
برطانیہ کے ایمپلائمنٹ سے متعلق کمیشن نے ایک پریس نوٹ میں کہا ہے کہ بین الاقوامی اقتصادی رینکنگ کے لئے ورکرز کو اپنی مہارت میں اضافہ کرنا ہوگا۔ غیر ملکی کارندوں کا انتخاب سختی سے کیا جائے گا۔ ان کا ہندوستان یا دوسرے ایشیائی ممالک سے لانے سے قبل ہی امتحان لیا جانا چاہئے۔
برٹش ہوم منسٹر تھریسامے نے کہا ہے کہ مذہب یا رنگ کے نام پر سماج دشمن عناصر کے خلاف کمیونٹی اٹھ کھڑی ہو۔مساجد یا مندروں یا گرودواروں میں گوروںیا برطانیہ یا یوروپ کے خلاف پروپیگنڈہ بند ہونا چاہئے۔ لوگ جمعہ کی نماز میں بند الفاظ میں برطانیہ کی برائی کرتے ہیں اور لوگوں کو جبل الطارق کے طرز پر لڑائی کے لئے اکساتے ہیں۔
برطانیہ اس پروجیکٹ پر غور کر رہا ہے کہ کیوں نہ شاعروں اور ادیبوں کے ذریعہ دہشت گردی کو کم کرنے کے لئے عملی طور پر قدم اٹھا یا جائے ۔مقصد یہ ہے کہ اگر ہم اپنے جسم کے ظاہری زخم پر مرہم رکھتے ہیں تو روحانی زخم کا علاج کیوں نہیں ہو سکتا ہے۔

Latest posts by حیدر طباطبائی (see all)

Share Article

حیدر طباطبائی

haidertabatabai

One thought on “لندن نامہ

  • August 21, 2010 at 12:08 pm
    Permalink

    آرٹیکل اچھا ہے آپ نے صحیح تصویر کھینچی ہے-

    Reply

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *