14 سال کا بیٹا نکلا گے، بحث کے بعد باپ نے گولی مار کر کیا قتل

Share Article

ایک باپ نے اپنے ہی 14 سالہ بیٹے کو گولی مار کر قتل کر دیا. پولیس نے تحقیقات کے بعد یہ دعوی کیا ہے. یہ معاملہ امریکہ کے نیواڈا کا ہے. مردہ لڑکے کی پرورش کرنے والی ماں نے کہا کہ والد کے ذہن میں تھا کہ بیٹے کے گے ہونے سے بہتر ہے، بیٹے کا نہ ہونا۔

14 साल का बेटा निकला गे, बहस के बाद बाप ने गोली मारकर की हत्या

پولیس نے کہا ہے کہ 53 سال کے والد وینڈیل میلٹن نے بحث کے بعد گوواني میلٹن کو جمعرات کو گولی مار دی. باپ اور بیٹے میں بحث اس بات کو لے ہوئی تھی کہ گوواني گے ہے اور اس کا بوائے فرینڈ بھی ہے۔

14 साल का बेटा निकला गे, बहस के बाद बाप ने गोली मारकर की हत्या

یہ بھی سامنے آیا ہے کہ باپ نے اس سے پہلے بھی بیٹے پر بندوق تانی تھی جب اس نے بوائے فرینڈ کے ساتھ بیٹے کو پکڑ لیا تھا. پولیس گھریلو تشدد کی اطلاع ملنے پر گوواني کے فلیٹ میں پہنچی تھی، لیکن اس وقت تک 14 سال کا لڑکا کریٹکل حالت میں پہنچ چکا تھا۔

گوواني فلیٹ میں اکیلے رہتا تھا. پولیس نے اس کے والد کو گرفتار کر لیا ہے. والد پر قتل اور بچے کے استحصال کا الزام لگایا گیا ہے. اب تک یہ صاف نہیں ہے کہ کیا والد پر نفرت کرائم کے تحت بھی کارروائی کی جائے گی۔

گووواني کی پرورش کرنے والی ماں سونیا جونز نے کہا کہ اس کی بہت خوبصورت زندگی تھی. دوستوں نے اسے انرجیٹك ٹينیجر بتایا جو کوئی بھی ہنسا سکتا تھا۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *