نوجوانوں کے لئے کریئر گائیڈ’’ ویڈیو ایڈیٹنگ ‘‘

اس بات سے کوئی انکار نہیں کرسکتا کہ آج کے اس مقابلہ جاتی دور میں ہماری نئی نسل خصوصاً مسلم نوجوانوں کی ایک کثیر تعداد تعلیم یافتہ ہونے کے باوجود بے روزگار ہے ۔ یہ زمینی حقیقت ہے کہ جہاں ایک طرف نوجوانوں کی ایک معتد بہ تعداد اعلیٰ تعلیم کی ڈگریاںلے کر روزگار کی تلاش میں سرگرداں ہیں تودوسری جانب نوجوانوں کا ایک بڑا طبقہ ایسا بھی ہے، جو مالی وسائل کی کمی یا خاندان کی پرورش کا بار گراں اپنے کندھوں پر آجانے کی وجہ سے ترک تعلیم پر مجبور ہوگیا اور انہیں کسب معاش کے لئے نکلنا پڑا۔ہم ایسے نوجوانوں کی رہنمائی کے لئے ’’نوجوانوں کی دنیا‘‘ کے نام سے ایک کالم شروع کرنے جارہے ہیں،تاکہ وہ تھوڑی اور محنت کرکے اپنے مستقبل کو روشن و تابناک بناسکیں۔ہم اپنے ہرشمارہ میں قلیل مدتی پروفیشنل کورسز کے بارے میں بات کریں گے اور جاب کے متلاشی اور کریئرسازی کے لئے سرگرداںنوجوانوں کوکورس، اس کی افادیت ،مطلوبہ تعلیمی لیاقت اور متعلقہ تعلیمی وتربیتی اداروں کے بارے میں معلومات فراہم کریںگے۔آج ہم جس کورس کے تعلق سے بات کرنے جارہے ہیں،اس کا نام ہے’’ویڈیو ایڈیٹنگ‘‘
کورس کا نام :ویڈیو ایڈیٹنگ
کورس کی افادیت
ٹیلی ویژن انسانی زندگی کاایک لازمی جز بن گیا ہے۔اس کے بغیر ہر انسان اپنے آپ کو ادھورا محسو س کرتا ہے۔ بہت سارے لوگ اسے تفریح کے طور پر دیکھتے ہیں، تو کچھ کو اس میں اپنا کر یئر نظر آتا ہے۔اس کے پروگرام دیکھتے ہوئے ناظرین اکثر طرح طرح کے وژول اور ان کی حرکات و سکنات، مناظر اور سائونڈ سے حیران ہو جاتے ہیں۔کسی بھی سین کو تسلسل کے ساتھ رفتار دینے کے لیے ایڈیٹنگ کا کام سب سے اہم ہوتا ہے۔ٹیلی ویزن کے پروگرام تیار کرنے میںجتنی اہمیت ہدایتکار یا فوٹو گرافر کی ہوتی ہے اتنا ہی اہم کام ہوتا ہے ویڈیو ایڈیٹر کا۔
پروگرام تیار کرنے کے مراحل
خاص طور پر کسی ٹیلی ویژن کاپروگرام تین مرحلوں میں مکمل ہوتا ہے۔ موضوع پر کام و تحقیق کرنا ، اسکرپٹ لکھنا اور فلم کاری کے لیے مکمل تیاری کرنا۔ سب سے آخر میں آتا ہے ویڈیو ایڈیٹنگ کا مرحلہ، جس کے تحت وژول اور سائونڈ ریکارڈنگ کو ایک ساتھ مکس کیا جاتا ہے،تو اس مرحلے میں حسب ضرورت اسپیشل افیکٹس، میوزک اور گرافکس کو جوڑا جاتا ہے۔ ناظرین جب ویڈیو پروگرام دیکھتے ہیں اور وہ جن مناظر کو دیکھ کر متاثر ہوتے ہیںوہ ہدایتکار کی صلاحیت کا کما ل ہوتا ہے، لیکن اس کمال کو بے مثال بنانے میںویڈیو ایڈیٹر پوسٹ پروڈکشن کے عمل میںقابل ذکر تعاون دیتا ہے۔جس میں فلم کی خوبصورتی کا پہلو بھی شامل ہے۔
ویڈیو ایڈیٹر کا کام
