غریبوں کے منہ کے نوالے، مافیاﺅں کے حوالے

غریبوں کو حکومت کی جانب سے غذائی ا شیا اور صاف پانی مہیا کرانے کے لئے چلائے جا رہے پروگراموں کا فائدہ کئی اسباب کی بناءپر ان تک نہیں پہنچ پارہا ہے۔حقوق انسانی تنظیم ”فیان“ نے اپنی ایک رپورٹ میں انکشاف کیا ہے کہ سرکاری طور پر اناج سپلائی نظام پوری طرح ٹھپ ہو گیا ہے۔ جن کے پاس غریب عوام کے راشن کا کوٹہ ہے وہ ان غریبوں کو ملنے والے سستے راشن کو بازار میں فروخت کر رہے ہیں۔اتنا ہی نہیں،حکومت کی جانب سے غریبوں کے لئے مہیا کرائی گئی غذائی اجناس اب کالا بازاری کے ذریعہ نیپال تک جا رہی ہےں۔نیپال اور چین کی سرحد سے ملحق سدھارتھ نگر، اور بہرائچ میں اشیائے خوردنی پر مافیا گروپ کار اج ہے۔

Read more

نکسل واد کے خاتمے کے لئے عدم تشدد ہی واحد ہتھیار

آج جو بھی ہو رہا ہے، اس سے مجھے گھبراہٹ ہوتی ہے۔ عدم تشدد کا راستہ اپنانے سے قبل ہی لوگ یہ ذہن بنا لیتے ہیں کہ عدم تشدد سے کچھ ہونے والا نہیں ہے، اس لئے پرتشدد تحریک کا آغاز کرو۔ شاید یہ بھی تجربہ سے ہی لوگوں نے سیکھا ہے کہ صرف تشدد کے سامنے ہی حکومتیں جھکتی ہیں۔نکسلی مسائل پر کافی کچھ لکھا جا چکا ہے۔ ایسا لگتا ہے کہ اس ملک کے لوگ اس مس¿لہ کو لے کر دو حصوں میں تقسیم ہو چکے ہیں۔ ایکفرقہ کی رائے ہے کہ ملک میں غریبوںکوکافی پریشانیاں درپیش ہیں۔اس لئے اگر عام آدمی نے بندوق اٹھا لی ہے تو ٹھیک ہی کیا ہے۔ دوسرے فرقہ کی رائے میں مسائل کتنے بھی سنگین ہوں، بندوق اٹھانے کا حق عا م آدمی کو نہیں ہے اور صرف حکومت ہی بندوق اٹھا سکتی ہے۔

Read more

مدھیہ پردیش کابجلی بحران

ریاست مدھیہ پردیش گزشتہ ایک دہائی سے شدید بجلی بحران سے نبرد آزما ہے۔بجلی کے جھٹکوں سے بی جے پی نے 2003میں کانگریس کی حکومت کو تو ہلا ڈالا ، لیکن پورے پانچ سال تک ریاست میں بجلی کا بحران جوں کاتوں رہا۔ پھر2008کے انتخابات میں بی جے پی نے بجلی کے اس بحران کے لئے مرکز کی کانگریس کی قیادت والی یو پی اے حکومت کو مجرم ٹھہرایا ۔ بی جے پی کے لئے ریاست کا بجلی بحران سیاست کا داو¿ں کھیلنے والی ایک ایسی بساط ہے جس پر وہ سیاسی چالیں چل کر اپنے ووٹ بینک کو مضبوط کر رہی ہے

Read more