اف، یہ مہنگائی!

کیا آپ جانتے ہیں کہ اس وقت دہلی کے بازاروں میں گھی تقریباً 250روپے فی کلو گرام کے نرخ پر فروخت ہو رہا ہے۔جی ہاں چونکئے مت، یہ ہم آپ کو دیسی گھی کی قیمت نہیں بتا رہے ہیں ۔ یہ اسی ڈالڈا گھی کا بھاو¿ ہے۔ جسے ہمارے بزرگ کھانا بھی پسند نہیں کرتے تھے ۔ آپ سوچ رہے ہوں گے کہ گھی مہنگا ہوا تو کیا فرق پڑتا ہے سرسوں کے تیل میں کھانا بنا کر کام چلا لیا جائے گا۔ لیکن، سرسوںکا تیل بھی کوئی کوڑیوں کے مول نہیں ہے۔ یہ بھی اس وقت 70-75روپے فی کلو گرام کے حساب سے فروخت ہو رہا ہے۔

Read more

شمالی ہندوستان، ٹیکسیاں، کانگریس اور ٹھاکرے

مہاراشٹر کے وزیر اعلیٰ اشوک راﺅ چوان اور ان کی وزارت سے ایسی نادانی کی امید کسی کو نہ تھی۔ ایک ایسی نادانی جس نے زبان کے ذرئیے نہ صرف فرقہ واریت کو فروغ دیا بلکہ علاقہ پرستی کو بھی جانے انجانے ہوا دے گئی۔ اس نے پہلے سے ہی مراٹھی بنام غیر مراٹھی کے جھگڑے میں پس رہی ممبئی اور شمالی ہندوستانیوں کے ہندی زبان کے مس¿لہ کے ساتھ ساتھ اب ٹیکسیوں کو لیکرایک طرح سے زخموں پر نمک پاشی کا کام کیا ہے۔

Read more

کیا ہندوستان کو ہالبروک کی ضرورت ہے؟

افغانستان اور پاکستان میں تعینات امریکی سفارتکار ریچرڈ ہالبروک افغانستان اورپاکستان پالیسی میں امریکہ کی فتح کے لئے ہندوستان کو فائدہ مند مانتے ہیں۔ یہ کوئی پہلا موقع نہیں ہے، جب ریچرڈ ہالبروک نے افغانستان پاکستان پالیسی میں ہندوستان کو شامل کئے جانے کی پیشکش کی ہے۔

Read more

ہند آسٹریلیائی تعلقات ،نازک موڑ پر

اس بات میں کوئی شک نہیں ہے کہ ان دنوں آسٹریلیا اورہند وستان کے آپسی تعلقات ایک مشکل دور سے گزر رہے ہیں۔ تعصب کی یہ حالت ہے کہ پہلے ہندوستانی ٹیکسی ڈرائیوروں پر حملے ہوئے اس کے بعد ہندوستانی طلبا پر حملے کئے گئے اور اب گرودواروں کو نشانہ بنانے جیسے معاملات سے صورت حال اور بھی سنگین ہو چکی ہے۔حالانکہ دونوں ہی ممالک نے اپنی جانب سے پوری کوشش کی ہے کہ ان حالات کا اثر دو طرفہ رشتوں پر نہ پڑے، لیکن بند دروازوں کے پیچھے کی حقیقت کا اگر جائزہ لیں تو حالات یقیناًحوصلہ افزاءنہیں ہیں۔

Read more

لالو کانگریس آمنے سامنے

بہار کے اسمبلی انتخابات اب دروازے پر دستک دینے لگے ہیں۔ نتیش کمار الگ الگ علاقوں میں جا کر عوامی حمایت حاصل کرنے میں مصروف ہیں، تو کانگریس بھی اتر پردیش کی طرح، بہار میں پارٹی کو مضبوط کرنے اور اپنی کھوئی ہوئی ساکھ واپس لانے کی کوشش میں لگی ہوئی ہے۔ بی جے پی اور سنگھ پریوار نے بھی اپنی پوری طاقت بہار میں لگا دی ہے۔ اس بیچ لالو پرساد یادو نے ایک ماسٹر اسٹروک کھیلا ہے۔ اور وہ ہے خود کو اور مسلمانوں کو پھر سے متحد کرنے کا ایک زوردار منصوبہ ۔ سچ پوچھئے تویہ چال ایک ملٹری کمانڈر کی چال جیسی ہے، جو دشمن کو شکست دینے کے لئے میدان جنگ میں ایک دوسرامحاذ قائم کر لیتی ہے:

Read more
Page 1 of 41234