ویڈیو ایڈیٹر کا اہم کام موشن پکچر ، کیبل اور براڈ کاسٹ وژول ،سائونڈ ٹریک، فلم اور ویڈیو کی ایڈیٹنگ کرنا ہے۔ویڈیو ایڈیٹر فلمائے گئے ٹیپ میں سے وژول کے تسلسل کو صحیح ڈھنگ سے جمانے کے ساتھ ساتھ ناظرین کو متوجہ کرنے کے لیے جو بھی ضروری ہو (جیسے سائونڈ اور میوزک کو باہم جوڑتا ہے) کرتا ہے۔یہ ویڈیو ایڈیٹر کی صلاحیت کا ہی کمال ہوتا ہے، کہ وہ پروگرام کو حتمی شکل دیتا ہے۔ویڈیو ایڈیٹرس مناظر کو کاٹنے چھانٹنے، جمانے یا جوڑنے کے لیے جدید ترین آلات کا استعمال کرکے پروگرام تیار کرنے والے ملازمین کے ساتھ مل کر کام کرتے ہیں۔عموماً ویڈیو ایڈیٹنگ میں آلات و مشینوں کی مدد سے ایڈیٹنگ کا کام کیا جاتا ہے۔یہ لینئر ایڈیٹنگ کی شکل میں ہو سکتا ہے۔جس میں ماسٹر ٹیپ میں ریکارڈ فلم کو نکال کر سین در سین ریکارڈ کیا جاتا ہے اور اس میں ویڈیو ریکارڈر اور پلیئر کی مدد لی جاتی ہے۔یہ کام یقینی طور پر تھکا دینے والا ہوتا ہے، کیونکہ اس کے لیے بہت سارا وقت درکار ہوتا ہے، لیکن اب کمپیوٹر ٹکنالوجی کا استعمال کرکے یہ کام ڈجیٹل طور پر کیا جانے لگا ہے۔ڈجیٹل نان لینئر ایڈیٹنگ میں تمام تر ویڈیو اور آڈیو ڈاٹاز کو ہارڈ ڈسک میں ٹرانسفر کر لیا جاتا ہے یا دیگر کسی ڈجیٹل اسٹوریج ڈیوائس پر اسٹور کرنے کے بعد ایڈیٹنگ کر لی جاتی ہے۔اس طریقے سے فلم کے وژولس کو کمپیوٹر پر اتار لیا جاتا ہے اور فلم ساز و ہدایتکار کی ہدایت کے مطابق انہیں ایڈٹ کر دیا جاتا ہے اور پھر اسے ٹیپ یا دیگر کسی ریکارڈنگ یا براڈ کاسٹنگ مشین پر منتقل کر دیا جاتا ہے۔ویڈیو ایڈیٹر وژول، سائونڈ، میوزک اور اسکین یہاں تک کہ فریج کے گئے سین کو جوڑ سکتا ہے یا کچھ فریمس کوگرافکس کی شکل میں پرنٹ بھی کر سکتا ہے۔وہ اتارے گئے وژولس میں کلاکاری کرنے کے لیے کئی قسم کے سافٹ ویئرس کا استعمال کرتا ہے۔اس طرح فنشڈ ویڈیو تیار کرکے نشریہ نجی ڈسٹری بیوشن، سی ڈی رومس،ڈی وی ڈی، انٹر نیٹ یا ویب وغیرہ کے لیے پیش کیا جاتا ہے۔
ویڈیو ایڈیٹر کی خصوصیات
ویڈیو ایڈیٹرکی محنت، تکنیکی صلاحیت اور انیمیشن کا تجربہ، گرافکس و اسپیشل افیکٹس کی مدد سے پروگرام کو فائنل ٹچ دینے میں مدد کرتی ہے۔ اس طرح ویڈیو ایڈیٹر کو تکنیکی طور پر ماہر ہونا چاہیے۔ ساتھ ہی مختلف اقسام کے ایڈیٹنگ سافٹ ویئر کے ساتھ ساتھ خوبصورت مناظر کی سمجھ اور بہتر فلم کاری پر مبنی ڈاٹاز کا انتخاب کرکے خیالات اور پیغامات کو بہترین ڈھنگ سے پیش کرنے کا تجربہ ہونا چاہئے۔
ویڈیوایڈیٹر کے طور پر کریئر
ویڈیو ایڈیٹر کے طور پر کریئر بنانے کے لیے کسی طرح کی خاص تعلیمی لیاقت کی ضرورت نہیں ہوتی۔حالانکہ ویڈیو ایڈیٹنک کے کورس یا ٹیلی ویژن اور فلم میںڈپلوما یا ڈگری حاصل کرنے کے لیے خواہشمند نوجوان ایڈیٹنگ کے بنیادی پہلووں کو سمجھنے کے لائق بن جاتے ہیں اور انہیں مختلف قسم کے سافٹ ویئر کا تکنیکی علم بھی حاصل ہوجاتا ہے۔کسی بھی مضمون کے طالب علم اس میدان میں اپنا کریئر بنا سکتے ہیں۔سب سے ضروری یہ ہے کہ اس کے لیے خاص محنت کی ضرورت ہے۔
مضمون کو سمجھنے کا علم، تخلیقی صلاحیت اورٹیم کے ساتھ ملکر کام کرنے کا جذبہ اچھا ویڈیو ایڈیٹر بننے کے لیے از حد ضروری ہے۔اس طرح کمپیوٹر کی معمولی جانکاری اور ڈجیٹل مشینوں کے ساتھ کام کرنے کا ہنر بھی اہم ہے۔ ڈجیٹل ویڈیو ایڈیٹنگ سافٹ ویئر میں عام طور پر ونڈو مووی میکرجیسے بنیادی تجربے سے لیکر فائنل کٹ پرو، ایڈیوس میڈیا کمپوزر، ایکسپریس پرو، ابوڈ پریمیئر اور ویلوسٹی وغیرہ شامل ہیں۔اس کے ساتھ ہی اس کورس میں کمروں اور ڈجیٹل فلم ٹکنا لوجی کامعمولی علم بھی اہمیت کا حامل ہوتاہے۔ جیسے جیسے وقت کے ساتھ ساتھ ٹکنالوجی اور سافٹ ویئر بدلتے ہیںان سے اپ ڈیٹ ہونا بھی ضروری ہے۔
ویڈیو ایڈیٹنگ کے اہم کورسیز
جس طرح آج کے دور میں ویڈیو کی مانگ میں اضافہ ہورہا ہے، اسی حساب سے اس سیکٹر میں مختلف سطح پرتربیت دینے والے اداروں کی تعداد بھی بڑھنے لگی ہے۔کئی اداروں کے ذریعہ ویڈیو ایڈیٹنگ کے اسپیشل کورسیز چلائے جاتے ہیں۔ایسے کئی ڈپلوما اور سرٹفکیٹ کورسیز دستیاب ہیں، جنہیں انٹر میڈ یٹ یا ڈگری کے بعد کیا جا سکتا ہے۔اس کے ساتھ ہی ٹیلی ویژن اور فلمس کے کئی ایسے ڈگری پروگرامز بھی ہیں، جن میں ویڈیو ایڈیٹنگ کو ایک مضمون کے طور پر شامل کیا گیا ہے۔
فلم اینڈ ٹیلی ویژن انسٹی ٹیوٹ آف انڈیاپنے اور ستیہ جیت رے فلم اینڈ ٹیلی ویژن انسٹی ٹیوٹ کولکاتہ میں گریجویٹس کے لیے فلم اور ویڈیو ایڈیٹنگ میں پوسٹ گریجویٹ ڈپلوماکورس کرائے جاتے ہیں۔جامعہ ملیہ اسلامیہ میں ماس کمیونی کیشن میں پوسٹ گریجویشن کی ڈگری دی جاتی ہے۔اس میں بھی فلم اور ٹیلی ویژن ایڈیٹنگ کو شامل کیا گیا ہے۔یہ صرف گریجویٹ امیدواروں کے لیے ہی ہے۔دوسری جانب فلم اینڈ ٹیلی ویژن انسٹی ٹیوٹ آف تمل ناڈو چنئی، سینٹ جیویئرس کالج ممبئی اور دیگر انسٹی ٹیوشنز کے ذریعہ ڈپلوما، سرٹفکیٹ اور کم مدت کے کورس کرائے جاتے ہیں۔جن کے ذریعہ سے ویڈیو ایڈیٹنگ پر مہارت حاصل کی جا سکتی ہے۔ایڈیٹنگ کورسیز میں ایڈیٹنگ آلات کا استعمال کرکے عملی تجربہ بھی کرایا جاتا ہے۔بیشتر انسٹی ٹیوٹ ا میدواروں کے لیے پروفیشنل گریڈ کی لینئر اور نان لینئر ایڈیٹنگ مشینوں کے ذریعہ کام کرنا سکھاتے ہیں۔ اس شعبے کے حوالے سے ماہرین کی یہی رائے ہے کہ تھیوری کے بجائے عملی تجربہ سب سے اہم ہے، جس پر مکمل کام کرکے ہی عبور حاصل کیا جا سکتا ہے۔
تنخواہ
ویڈیو ایڈیٹنگ میں کریئر شروع کرنے پر شروعات میں 10سے15ہزار روپے کی تنخواہ آسانی سے مل جاتی ہے۔جو لوگ اس میدان میں مسلسل کام کرتے ہوئے کافی تجربہ حاصل کر لیتے ہیں، تو ان کی تنخواہ بڑھ کر 25سے 50ہزار روپے ماہانہ تک پہنچ جاتی ہے۔کچھ فری لانس ویڈیو ایڈیٹر ایسے بھی ہیںجو فی ایپی سوڈ لاکھوں روپے تک کما رہے ہیں۔کچھ ایسے ایڈیٹر آگے چل کر اچھے ہدایتکار بھی ثابت ہوئے ہیں۔اس لیے اگر آپ کو اس میدان میںدلچسپی ہے اور آپ اسٹوڈیو فلم میں مہینوں اور برسوں کا وقت گزارنے کی خواہش رکھتے ہیںتو ویڈیو ایڈیٹر کی شکل میں آپ یقیناً ایک گلیمرس کریئر کا انتخاب کر سکتے ہیں۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *