مرچنٹ نیوی

اس بات سے کوئی انکار نہیں کرسکتا کہ آج کے اس مقابلہ جاتی دور میں ہماری نئی نسل خصوصاً مسلم نوجوانوں کی ایک کثیر تعداد تعلیم یافتہ ہونے کے باوجود بے روزگار ہے ۔ یہ زمینی حقیقت ہے کہ جہاں ایک طرف نوجوانوں کی ایک معتد بہ تعداد اعلیٰ تعلیم کی ڈگریاںلے کر روزگار کی تلاش میں سرگرداں ہیں تودوسری جانب نوجوانوں کا ایک بڑا طبقہ ایسا بھی ہے، جو مالی وسائل کی کمی یا خاندان کی پرورش کا بار گراں اپنے کندھوں پر آجانے کی وجہ سے ترک تعلیم پر مجبور ہوگیا اور انہیں کسب معاش کے لئے نکلنا پڑا۔ہم ایسے نوجوانوں کی رہنمائی کے لئے ’’نوجوانوں کی دنیا‘‘ کے نام سے ایک کالم شروع کرنے جارہے ہیں،تاکہ وہ تھوڑی اور محنت کرکے اپنے مستقبل کو روشن و تابناک بناسکیں۔ہم اپنے ہرشمارہ میں قلیل مدتی پروفیشنل کورسز کے بارے میں بات کریں گے اور جاب کے متلاشی اور کریئرسازی کے لئے سرگرداںنوجوانوں کوکورس، اس کی افادیت ،مطلوبہ تعلیمی لیاقت اور متعلقہ تعلیمی وتربیتی اداروں کے بارے میں معلومات فراہم کریںگے۔آج ہم جس کورس کے تعلق سے بات کرنے جارہے ہیں،اس کا نام ہے’’مرچنٹ نیوی‘‘
کورس کا نام :مرچنٹ نیوی
کورس کی افادیت
مرچنٹ نیوی کر یئر کے لحاظ سے ایک بہترین متبادل ہے۔عزت و وقار کے علاوہ یہ شعبہ اقتصادی طور پر بھی کافی اطمینان بخش ہے۔جس دن انسان نے پانی کے جہاز کی ایجاد کی تھی اسی دن مرچنٹ نیوی جیسا شعبہ بھی وجود پذیر ہو گیا تھا۔
مرچنٹ نیوی میں پانی کے جہاز کے ذریعہ ایک ملک سے دوسرے ملک کو سامان کی آمدورفت کے لیے لوگوں کی تقرری کی جاتی ہے۔مرچنٹ نیوی کے بیڑوں میںشپس، ٹینکرس، بلک کریئرس، ریفرجریٹرس شپس، مسافر شپس کے ساتھ ساتھ رول آف شپس بھی شامل ہوتے ہیں۔ان سبھی میں تابناک کریئر بنایا جا سکتا ہے۔
کریئر کا اہم میدان  (ڈیک نیوی گیشن آفیسر)
ڈیک یا نیوی گیشن آفیسر جیسا کہ نام سے پتہ چلتا ہے، جہاز کا نیوی گیشن انچارج ہوتا ہے۔جہاز کی کمان کپتان یاماسٹر کے ہاتھ میں رہتی ہے۔وہ نہ صرف بیسل نیوی گیشن کے لیے ذمہ دار ہوتے ہیں، بلکہ جہاز پر ڈسپلن، مسافر، کرواور کارگو کی حفاظت کی ذمہ داری بھی ان پر ہی ہوتی ہے۔ وہ چیف میٹ کے ساتھ مل کر شپ آپریشن، نیوی گیشن اور مینٹینینس کے لیے آرگنائزیشن ڈیوٹی لگانے کے لیے انچارج بھی ہوتے ہیں۔انہیں سمندری ٹرانسپورٹ کی رہنمائی کے لیے قومی اور بین الاقوامی قوانین کی تعمیل کرنی ہوتی ہے۔کارگو پلاننگ اور ڈیک کے کام کے انچارج فرسٹ میٹ جسے چیف میٹ بھی کہا جاتا ہے کا تعاون حاصل کرتے ہیں۔
سیکنڈ میٹ ڈیک تمام آلات کے رکھ رکھائو اور نیوی گیشن کے لیے استعمال میں لائے جانے والے چارٹ کو تیار کرتے ہیں۔تھرڈ میٹ لائف بوٹس اور فائر فائٹنگ کے رکھ رکھائو کے لیے ذمہ دار ہوتے ہیں۔وہ تمام اشاروں والے آلات کے سگنل آفیسر کی شکل میں کام کرنے کے علاوہ کارگو کے کاموں میں بھی مدد کرتے ہیں۔
ا نجینئرنگ آفیسرس
شپ انجینئروں پر خاص طور سے انجن، بائلرس، پمپس، ہائیڈرونک اور فیول سسٹم شپس، الیکٹریکل جنریٹنگ پلانٹ اور طریقۂ تقسیم سمیت جہاز کے انجن روم کی پوری ذمہ داری ہوتی ہے۔چیف انجینئر سبھی مشینریوں ، آلات، معاون اشیاء، جاب ڈیمانڈس وغیرہ سے متعلق دستا ویزوں کے رکھ رکھائو کے ساتھ مشینوں کی مرمت، ایندھن کی کھپت اور ضروریات کا دھیان رکھتے ہیں۔سیکنڈ انجینئروں کے ذمہ طریقۂ لبریکیٹنگ، انجن روم آگزیلریز اورتوانائی آلات کے رکھ رکھائو کاکام ہوتا ہے۔تھرڈ انجینئر ایندھن اور پانی، ٹینک کی آوازوں کا معائنہ، بائلر روم آلات، واٹر سسٹم کی سپلائی اور پمپوں و کنڈیشنروں کی مانیٹرنگ کرتے ہیں۔فارتھ انجینئر انجن روم آگزیلریز کا آپریشن اور مینٹیننس کرتے ہیں۔الیکٹریکل آفیسر سبھی بجلی سرکٹ، موٹروں کی مرمت اور مینٹیننس کا کام دیکھتے ہیں۔
سروس ڈپارٹمنٹ
اس شعبے کے ذمہ بورڈ پر موجود کرو کے لیے کھانا بنانے کا کام ہوتا ہے۔یہ کرو کے لیے رہائشی کوارٹرس اور میس ہال کی دیکھ بھال کرتے ہیں۔چیف اسٹی ورڈ فوڈ اسٹف، لینن بستروں اور فر نیچروں وغیرہ کی دیکھ بھال کرتے ہیں۔ ان میں دیگر اسٹاف چیف کک، واکر اور معاون شامل ہیں۔
مرچنٹ نیوی ریٹنگ
مرچنٹ نیوی میں تین قسم کی ریٹنگ ہوتی ہے۔ڈیک ریٹنگ، انجن ان ریٹنگ اور کیٹرنگ ریٹنگ۔ڈیک ریٹنگ کے ذمہ صاف صفائی کرنا، جھاڑو دینا، منگ مٹانا اور پالش کرنے کا کام ہوتا ہے۔وہ کارگو لوڈ کرنے اور مال اتارنے میں مدد کرتے ہیں۔
انجن روم ریٹنگس
انجن روم کی صفائی اور آئیلنگ کا کام کرتے ہیں۔انہیں گریسنگ اور مشینریوں کی سروس بھی کرنی پڑتی ہے۔وہ تمام مشینوں اور سبھی آلات کا صحیح ڈھنگ سے استعمال کرتے ہیں اور چلاتے ہیں۔عام طور پر کیٹرنگ ریٹنگ کے ذریعہ رہائشی علاقوں اور پبلک کمروں کی صفائی کی جاتی ہے۔وہ کھانا بنانے میں مدد کرتے ہیں۔انہیں افسروں اور کرو کو کھانا کھلانا ہوتا ہے اور اسٹور میں سامان رکھنے میں مدد کرتے ہیں۔
مرچنٹ نیوی سے وابستہ کام جسمانی محنت سے منسلک ہوتا ہے۔اس کے لیے وہ اشخاص سب سے زیادہ موزوں و مناسب ہوتے ہیںجو ہر طرح کا جسمانی و ذہنی تنائو جھیلنے کی اہلیت رکھتے ہوں۔ایسی شخصیت کے حامل نوجوانوں کومرچنٹ نیوی کی ملازمت بے حد مفید ثابت ہوگی۔ مرچنٹ نیوی میں انٹری کرنے والوں کوآن دی جاب لرننگ کی مشکل پڑھائی کرنی ہوتی ہے۔ساتھ ہی ترقی پانے کے لیے امتحان بھی پاس کرنا ہوتا ہے۔
مواقع
جدید ٹکنالوجی نے آلات کو ڈیولپ کرکے انہیںمزید پیشہ ورانہ بنانے میں بہت مدد کی ہے۔اس لیے ملکی اور غیر ملکی کمپنیوں میں مرچنٹ نیوی سے وابستہ امید واروں کی کافی مانگ ہے۔ با صلاحیت امید وار وںکی کمی کے سبب وہ سیلر ٹو ڈے جیسی میگزین میںاشتہار دیکر یا ٹریننگ انسٹی ٹیوٹ سے براہ راست بھرتی کر رہے ہیں۔
ناٹیکل کیڈٹ کو سیکنڈ میٹ کے امتحان میں شامل ہونے سے قبل سمندر میںتین سال تک جاب ٹریننگ کرنی پڑتی ہے۔ریٹائرمنٹ کے بعد بھی ان افسروں کی مانگ برقرار رہتی ہے۔اس کا مشورہ شپنگ کمپنیوں کے لیے خاصا اہم ہوتا ہے۔کچھ لوگ شپ کیئر اور مینٹیننس جیسے کام کا انتخاب بھی کر لیتے ہیں۔مرچنٹ نیوی کے میدان میںسرکاری اور نجی شپنگ کمپنیوں اور شپنگ کارپوریشن آف انڈیا، کلیئرنگ ھائوس میں روزگار کے اچھے امکانات ہیں۔
تنخواہ
مرچنٹ نیوی ان چنندہ میدانوں میں سے ایک ہے جہاںامید سے زیادہ تنخواہ دی جاتی ہے۔کمپنی در کمپنی اور شہر در شہر، درآمدات و برآمدات ، ضروریات اور حفاظت کے مطابق مرچنٹ نیوی میں15ہزار سے 8لاکھ روپے ماہانہ تک تنخواہ حاصل کی جا سکتی ہے۔ علاوہ ازیں سبھی کرو اور افسروں کے بورڈ کی جانب سے مفت علاج کرایا جاتا ہے۔سینئر افسران اپنی بیو یوں کوبھی لمبے سفر پر ساتھ لے جا سکتے ہیں۔عام طور پر غیر ملکی جہازوں اور مغربی ممالک  امریکہ اور گلف میں بطور تنخواہ زیادہ پیسہ ملتا ہے۔
اہلیت
مرچنٹ نیوی میں داخلے کے لیے اہم اداروں ٹی ایس چانکیہ ممبئی اور میرین انجینئرنگ ریسرچ میں داخلہ لینے کے لیے کم سے کم تعلیمی اہلیت فزکس ، کیمسٹری اور ریاضی کے ساتھ10+2ہو ۔ ساتھ ہی امیدوار کو سمندری خدمات کے لیے جسمانی طور پر مکمل فٹ ہونا چاہئے۔ان کی آنکھوں کی روشنی6/6ہونی چاہئے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *