100 دنوں میں ملک بھر کی وقف املاک کا سو فیصد دیجیٹلائزیشن کرنے کا منصوبہ : نقوی

Share Article

 

قومی وقف بورڈ ترقیاتی اسکیم کے تحت 8 وقف متولیوں کو نوازا گیا

مرکزی اقلیتی امور کے وزیر مختار عباس نقوی نے آج یہاں کہا کہ مرکزی حکومت نے اپنے 100 دن ہدف کے تحت ملک بھر کی وقف املاک کا سو فیصد ڈیجیٹلائزیشن کرنے کا ہدف رکھا ہے۔ ملک بھر میں 6 لاکھ سے زیادہ رجسٹرڈ وقف جائیداد ہیں۔ دہلی کے این ڈی ایم سی کنونشن سینٹر میں منعقد مرکزی وقف کونسل کے قومی کانفرنس میں نقوی نے’قومی وقف بورڈ ترقیاتی اسکیم‘ کے تحت 8 وقف متولیوں کو نوازا۔ یہ پہلا موقع ہے جب وقف متولیوں کو وقف املاک کے استعمال بالخصوص ان ضرورت مندوں کی سماجی و اقتصادی-تعلیمی طور پر با اختیار بنانے کے لئے کرنے والے متولیوں کی حوصلہ افزائی اورفلاح وبہبود کے لیے کیا گیا ہو ایوارڈ سے نوازاگیا ہے۔

نقوی نے کہا کہ ملک بھر میں کام کررہے متولی وقف جائیداد کے’کسٹوڈین‘ ہیں۔ ان کی ذمہ داری ہے کہ وقف املاک کااستعمال اور تحفظ ہو۔ اس کانفرنس میں اقلیتی وزارت کے سیکریٹری شیلیش، دیگر سینئر افسر، مرکزی وقف کونسل کے سیکریٹری، کونسل کے رکن اور سینئر افسر، ملک بھر کے ریاستی وقف بورڈز کے چیئرمین / سی ای او اور دیگر سینئر افسران نے شرکت کی۔

نقوی نے کہا کہ وقف املاک کی 100 فیصد جیو ٹیگنگ اور ڈیجیٹلائزیشن کے لئے جنگی پیمانے پر مہم شروع کر دیا گیا ہے تاکہ ملک بھر میں واقع وقف املاک کا استعمال معاشرے کی بھلائی کے لئے کیا جا سکے۔ سینٹرل وقف کاؤنسل، وقف ریکارڈ کے ڈیجٹلائزیش اور جی آئی میپنگ؍جی او ٹیگنگ کیلئے ریاستی وقف بورڈز کو اقتصادی مدد اور تکنیکی مدد دے رہی ہے تاکہ تمام ریاست وقف بورڈ، وقف املاک کے ڈیجیٹلائزیشن کاکام طے وقت کی مدت میں مکمل کر سکیں۔ وقف املاک کی جی آئی ایس /جی پی ایس میپنگ کے لئے آئی آئی ٹی روڑکی، علی گڑھ مسلم یونیورسٹی جیسے اداروں کی طرف سے کام کیا جا رہا ہے۔ 20 ریاستوں کے وقف بورڈز میں ویڈیو کانفرنسنگ کی سہولت مہیا کرائی گئی ہے۔ اس سال تمام ریاستی وقف بورڈز میں یہ سہولت فراہم کر دی جائے گی۔

نقوی نے کہا کہ آزادی کے بعد پہلی بار وزیر اعظم نریندر مودی کی قیادت والی حکومت ملک بھر میں وقف املاک پر اسکول، کالج، اسپتال، کمیونٹی سینٹرکی تعمیر وغیرہ کے لئے وزیر اعظم عوامی ترقیاتی پروگرام (پی ایم جے وی کے) کے تحت سوفیصد فنڈنگ کر رہی ہے۔

مودی حکومت’وزیر اعظم عوامی ترقیاتی پروگرام‘ کے تحت ملک کے ان پسماندہ علاقوں میں کمزور طبقات اور بالخصوص لڑکیوں کی تعلیم اور روزگارسے متعلق مہارت کی ترقی اور صحت سہولیات فراہم کرنے کے لئے بنیادی ڈھانچہ کی ترقی کر رہی ہے جو اب تک ان خصوصیات سے محروم رہے ہیں۔ مرکزی حکومت ملک بھر میں وقف املاک پر اسکول، کالج،آئی ٹی آئی، مہارت کی ترقی سینٹر، مہارت سازی مرکز، کمیونٹی سینٹر،کامن سروس سینٹر،ہنر ہب، اسپتال، تجارتی مرکز وغیرہ کی تعمیر بڑے پیمانے پر کررہی ہے۔

وزیر اعظم نریندر مودی نے اقلیتوں کے لئے ملک کے صرف 100 اضلاع تک محدود ترقیاتی اسکیموں میں توسیع کرتے ہوئے وزیر اعظم عوامی ترقیاتی پروگرام کے تحت 308 اضلاع، 870 بلاک، 331 شہر، ہزاروں دیہات میں کر دیا ہے۔ ان منصوبوں کا فائدہ سماج کے تمام طبقات کو ہو رہاہے۔

 

انہوںنے کہا کہ وقف املاک کے تعلق سے نئے رہنما خطوط کے لئے جسٹس (ریٹائرڈ) جناب ذکی اللہ خان کی قیادت میں قائم 5 رکنی کمیٹی کی طرف سے رپورٹ سونپ دی گئی ہے۔ کمیٹی کی رپورٹ کی سفارشات وقف املاک کے استعمال اور دہائیوں سے تنازعہ میں پھنسی املاک کو تنازعہ سے باہر نکالنے کے لئے وقف قوانین کوآسان اور مؤثر بنائے گی۔ مرکزی حکومت اس کمیٹی کی سفارشات پر ریاستی حکومتوں سے مشورہ کرکے ضروری اقدامات اٹھا رہی ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *