مغربی یوپی کی 22 میں سے 11 سیٹوں پر لڑے گی بی ایس پی، ایس پی کو 8ملا

Share Article

لوک سبھا انتخابات 2019 میں اتر پردیش میں نریندر مودی کے وجے رتھ کو روکنے کے لئے تین جماعتوں کے درمیان سیٹوں کو لے کر رائے ہو گیا ہے۔ مغربی یوپی کی 22 لوک سبھا سیٹوں میں سے زیادہ تر نشستیں بہوجن سماج پارٹی کے اکاؤنٹ میں گئی ہیں۔ بی ایس پی مغربی یوپی کی 11 سیٹوں پر انتخاب لڑے گی۔ جبکہ 8 نشستیں ایس پی اور 3 نشستیں آر ایل ڈی کو ملی ہیں۔

 

مرکزی حکومت اگلے ہفتے دے سکتی ہے کسانوں کو تحفہ!

 

بہوجن سماج پارٹی اور سماج وادی پارٹی کے اتحاد میں راشٹریہ لوک دل بھی شامل ہو گئی ہے۔ لوک سبھا انتخابات 2019 میں اتر پردیش میں نریندر مودی کے وجيرتھ کو روکنے کے لئے تین جماعتوں کے درمیان سیٹ کو لے کر رائے ہو گیا ہے۔ بدھ کو آر ایل ڈی کے نائب صدر جینت سنگھ نے اکھلیش یادو کے ساتھ ملاقات کی تھی،جس کے بعد آر ایل ڈی کو صوبے کی تین نشستیں دی گئی ہیں اور پارٹی کا ایک امیدوار ایس پی کے انتخابی نشان پرانتخاب لڑے گا۔ذرائع کے مطابق مغربی یوپی کی لوک سبھا سیٹوں کو لے کر تینوں جماعتوں میں سیٹ شیئرنگ کا فارمولہ طے ہو گیا ہے۔

 

شیلا دکشت نے سنبھالی دہلی کانگریس کی کمان، پروگرام میں نظرآئے جگدیش ٹائٹلر

 

ذرائع کی مانیں تو مغرب یوپی کی 22 لوک سبھا سیٹوں میں سے زیادہ تر نشستیں بہوجن سماج پارٹی کے اکاؤنٹ میں گئی ہے۔ مغرب کی 11 سیٹوں پر انتخاب لڑے گی۔ جبکہ 8 سیٹوں پر ایس پی اور 3 سیٹوں پر آر ایل ڈی کو ملی هےصوبے کی ابھی 56 سیٹوں پر تصویر واضح نہیں ہوئی ہے۔

 

 

 

 

مغربی یوپی کے ان سیٹوں پر بی ایس پی لڑے گی انتخابات
نوئیڈا (بی ایس پی)
غازی آباد (بی ایس پی)
میرٹھ-ہاپوڑ (بی ایس پی)
بلند شہر (بی ایس پی)
آگرہ (بی ایس پی)
فتح پور سیکری (بی ایس پی)
سہارنپور (بی ایس پی)
امروہہ (بی ایس پی)
بجنور (بی ایس پی)
نگینہ (بی ایس پی)
علی گڑھ (بی ایس پی)

 

 

 

 

مغربی یوپی کی ان آٹھ سیٹوں پر ایس پی لڑے گی لوک سبھا انتخابات
هتھرس (ایس پی)
کیرانہ (ایس پی)
مرادآباد (ایس پی)
سنبھل (ایس پی)
رامپور (ایس پی)
مین پوری (ایس پی)
فیروز آباد (ایس پی)
ایٹہ (ایس پی)

 

 

 

 

ایس پی-بی ایس پی اتحاد میں چودھری اجیت سنگھ کی پارٹی آر ایل ڈی شامل ہو گئی ہیں۔ ان تینوں پر لڑے گی انتخابات
باغپت (آر ایل ڈی)
مظفرنگر (آر ایل ڈی)
متھرا (آر ایل ڈی)

 

 

 

بتا دیں کہ ایس پی اور بی ایس پی نے 23 سال کی باہمی دشمنی کو بھلا کر اتحاد کیا ہے۔ ہفتہ کو اکھلیش یادو اور مایاوتی مشترکہ پریس کانفرنس کرکے اتحاد کا اعلان کیا تھا۔ سیٹ شیئرنگ کو لے کر مایاوتی نے اعلان کیا تھاکہ صوبے کی 80 لوک سبھا سیٹوں میں سے 38-38 سیٹوں پر ایس پی-بی ایس پی انتخابات لڑےگي۔ اس کے علاوہ رائے بریلی اور امیٹھی سیٹ پر کانگریس کے خلاف ایس پی-بی ایس پی اتحاد اپنے امیدوار نہیں اتارے گی۔ باقی بچی 2 نشستیں اتحادی پارٹی کے لئے رکھی گئی تھی۔
ایس پی-بی ایس پی اتحاد میں تیسری پارٹی کے طور پر راشٹریہ لوک دل کی انٹری ہوئی ہے۔ ایس پی-بی ایس پی اتحاد نے آر ایل ڈی کو پہلے 2 نشستیں دینے کی بات کہی تھی، جس پر اجیت سنگھ راضی نہیں تھے۔ وہ چار سیٹوں کی مسلسل مانگ رہے تھے۔ اس کو لے کر بدھ کو آر ایل ڈی لیڈر جینت چودھری اور ایس پی صدر اکھلیش یادو کے ساتھ لکھنؤ میں میٹنگ ہوئی تھی۔ اسی دوران سیٹ شیئرنگ کا پھرمول طے ہوا، جس میں آر ایل ڈی کو باغپت، متھرا اور مظفرنگر نشستیں دینا کا فارمولہ طے ہوا ہے۔ اس طرح آر ایل ڈی کو تیسری نشست ایس پی کو اپنے کوٹے سے دے گا۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *