آپ کے ایم ایل اے صاحب نے کتنا کام کیا

كوئی لیڈر جب آپ سے ووٹ مانگنے آتا ہے تو کیا کہتا ہے؟ وہ کہتا ہے کہ آپ اسے ووٹ دیں تاکہ وہ آنے والے پانچ سالوں تک آپ کی خدمت کرتا رہے۔ مطلب ، عوام آقا اور لیڈر خدمت گار،لیکن الیکشن جیتنے کے بعد کیا ہوتا ہے؟ کیا آپ کو یہ پتہ چلتا ہے کہ رکن اسمبلی کو اپنے حلقہ کے علاقہ جات کی ترقی کے لئے جو کروڑوں روپے حکومت کی طرف سے ملتے ہیں، وہ کہاں جاتے ہیں؟آپ کے علاقے کے فروغ میں ایم ایل اے فنڈ کا کتنا استعمال ہوا؟ کہیںوہ فنڈ ایم ایل اے کی چاپلوسی کرنے والوں کی جیب کی نذر تو نہیں ہوگیا؟ یا پھر ٹھیکیدار اور نیتاجی مل کر اس فنڈ کو ڈکار تو نہیں گئے؟ ایسے تمام سوالات آپ کے ذہن میں ضرور آتے ہوں گے، لیکن آپ یہی سارے سوالات رکن اسمبلی سے نہیں پوچھتے۔ وجہ چاہے جوبھی ہو، لیکن سوال نہیں پوچھ کر آپ ایک طرح سے بدعنوانی کو فروغ دے رہے ہیں۔ ایسے میں یہ ضروری ہے کہ آپ سوال کریں، تاکہ انتظامیہ اور آپ کے رکن اسمبلی پر دباؤ بن سکے۔ اس کا سب سے بڑا فائدہ یہ ہوگا کہ بغیر کوئی کام کئے یا نامکمل کام کرکے اب تک جو پیسہ بدعنوان لوگوں کی جیب کی زینت بن جاتا تھا، وہ پیسہ اب آپ کے علاقے کی ترقی اور فلاح وبہبود پر خرچ کیا جائے گا۔ ایسا نہیں ہے کہ محض ایک درخواست دینے سے ہی تبدیلی نظر آنے لگے گی۔ لیکن آپ کی اکیلی درخواست بھی ان بدعنوان لوگوں تک اس پیغام کو پہنچانے کے لئے کافی ہوگی کہ عوام یعنی اصلی مالک اپنے خدمت گزاروں کی لگام کسناجانتے ہیں۔اگر آپ سچ مچ تبدیلی چاہتے ہیں تو زیادہ سے زیادہ تعداد میں لوگوں کو ایسی درخواستیں دینے کے لئے آمادہ کریں۔ظاہر ہے جب لوگ زیادہ تعداد میں سوال پوچھیں گے تو اس سے بننے والا دباؤ بھی اتنا ہی زیادہ ہوگا۔چوتھی دنیا آپ کی اس تحریک میں ہر قدم پر آپ کے ساتھ ہے۔ کسی بھی مسئلہ کے حل یا مشورہ کے لئے آپ ہم سے رابطہ قائم کرسکتے ہیں۔اس شمارے میں بھی ہم ایم ایل اے فنڈ سے متعلق ایک آرٹی آئی درخواست شائع کررہے ہیں۔ آپ اس کا استعمال کرسکتے ہیں، ساتھ ہی دیگر لوگوں کو بھی اس کے استعمال کے لئے آمادہ کرسکتے ہیں اور آپ کو حق اطلاعات کے تحت جو جانکاری ملے وہ آپ ہم سے شیئر کرسکتے ہیں۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *