رفتہ رفتہ موت کے قریب جارہے ہیں رکشہ پلر

کولکاتہ کی سڑکوں سے ہاتھ رکشہ ہٹانے کی اب کوئی جلد بازی نظر نہیں آتی۔ شاید آئندہ اسمبلی انتخابات تک حکومت کو اس کی ضرورت نہیں ہے۔ کبھی ہاوڑا پل کے ساتھ ساتھ ہاتھ رکشہ کو بھی کولکاتہ کی شناخت کے طور پر پیش کیا جاتاتھا۔ یوم جمہوریہ کی جھلکیوں میں گنیسی اپنی ٹنٹنیا گاڑی کو لئے راج پتھ پر ٹہلتا نظر آتاتھا۔

Read more

تعلق بوجھ بن جائے تو۔امر سنگھ اور ملائم الگ کیوں ہوئے

ملائم سنگھ اور امر سنگھ کی علیحدگی کی کہانی میں کئی حقائق پوشیدہ ہیں۔ آپس میں غیر یقینی ہے، غلط فہمیاں ہیں، حسد ہے،خواہشات ہیں،آرزو¿یں ہیں، سازشیں ہیں، غم ہے، درد ہے اور بے بسی ہے۔ملائم سنگھ اور امر سنگھ کے علاوہ اس کہانی کے اہم کردار ہیں موہن سنگھ، اعظم خاں اور رام گوپال یادو۔ بعد میں تو جیسے پوری سماجوادی پارٹی ہی اس کہانی کے اہم کرداروں میں تبدیل ہو گئی۔

Read more

حکومت تو نہیں ۔پر کیا عدالت بچوں کا بچپن بچا پایئگی؟

نوجوانوں کا ملک ہندوستان۔40فیصد آبادی کی عمر18سال سے کم۔نوجوانوں کے اس ملک میں ایک کروڑ70لاکھ بچے مزدوری کرتے ہیں اور 50فیصدی بچے جنسی استحصال کا شکار ہوجاتے ہیں۔ بچہ مزدوری روکنے اور بچوں کی دیکھ بھال اور حفاظت کے لئے قانو ن بھی ہے۔

Read more

دو بوند زندگی کی : پولیومہم خود پولیو کا شکار

اتر پردیش کولوگ اکثر الٹا پردیش کہہ کراس کا مذاق اڑاتے ہیں لیکن، یہ ایک تلخ حقیقت ہے ۔آج ساری دنیا کو پولیو جیسی بیماری سے نجات دلانے کے لئے بے تحاشہ اقدامات کئے جارہے ہیں لیکن یہ بڑی عجیب بات ہے کہ اتر پردیش میں پولیو کا شکار ہونے والے بچوں کی تعداد مسلسل بڑھتی جا رہی ہے۔ یہ پولیو بیداری مہم کے تئیں ریاستی حکومت کی لاپروائی نہیں تو آخر کیا ہے؟

Read more

ارے ! میں نتن گڈکری ہوں

موقع تھا بی جے پی کے سب سے سینئر لیڈر اور ملک کے سابق وزیر اعظم اٹل بہاری واجپئی جی کے یوم پیدائش کا۔اور مبارکباد دینے کے لئے ملک کے اہم لیڈر بھی موجود تھے۔اس مخصوص موقع پر انوپ جلوٹا سبھی کو بھجن اور غزلیں سنارہےتھے۔سامنے صوفے پر لال کرشن اڈوانی اور بہار کے آزاد ممبر پارلیمنٹ دگوجے سنگھ بیٹھے تھے

Read more

امر سنگھ کی نئی حکمت علی

ٹھاکر امر سنگھ اپنی نئی پارٹی بنا رہے ہیں۔ بے حدخاموشی سے تمام کاموں کو انجام دیا جا رہا ہے۔پارٹی کے رجسٹریشن کی کارروائی مکمل ہو چکی ہے۔نئی پارٹی کے قومی صدر کے طور پر امر سنگھ کا نام الیکشن کمیشن کو بھیجا جا چکا ہے۔ان کے علاوہ جو اہم نام اس پارٹی میں شمولیت کے لئے ہیں، وہ ہیں راجیہ سبھا کے سابق رکن اور مسلمانوں میں اپنی سیکولر شناخت بنا چکے مولانا عبید اللہ خاں اعظمی، یہ لالو یادو کی پارٹی راشٹریہ جنتا دل سے ممبرپارلیمنٹ رہ چکے ہیں اور اب کانگریس میں شامل ایک بے حد اثرو رسوخ والے لیڈر ہیں

Read more

مشن کے جی بی اور کیمبرج فائیو

یہداستان اس شخص کی ہے، جس کی پیدائش تو ہندوستان میں ہوئی، لیکن تھا وہ ایک برطانوی فوجی افسر کا بیٹا ، یعنی برطانوی شہری، پر پوری زندگی اس نے ایک ایسی خفیہ ایجنسی کے لئے کام کیا، جو خوف اور قہر کا دوسرا نام ہے۔ کے جی بی کے لئے سال 1949۔ اس سال اسے واشنگٹن میں برطانوی ایمبیسی کا سکریٹری بنا کر بھیجا گیا۔

Read more