ہجومی تشدد معاملے میں اہم ملزم سمیت 11 گرفتار

Share Article

 

سرائے کیلا؍ رانچی،  جھارکھنڈ میں سرائے کیلا تھانہ کے تحتسینی اوپی کے دھاتکی ڈیہہ گاؤں میں ایک مسلم نوجوان تبریزانصاری کو پیٹ پیٹ کر مار دئے جانے کے معاملہ میں اہم ملزم سمیت 11 افراد کو پولیس نے گرفتار کیا ہے۔ گرفتار ملزمین میں کلیدی ملزم پرکاش منڈل کے علاوہ بھیم سین منڈل، پریم چنگ محلی، کمل مہتو، سونامو پردھان، ستیہ نارائننائک، سونارام محلی، چامو نائک، میدان نائک، مہیش محلی اور سمنت مہتو شامل ہیں۔ اے ایس پی کارتک نے منگل کو بتایا کہ دیگر ملزمین کی گرفتاری کے لئے چھاپے ماری کی جا رہی ہے۔ انہوں نے بتایا کہمتوفی تبریز انصاری پر اپنے تین ساتھیوں کے ساتھ گاؤں میں چوری کرنے کا شبہ تھاجس کے بعد ہجوم نے اسے تشدد کا نشانہ بنایا۔ اگرچہ یہ اطلاع ایک دن بعد پولیس کو ملیتھی۔ اس کے بعد موقع پر پولیس پہنچی اورتبریز کو شدید زخمیحالت میں علاج کے لئے صدر اسپتال بھیج دیا۔

Image result for mob lynching in jharkhand

 

صدر ہسپتال میں ڈاکٹروں کیجانب سے نوجوان کا میڈیکل کیا گیا۔جانچ کے بعد اسے جیل بھیج دیا گیا تھا، لیکن اچانک طبیعت بگڑنے پر پھر اسے صدر اسپتال لایا گیا، جہاں علاج کے دوران اس کی موت ہو گئی۔ قابل ذکر ہے کہ واقعہ کو لے کر ایس پی نیکھرساوا تھانہ انچارج چندر موہن اوراؤں اور سینی تھانہ انچارج بپن بہاری سنگھ کو پیر کو معطل کر دیا تھا۔ اس واقعہ کی جانچ کیلئے ایس آئی ٹی کی تشکیل کی تھی، جبکہ معاملہ میں وائرل ہوئے ویڈیو کی جانچ کے لئے ڈی جی پی کمل نین چوبے نے ایف ایس ایل سے جانچ کرانے کی ہدایت دی تھی۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *