سپریم کورٹ کا تاریخی فیصلہ : مذہب، ذات اور برادری کے نام پر ووٹ مانگنا غیر قانونی

Share Article

electionسپریم کورٹ نے اپنے ایک تاریخی فیصلے میں کہا ہے کہ ووٹ اور انتخابی تشہیر کے لئے مذہب کا استعمال نہیں کیا جا سکتا ہے۔ کورٹ نے کہا ہے کہ تشہیر کے دوران اس طرح سے مذہب کا استعمال کرنا غیر قانونی ہے۔ اپنے فیصلے میں سپریم کورٹ نے کہا ہے کہ مذہب، زبان، کمیونٹی اور ذات کی بنیاد پر کوئی امیدوار یا اس کا نمائندہ انتخابی تشہیر نہیں کر سکتا ہے۔ 7 ججوں کی آئینی بنچ نے یہ فیصلہ سنایا ہے۔
سپریم کورٹ کی بینچ میں 4 ججوں نے اس فیصلے پر اپنی رضامندی دی جبکہ 3 اس کی مخالفت میں تھے۔ سپریم کورٹ نے کہا کہ خدا اور انسان کے درمیان تعلقات ذاتی انتخاب ہے۔ مذہب سے منسلک مسائل پر عمل کرنے کی آزادی کا ملک کے سیکولر کردار سے کچھ لینا دینا نہیں ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *