34سال بعدکانگریس لیڈرسجن کمارکوعمرقید

Share Article
sajjan-kumar
1984سکھ فسادمعاملے میں دہلی ہائی کورٹ نے کانگریس لیڈر سجن کمارکو قصوروار قراردیا۔انہیں مجرمانہ سازش رچنے، تشددکرانے اورفسادبھڑکانے کا قصوروار قرار دیاہے۔ہائی کورٹ نے سجن کمارکوعمرقیدکی سزاسنائی ہے۔34سال پرانے معاملے میں سجن کمارکوقصوروارٹھہرایاگیاہے۔کورٹ اس معاملے میں سجن کمارکوسرینڈرکرنے کیلئے 31دسمبرتک کا وقت دیاہے۔
ہائی کورٹ نے سجن کمارکے علاوہ بلوان کھوکھر، کیپٹن بھاگمل اورگردھاری لال کی عمرقیدکی سزابرقراررکھی ہے۔جبکہ سابق رکن اسمبلی مہندر یادواورکشن کھوکھرکی سزابڑھاتے ہوئے 10-10سال کی جیل کی سزاسنائی ہے۔اس سے پہلے نچلی عدالت نے مہندراورکشن کوتین تین سال قیدکی سزاسنائی تھی۔عمرقید کے علاوہ سجن کمار پر پانچ لاکھ روپئے کا جرمانہ کا بھی عائد کیا گیا ہے۔ اس کے علاوہ باقی مجرموں کو جرمانہ کے طور پر ایک۔ ایک لاکھ روپئے دینے ہوں گے۔آپ کوبتادیں کہ 1984 کودہلی چھاونی کے راج نگر علاقے میں ایک خاندان کے پانچ افراد کا قتل کر دیا گیا تھا۔ اس معاملہ میں باقی لوگوں کو پہلے ہی قصوروار قرار دیا جا چکا ہے۔ بہرکیف 1984 کے سکھ مخالف فسادات معاملے پر دہلی ہائی کورٹ نے فیصلہ الٹ دیا ہے۔ کانگریس لیڈر سجن کمار کو عمرقید کی سزا سنائی گئی ہے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *