ہوٹل مینجمنٹ میں تابناک کریئر

فرمان چودھری
اس بات سے کوئی انکار نہیں کرسکتا کہ آج کے اس مقابلہ جاتی دور میں ہماری نئی نسل خصوصاً مسلم نوجوانوں کی ایک کثیر تعداد تعلیم یافتہ ہونے کے باوجود بے روزگار ہے۔یہ زمینی حقیقت ہے کہ جہاں ایک طرف نوجوانوں کی ایک معتد بہ تعداد اعلیٰ تعلیم کی ڈگریاںلے کر روزگار کی تلاش میں سرگرداں ہیں تودوسری جانب نوجوانوں کا ایک بڑا طبقہ ایسا بھی ہے، جو مالی وسائل کی کمی یا خاندان کی پرورش کا بار گراں اپنے کندھوں پر آجانے کی وجہ سے ترک تعلیم پر مجبور ہوگیا اور انہیں کسب معاش کے لئے نکلنا پڑا۔ہم نے ایسے نوجوانوں کی رہنمائی کے لئے ’’نوجوانوں کی دنیا‘‘ کے نام سے ایک کالم شروع کیا ہے،تاکہ وہ تھوڑی اور محنت کرکے اپنے مستقبل کو روشن و تابناک بناسکیں۔ہم اپنے ہرشمارہ میں قلیل مدتی پروفیشنل کورسز کے بارے میں بات کررہے ہیں اور جاب کے متلاشی اور کریئرسازی کے لئے سرگرداںنوجوانوں کوکورس، اس کی افادیت، مطلوبہ تعلیمی لیاقت اور متعلقہ تعلیمی وتربیتی اداروں کے بارے میں معلومات فراہم کریںگے۔آج ہم جس کورس کے تعلق سے بات کرنے جارہے ہیں،اس کا نام ہے ’’ہوٹل مینجمنٹ‘‘
کورس کا نام:ہوٹل مینجمنٹ
کورس کی اہمیت و افادیت:
ہرایک تجارت میں نشیب و فرازآتے رہتے ہیں۔لیکن ہوٹل تجارت ایک ایسی تجارت ہے جو گزشتہ کئی دہائیوں سے ترقی کی جانب گامزن ہے۔پوری دنیا میں تیزی سے پنپتی پانچ ستارا ہوٹل تہذیب نے اس شعبہ میں کریئر کے لامحدود مواقع فراہم کئے ہیں۔ہوٹلوں کو چلانے کے لئے باقاعدہ تربیت یافتہ نوجوان لڑکے لڑکیوں کی ایک بڑی مانگ اس شعبہ میں ہے۔اس لئے ہوٹل مینجمنٹ میں باقاعدہ تربیت حاصل کر کے آپ بھی اپنے مستقبل کو تابناک بنا سکتے ہیں۔
آج کی مادی دنیا میں خوشحال لوگ بالواسطہ یا بلاواسطہ کہیں نہ کہیں ہوٹلوں سے جڑے ہوئے ہیں۔ ایک اچھے منافع اور کاروبارو تجارت کے سبب ہوٹلوں کی تعداد میں دن بہ دن اضافہ ہو رہا ہے۔ہوٹل دورحاضر کی تہذیب کا ایک حصہ بن گیا ہے۔ کسی طرح کی پارٹی کا انعقاد ہو یا کمپنی سے متعلق میٹنگ ، صارفین سے متعلق سیمنار ہو یا نئے پروڈکٹ کی لانچنگ یا پھر پریس کانفرنس کا موقع کیوں نہ ہو۔ ان مواقع پر ہوٹل کی اہمیت سے انکار نہیں کیا جا سکتا۔ تجارت کے سبب سیاحت کے شعبہ میں بھی اضافہ ہوا ہے۔ سیاحت کے فروغ نے ہوٹل کے شعبہ میں انقلاب برپا کر دیا ہے۔
تعلیم یافتہ او رباصلاحیت نوجوانوں کی دلچسپی تیزی کے ساتھ ہوٹل مینجمنٹ سے متعلق کورسیز کے تئیں بڑھی ہے۔انگریزی اور دیگر مقامی زبان جاننے والے نوجوان لڑکے لڑکیاں، جواپنی شخصیت میں چار چاند لگانا چاہتے ہیں، کے لئے یہ میدان امکانات سے روشن ہے۔ تبادلۂ خیالات کی صلاحیت ، دوسروں کو متاثر کرنے کی خوبی اور استقبال کا جذبہ آپ کو اس میدان میں کبھی پیچھے مڑ کر دیکھنے کا موقع نہیں دے گا۔کیونکہ ہوٹل تجارت پوری طرح مہمان نوازی اور خدمت کے جذبے سے سرشار شعبہ ہے۔
محنتی، خوش مزاج، ملنسار، صحت مند، خوبصورت اور باذوق نوجوان لڑکے لڑکیوں کے لئے ہوٹل مینجمنٹ ایک بہترین کریئر ہے۔ ون اسٹار سے لے کر فائیو اسٹار ہوٹل اور ٹورسٹ ہوٹلوں میں مندرجہ بالا نوجوان تربیت کے بعد اپنا مستقبل سنوار سکتے ہیں۔ یہی نہیں تربیت یافتہ نوجوانوں کے لئے فلوئنگ ہوٹل، شینگ کمپنی ، ایئر پورٹ ہوٹل وغیرہ میں چیف رسپشن آفیسر ،فوڈ پروڈکشن، ہائوس کیپنگ، بیوٹریشین، اکائونٹنٹ ، گائڈ ،ویٹر وغیرہ کے عہدوں پر پہنچنے کے مواقع انتظار کرتے رہتے ہیں۔ اس شعبہ میں آپ کے لئے تعلقات استوار کرنے کے بھی بہتر مواقع ہیں۔اہم لوگوں سے رابطہ کا دائرہ وسیع ہوتا ہے۔سب سے اہم بات یہ ہے کہ مختلف میدانوں کے کامیاب لوگوں سے ملنے کے بعد کافی کچھ سیکھا اور سمجھا جا سکتا ہے۔
ہوٹل تجارت کی بات وہاں بننے والے لذیذ کھانوں کے ذکر کے بغیر ادھوری ہے۔کنفیکشنری اور کھانے کا شعبہ ہوٹل کا ایک اہم حصہ ہے۔اس شعبہ میں معمولی اہلیت اور بغیر تجربے والوں کو کوئی نہیں پوچھتا۔بڑے ہوٹلوں میں فوڈ کرافٹ انسٹی ٹیوٹ کے تربیت یافتہ لوگوں کو تعینات کیا جاتا ہے۔ملک میں بہت سے ایسے ادارے ہیں جو اس سے متعلق تربیت کورس چلا رہے ہیں۔اس تجارت میں شیف دی پارٹی عہدوں کے لئے بھی قابل، تجربہ کار اور ادھیڑ لوگوں کا انتخاب کیا جاتا ہے۔جن لوگوں کے پاس ہوٹل مینجمنٹ  میں تین سالہ ڈپلومہ اور کم سے کم پانچ سال کا تجربہ ہوتا ہے، انہیں ان عہدوں کے لئے ترجیح دی جاتی ہے۔
حکومت ہند کی وزارت برائے سیاحت کی دیکھ ریکھ میں نیشنل کائونسل آف ہوٹل مینجمنٹ اینڈ کیٹرنگ ٹکنالوجی ملک بھر میں پھیلے اپنے 20اداروں کی مدد سے ہوٹل مینجمنٹ میں تین سالہ ڈپلومہ کورس چلا رہا ہے۔ اس میں ڈپلومہ حاصل کرنے کے لئے ایک کمبائنڈ انٹرینس ٹیسٹ پاس کرنا ضروری ہوتا ہے۔ ہر سال فروری کے مہینے میں یہ امتحان منعقد کیا جاتا ہے۔22سال سے کم عمر کے دسویں بارہویں سائنس مضامین کے ساتھ پاس نوجوان لڑکے لڑکیاں اس امتحان میں شرکت کی اہلیت رکھتے ہیں۔ڈھائی گھنٹے کی مدت کے اس امتحان میں معروضی سوالوں کے جواب دینے ہوتے ہیں۔تحریری امتحان پاس کرنے والے کامیاب امیدواروں کو انٹر ویو کے لئے بلایا جاتا ہے۔ بعد میں میرٹ کی بنیاد پر ان کا انتخاب کیا جاتا ہے۔ منتخب امیدواروں کو تین سال کی مدت میں کل 36مضامین پڑھائے جاتے ہیں۔ عملی تربیت کے لئے الگ سے کلاسیں لی جاتی ہیں۔ ہوٹل مینجمنٹ کے شعبہ میں ڈپلومہ حاصل کرنے کے بعد ادارہ حاملین اسناد کو مختلف ہوٹلوں میں عملی تربیت کے لئے بھیجتا ہے۔جہاں ٹریننگ کے دوران انہیں ڈیڑھ ہزار روپے سے تین ہزار روپے تک وظیفہ ملتا ہے۔
کورسیز:
ہوٹل مینجمنٹ کے اداروں میں مختلف کورس دستیاب ہوتے ہیں۔جو کہ مندرجہ ذیل ہیں۔
ڈپلومہ ان ہوٹل مینجمنٹ اینڈ کیٹرنگ ٹکنالوجی (تین سال)۔
پوسٹ گریجویٹ ڈپلوما ان اکوموڈیشن آپریشن مینجمنٹ (ہائوس کیپنگ ، فرنٹ آفس)ڈیڑھ سال۔
پوسٹ گریجویٹ ڈپلومہ کورس ان ڈائٹیٹکس اینڈ ہاسپیٹل فوڈ سروس (ایک سال)۔
سرٹیفکیٹ کورس ان ہوٹل کیٹرنگ مینجمنٹ(21ہفتے، سال میں 2بیچ)۔
کرافٹ مین شپ کورس ان فوڈ اینڈ بیوریج سروس(6ماہ، سال میں دو بیچ)۔
یہی نہیں خواتین کے لئے کوکری، بیکری اور کنفیکشنری کے 13ہفتوں کے (ہفتے میں2بار کلاس) کورس بھی کرائے جاتے ہیں۔ہوٹل مینجمنٹ میں تین سالہ ڈپلومہ کورس پوسٹ گریجویٹ ڈپلومہ کورس بھی کرائے جاتے ہیں،جن کی فیس کورس کے مطابق ہوتی ہے۔
اس کے علاوہ گریجویٹ اسکول آف ہوٹل ایڈمنسٹریشن، دہلی ویو ہوٹل(ویلکم گروپ) منی پال بھی قومی سطح پر تحریری اور زبانی امتحان منعقد کر کے امیدواروں کا انتخاب کرتا ہے۔ یہ ادارہ بھی ہوٹل مینجمنٹ کے سبھی نقطوں کی باقاعدہ جانکاری  دستیاب کراتا ہے۔ اس ادارہ نے ایک پلیسمنٹ سیل بھی کھولی ہوئی ہے۔ جہاں سے ملک اور بیرون ملک نوکری مل سکتی ہے۔ یہ ادارہ اعلیٰ تربیت کے لئے اپنے طلبا کو امریکہ سمیت دیگر ممالک میں بھیجتا ہے۔
ایک دیگر ادارہ اوبرائے اسکول آف ہوٹل مینجمنٹ بھی ہوٹل مینجمنٹ کے معاملہ میں باوقار ادارہ مانا جاتا ہے۔ یہ ادارہ انٹر نیشنل ہوٹل ایسو سی ایشن ان پیرس سے منظور شدہ ہے۔ زیادہ تر ہندوستانی ہوٹلوں کے بڑے عہدیداراس ادارہ کے گریجویٹ ہیں۔ یہاں سے تین سالہ ڈپلومہ کرنے کے بعد تربیت یافتہ نوجوان معاون منیجر کے طور پر نوکری حاصل کر سکتے ہیں۔ یہاں سے تین سالہ ڈپلومہ کے بعد پی جی ڈپلومہ بھی کیا جا سکتا ہے۔
ہوٹل انڈسٹری میں لڑکیوں کے لئے بھی کافی مواقع ہیں۔ ہوسٹیس عہدوں کے لئے عام طور پر 22سے 26سال کی عمر کی لڑکیوں کو لیا جاتا ہے۔فراٹے دارانگریزی، متعلقہ شعبہ کا تجربہ، غیر ملکی زبان کا علم اور لوگوں کو ڈیل کرنے کا سلیقہ اس کے لئے ضروری اہلیت ہے۔
مجموعی طورپر یہی کہا جا سکتا ہے کہ ہوٹل مینجمنٹ کے شعبہ میں قدم رکھ کر آج کے نوجوان اپنے روشن اور تابناک مستقبل کے خواب کو شرمندۂ تعبیر کر سکتے ہیں۔
اہم ادارے:
n    اوبرائے سینٹر، دہلی
7، شام ناتھ مارگ، نئی دہلی110054-
n    آئی ایچ ایم،ممبئی
ویر سوارکر مارگ، دادر(ڈبلیو آر)، ممبئی400028-
n    ڈبلیو جی ایس ایچ اے، منی پال
ویلی ویو، منی پال576119-
n    آئی ایچ ایم، دہلی
نیشنل کونسل فار ہوٹل مینجمنٹ اینڈ کیٹرنگ ٹکنا لوجی، پوسا، نئی دہلی
n    آئی ایچ ایم، اورنگ آباد
ڈاکٹر رفیع ذکریہ کیمپس، روزہ باغ، اورنگ آدباد431001-
n    آئی ایچ ایم بنگلور
ایس جے پولی ٹیکنک کیمپس، سیشادری روڈ، بنگلور560001-

Latest posts by فرمان چودھری (see all)

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *